سرورق / خبریں / بھدراوتی اسمبلی حلقہ کے کانگریس امیدوار بی کے سنگمیشور کی 11,567 ووٹوں کی اکثریت کے ساتھ کامیابی –

بھدراوتی اسمبلی حلقہ کے کانگریس امیدوار بی کے سنگمیشور کی 11,567 ووٹوں کی اکثریت کے ساتھ کامیابی –

بھدراوتی:اسمبلی انتخابات 2018کے نتائج کا اعلان ہوا ہے جس میں بھدراوتی اسمبلی حلقہ کے کانگریس امیدوار بی کے سنگمیشور نے ان کے قریبی حریف جے ڈی ایس امیدوار ایم جے اپاجی کے خلاف 11,567 ووٹوں کی اکثریت سے کامیابی حاصل کرلی ہے۔ جے ڈی ایس امیدوار و موجودہ رکن اسمبلی ایم جے اپا جی نے اپنے دور اقتدار میں ترقیاتی کام کئے تھے مگر شہر کے وی آئی ایس ایل کارخانے کو کان کنی اور ایم پی ایم کارخانے کے مزدوروں کو وی آر ایس کی رقم دلانے میں کامیاب نہیں ہوئے تھے جس کے سبب عوام نے انہیں شکست دے دی۔ سنگمیشورنے کارخانے کی ترقی اور پھر سے شروع کرنے کیلئے کافی جدوجہد کی تھی اور وی آئی ایس ایل کارخانے کیلئے کانکنی کی منظوری دلانے، 2سال سے باقی پڑے ایم پی ایم کارخانے کے مزدوروں کو وی آر ایس کی رقم دلانے میں کامیابی حاصل کرلی تھی۔ جو ان کی کامیابی کا سبب بنا ہے۔دوسری طرف وزیر اعلیٰ سدارامیا جب انتخابی مہم کے سلسلے میں شہر آئے ہوئے تھے اس وقت اپاجی کی طرف سے کارخانے کی خاطر اسمبلی میں کسی بھی طرح کی آواز نہ اٹھانے کے بارے میں عوامی حلقوں میں بحث چھڑ گئی تھی۔ کانگریس امیدوار بی کے شنگمیشور نے جملہ 75,722 ووٹ حاصل کر کے جیت درج کرائی ہے۔ جبکہ جے ڈی ایس امیدوار اپاجی نے 64,155 ووٹ حاصل کر کے دوسرے مقام پر ہیں۔ بی جے پی امیدوار جی آر پروین پٹیل 8974ووٹ حاصل کر کے تیسرا مقام حاصل کیا ہے۔حلقہ میں بقیہ امیدواروں کی تفصیل اس طرح ہے۔ ایم وی پی کی امیدوار ممتاز بیگم نے 450، عام آدمی پارٹی امیدوار روی کمار 219، آزاد امیدوار احمد علی 98، اوم وجیاومشی 104، کو ملا کماری 74، جان بینی 252، بی ناگراج 116، پی ای بسوا راج 172، وینکٹیش 194، ششی کمار گوڈا 572، ایس کے سدھیندرا 348ووٹ حاصل کئے ہیں۔ اس کے علاوہ نوٹا کو بھی 1414ووٹ دئے گئے ہیں۔جیسے ہی انتخابات کے نتائج کا اعلان ہوا بی کے سنگمیشور کے حامیوں اور کانگریس کارکنوں نے جیت کا جشن منایا۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: