سرورق / خبریں / ریاست میں بارش کی تباہ کاریاں،4 ہلاک متاثرہ علاقوں میں راحتی اقدامات میں تیزی پیدا کی جائے: کمار سوامی

ریاست میں بارش کی تباہ کاریاں،4 ہلاک متاثرہ علاقوں میں راحتی اقدامات میں تیزی پیدا کی جائے: کمار سوامی

منگلورو ۔بحیرۂ عرب میں طوفان کے زیر اثر مسلسل بارش ساحلی کرناٹک میں تیسرے روز بھی جاری ہے جس سے دکھشن کنڑ ’اڈوپی‘کاروار اور منگلورو اضلاع میں زندگی مفلوج ہوگئی ہے ۔ بارش جو جنوب مغربی مانسون کی جلد آمد کے سبب ہوئی ہے‘سے پہلے ساحلی پٹی میں مختلف مقامات پر 4اموات ہوئی ہیں۔ نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ ٹیم ’فائر سرویسس اور ضلع انتظامیہ نے زیادہ سے زیادہ لوگوں کو محفوظ مقامات پر منتقل کرنے ’بچاؤ سرگرمیو ں میں شدت پیدا کردی ہے ۔فائربریگیڈ کے عملہ اور شہریوں نے گجرات ۔ انگلش میڈیم اسکول الاکی کے 450طلبا اور 35اسٹاف ارکان کو کشتیوں کا استعمال کرتے ہوئے محفوظ مقامات پر منتقل کیا کیوں کہ اسکول میں پانی جمع ہوگیا تھا اور بچے اور اسٹاف دوسری منزل پر پناہ لئے ہوئے تھے ۔ انہو ں نے حکام کو اس کی اطلاع دی تھی۔ گاڑیوں کی آمدورفت شدید طور پر متاثر رہی کیوں کہ بارش کا پانی سڑکوں پر 4فیٹ سے زائد جمع ہوگیا۔ کئی درخت اکھڑگئے اور بعض درخت مکانات پر گرگئے ۔اسٹیٹ نیچرل ڈیزاسٹر مینجمنٹ کے ذرائع کے مطابق یہ بارش طوفان کے سبب نہیں بلکہ سمندر میں دباو کے سبب ہوئی ہے اور منفی موسمی حالات و بارش آئندہ تین دنوں تک جاری رہیں گے ۔ بندرگاہی شہر منگلورو میں گذشتہ روز ہی 434ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی اور ساحلی علاقہ کا سب سے زیادہ متاثر علاقہ اڈوپی و دکھشن کنڑ ہے ۔ سرکاری ذرائع نے کہا کہ کھڑی فصلوں ’عوامی اور سرکاری عمارتوں و مکانات کو ہوئے حقیقی نقصان کا اندازہ بارش کے رکنے کے بعد ہی لگایا جاسکتا ہے کیوں کہ زائد نقصان کا امکان ہے کیوں کہ پانی کئی نشیبی علاقوں کے مکانات میں داخل ہوگیا۔ عوام کو دور دراز کے علاقوں میں رات جاگ کر گزارنی پڑی کیوں کہ وہ بارش کے پانی کی نکاسی میں مصروف رہے ۔طوفانی ہواؤں اور بجلی کے ساتھ شدید بارش گدگ’کاروار،منڈیا ،پوڈوگو اضلاع میں بھی ہوئی۔ ایک زرعی مزدور جس کی شناخت گریجماں کے طور پر کی گئی تھی بجلی گرنے سے کھیت میں کام کے دوران چل بسا۔ بلاری میں پرکاش نامی شخص مکان کے سامنے حوائج ضروریہ کے دوران بجلی گرنے سے چل بسا ۔ہاویری ضلع میں دو دھنگر جن کی شناخت سنجیو اور مائیلاری کے طور پر کی گئی تھی بجلی گرنے سے ہلاک ہوگئے ۔تملناڈو سے تعلق رکھنے والے دو ماہی گیروں کی تلاش کا کام جاری ہے ۔ یہ ماہی گیر گزشتہ روز ہناور کے قریب بحیرۂ عرب میں کشتی کے ڈوب جانے کے سبب لاپتہ ہوگئے تھے ۔ پوسٹ گارڈ نے 4ماہی گیروں کو بچایا اور اس علاقہ کے دیگر جہازو ں کو چوکس کیا۔اسی دوران کرناٹک کے وزیراعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی جنہوں نے صورتحال کا جائزہ لیا‘ مناسب مدد کاوعدہ کیا اور حکام کو ہدایت دی کہ متاثرہ علاقوں میں راحت اقدامات میں تیزی پیدا کی جائے ۔کمار سوامی نے کہا کہ انہو ں نے اڈوپی ضلع کے حکام کے سا تھ بات چیت کی ہے اورانہیں ہدایت دی کہ متاثرہ عوام کو بچائیں اور برقی کے کھمبوں کے گرپڑنے کے سبب بجلی کی سپلائی کے متاثرہونے کے سبب اس کو بحال کرنے کے اقدامات کئے جائیں۔کنٹرول رومس کا قیام عمل میں لایاگیا ہے اور تمام اقدامات کئے گئے ہیں ۔ حکومت مناسب گرانٹ منظور کرنے کے لئے تیار ہے ۔ حکام نے پہلے ہی دو دنوں کے لئے اسکولس اور کالجس کے لئے تعطیل کا اعلان کیا اور صورتحال پر متعلقہ ضلع حکام تعطیل میں توسیع کرسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ این ڈی آر ایف کی ٹیمیں پہلے ہی متاثرہ منگلورواور اڈوپی اضلاع پہنچ گئی ہیں۔ عوام سے اپیل کی گئی ہے کہ وہ سرکاری حکام سے تعاون کریں۔
اسپتال کے پروفیسرس نے
خدمات کا بائیکاٹ کیا
حیدرآباد30مئی(یواین آئی)تلنگانہ کے ٹیچنگ اسپتالوں کے پروفیسرس کی سبکدوشی کی عمر میں اضافہ کے ریاستی حکومت کے فیصلہ کے خلاف گاندھی اسپتال کے اسسٹنٹ اور ایسوسی ایٹ پروفیسرس نے خدمات کا بائیکاٹ کیا۔ان اسسٹنٹ اوراسوسی ایٹ پروفیسرس نے پانچ دن کی اجتماعی رخصت اتفاقی لے لی اور سپرنٹنڈنٹ کے دفتر سے اصل باب الداخلہ تک ریلی نکالی۔انہوں نے انتباہ دیا کہ گاندھی اسپتال سے راج بھون تک بھی ریلی نکالی جائے گی۔
امتیازی کامیابی
دانیہ احمد بنت ریحان احمد ، شانتی نکیتن ہائی اسکول ،رام نگرم کی طالبہ نے امسال ایس ایس ایل سی کے امتحان میں 83فیصد نمبرات حاصل کرکے امتیازی کامیابی حاصل کی ہے۔


Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: