سرورق / خبریں / یتنال کو بی جے پی میں دوبارہ شامل نہ کیا جائے: اپو پٹن

یتنال کو بی جے پی میں دوبارہ شامل نہ کیا جائے: اپو پٹن

وجئے پور: مقامی سطح پر بی جے پی کے ایک سرگرم لیڈر اور بی جے پی سے برخواست کئے گئے ایک اور طاقتور لیڈر کے درمیان سرد جنگ آغاز ہوگیا ہے۔ پچھلے دو مہینوں سے سابق مرکزی وزیر و آزاد رکن کونسل بسون گوڈا پتال کو دوبارہ بی جے پی میں شامل کئے جانے کی افواہ پھیل گئی تو یہاں یتنال کے ایک سیاسی حریف اور سابق ریاستی وزیر اپو پٹن شیٹی کیمپ اور مقامی بی جے پی یونٹ میں کھلبلی مچ گئی۔ یتنال کی متنازعہ بیان بازی بالخصوص ریاستی بی جے پی لیڈرز کی کھل کر مخالفت کرنے کے سبب اب تک یتنال کو دو مرتبہ بی جے پی سے خارج کیا گیا ہے۔ لوکل باڈیز انتخابات میں آزاد امیدوار کی حیثیت سے چن لئے جانے کے بعد یتنال کو یہاں ایک طاقتور اور سرگرم کٹر ہندو لیڈر کا درجہ حاصل ہوگیا تو یتنال اور بی جے پی کے درمیان دوریاں اور بڑھ گئیں۔ لیکن ریاستی اسمبلی انتخابات کے پیش نظر یتنال نے بی جے پی میں دوبارہ شمولیت کی خواہش کا اظہار کردیا۔بی جے پی کے قومی صدر امیت شاہ سے دو تین مرتبہ ملاقاتوں کے باوجود یتنال کی گھر واپس کا معاملہ کئی دنوں سے التوا میں پڑا ہوا تھا ۔ 4اپریل کو یتنال کی بی جے پی میں شمولیت کی جانکاری حاصل ہوئی مقامی سطح پر بی جے پی میں موصوف کے مخالفین خصوصاً اپوپٹن شیٹی کے طرفداروں میں کھلبلی مچ گئی اور یتنال کو کسی بھی صورت میں بی جے پی میں شامل نہیں ہونے کی مہم تیز کردی گئی۔بی جے پی لیڈر شپ کو آگاہ کیا گی کہ یتنال کو پارٹی میں نہ کیا جانے۔ اس ضمنی میں اپو پٹن شیٹی اور ان کے حامی بنگلور میں قیام کرتے ہوئے بی جے پی کے قومی وریاستی لیڈرز کو اس بات سے واقف کرانے کی کوشش کررہے ہیں کہ ایک گروپ یتنال کو بی جے پی میں شامل کئے جانے کی رکاوٹ کررہا ہے۔بی جے پی میں شمولیت کی تاریخ 4؍اپریل طے ہوگئی ہے۔ اگر یتنال کو پارٹی میں شامل کرلیا جائے تو اپوزیشن کی مہم ناکام ہوجائے گی۔ اور پارٹی سے ناراضی ہوکر پارٹی سے مستعفی ہونے کی خبریں بھی ہیں۔ جبکہ خود انہوں نے واضح کردیا کہ وہ کسی بھی حالت میں بی جے پی ترک نہیں کریں گے۔ اگر ایسا ہے تو یتنال کی پارٹی میں شمولیت کی راہ آسان ہوگئی ہے۔یہ بھی کہا جارہا ہے کہ وہ یتنال کی شمولیت کے بعد جے ڈی ایس میں شامل ہوجائیں گے۔ بی جے پی کی مقامی سرد جنگ کا فائدہ کون اٹھاسکتا ہے ، یہ آنے والا وقت ہی بتائے گا۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: