سرورق / بین اقوامی / ہیروشیما پر امریکہ کے انتہائی ہلاکت خیز حملے کے 73 برس –

ہیروشیما پر امریکہ کے انتہائی ہلاکت خیز حملے کے 73 برس –

ہیرو شیما جاپان کا شہر ہیرو شیما آج ہی کے دن 1945 میں اُس ایٹمی حملے کی زد میں آیا تھا جس نےفوری طور پر 70 ہزار لوگوں کو ہلاک کر دیا تھا۔
جنگوں کی تاریخ میں اس ہلاکت خیز اریکی اقدام کے تہتر برس پورے ہونے پر آج یہاں خصوصی یادگار تقریبات کا اہتمام کیا گیا ۔
یادگار تقریبات میں ایٹم بم گرنے سے مچنے والی تباہی کے نتیجے میں ہلاک اور زخمی ہونے والوں کو یاد کیا گیا اور ساتھ ہی اس بات زور دیا گیا کہ دنیا کو ان ہتھیاروں سے لازمی طور پر پاک کیا جائے۔ اس برسی کی بہ انداز دیگر اہمیت یہ ہے کہ یہ حالات کے ایک ایسے موڑ پر منعقدد ہوئی ہے جب دنیا بھر میں یہ امید کی جا رہی ہے کہ شمالی کوریا اپنا نیوکلیائی پروگرام ترک کر نے جا رہا ہے۔
جاپانی حکام کے حوالے سے آن لائن اطلاع دی گئی ہے کہ ہیروشیما میں اس سلسلے کی سرکاری تقریب میں میئر کازومی ماتسوری نے اس احساس کے ساتھ کہ اب وقت آ گیا ہے کہ ایٹمی ہتھیاروں کو ختم کر دیا جائے،حکومت پر زور دیا کہ وہ دنیا سے ایٹمی ہتھیاروں کے خاتمے کے حق میں زیادہ سے زیادہ فعال کردار ادا کرے۔تقریب میں جاپانی وزیر اعظم شینزو آبے بھی موجود تھے۔
واضح رہے کہ 6 اگست 1945ء کو امریکی جہاز اینولا گے نے ہیروشیما پر’لٹل بوائے‘ کا بے ضرر سا نام والا پہلا ایٹم بم گرایا تھا۔ اُس وقت ہیروشیما کی آبادی ساڑھے تین لاکھ تھی ۔ اس حملے میں 70 ہزار لوگ فوری طور ہلاک ہو گئے لیکن چند ہی دنوں کے بعد مرنے والوں کی تعداد دگنی یعنی ایک لاکھ 40 ہزار ہو گئی ۔اس حملے کے محض تین دن بعد جاپان کے دوسرے اہم شہر ناگاساکی پرامریکی ایٹمی حملے میں مزید 70 ہزار انسانی جانوں کا زیاں ہوا۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: