سرورق / بین اقوامی / ہند – برطانیہ ایک ارب پاؤنڈ کی نئی تکنیکی ساجھیداری اور کاروبار پر متفق –

ہند – برطانیہ ایک ارب پاؤنڈ کی نئی تکنیکی ساجھیداری اور کاروبار پر متفق –

لندن، ہندستان اور برطانیہ نے آج حوصلوں اور ولولوں سے بھرپور ایک نئی ہند برطانیہ تکنیکی ساجھیداری سے اتفاق کیا تاکہ ہندستانی اور برطانوی تاجروں اور چھوٹے اور محدود پیمانے کے کاروباریوں کے لئے ایک دوسرے کے یہاں منڈیوں کی راہ آسان ہو ۔
وزیراعظم نریندر مودی اور ان کی برطانوی ہم منصب تھریسا مئے نے ان ساجھیداریوں سے اتفاق کیا جن کا رخ دوطرفہ کاروبار سرمایہ کاری اور یونیورسٹیوں کی طرف ہوگا ۔ اس سے پہلے برطانیہ، اسرائیل تکنیکی ساجھیداری کی کامیابی سامنے آچکی ہے جس سے پانچ برسوں میں 62 ملین پاؤنڈ کا سودا ہوا ہے اور برطانوی معیشت پر اس کا اچھا اثر پڑا ہے۔ دونوں وزرائے اعظم نے تکنیکی ساجھیداری کے علاوہ ایک ارب پاؤنڈ کے نئے تجارتی سودوں کو بھی منظوری دی ۔ یہ اطلاع حکومت برطانیہ کی طرف سے جاری ایک بیان میں دی گئی ہے۔
برطانیہ ابتدائی طور پر ہندستان میں دس لاکھ پاؤنڈ کی امکانی سرمایہ کاری کرے گا جو 2022 تک بڑھ کر ایک کروڑ تیس لاکھ پاؤنڈ تک پہنچ سکتا ہے ۔ اس نیٹ ورک کی تیاری کے لئے درون ہند ماہرین کی خدمات لی جائے گی جو نئی دہلی میں برطانوی ہائی کمیشن کے ساتھ مل کر کام کریں گے ۔ اس میں حکومت ہند اور پرائیویٹ سیکٹر کا اشتراک بھی شامل ہوگا جس کا مقصد تکنیکی سرمایہ کاری کا دائرہ وسیع کرنا ایکسپورٹ اور ریسرچ کے کام کو آگے بڑھانا ہوگا۔
علاقائی سطح پر بھی چھوٹی چھوٹی ٹیموں کو سرگرم عمل کیا جائے گا ۔ یہ ٹیمیں ہندستان اور برطانیہ کے خاص شہروں اور علاقوں کو مربوط کریں گی۔ ہند برطانیہ ساجھیداری اختراعی عمل اور پیداواریت کی حوصلہ افزائی کرے گی اور یہ امدادی عمل برطانیہ اور ہندستان میں کاروبار ی سرگرمیوں کی مدد کے ذریعہ کیا جائے گا ۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: