سرورق / خبریں / ہندستان کا عورتوں پر ظلم و جبر کرنیوالے ملکوں میں سرفہرست ہونا موجب شرم: راہل گاندھی

ہندستان کا عورتوں پر ظلم و جبر کرنیوالے ملکوں میں سرفہرست ہونا موجب شرم: راہل گاندھی

نئی دہلی ، خواتین کے ساتھ ظلم و جبر کے حوالے سے ایک تازہ رپورٹ پر جس میں کہا گیا ہے کہ ہندستان عورتوں کے لئے انتہائی خطر ناک ملک ہے کانگریس کے صدر راہل گاندھی نے آج وزیر اعظم نریندر مودی کو زد میں لیا اور کہا کہ یہ بات موجبِ شرم ہے کہ ہندستان خواتین کی آبروریزی اور ان پر تشدد کرنے والے افغانستان، شام اور سعودی عرب جیسے ملکوں میں سر فہرست ہے۔
سوشل میڈیا پر مسٹر گاندھی نے کہا کہ ’’ہمارے وزیر اعظم جہاں اپنے باغ میں چپ چاپ یوگ کا ویڈیو بنا رہے ہیں وہی عورتوں پر تشدد اور ان کی آبروریزی کے معاملات میں ہندستان افغانستان، شام اور سعودی عرب جیسے ملکوں کی فہرست میں سب سے اوپر ہے۔ یہ ملک کے لئے کتنی شرم کی بات ہے‘‘۔
مسٹر گاندھی نے متعلقہ خبر کو بھی اپنے پوسٹ کا حصہ بنایا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ امور خواتین کے 550 ماہرین پر مشتمل تھامسن رائٹرز فاؤنڈیشن کے سروے کے مطابق ہندستان عورتوں پر جنسی زیادتی کے معاملے میں انتہائی خطر ناک ملک ہےجہاں عورتوں کو زبردستی خادمہ، مزدور، جنسی غلام بننے کے علاوہ شادی کرنے پر مجبور کیا جاتا ہے۔
رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ بعض ثقافتی روایات کے عورتوں پر پڑنے والے اثرات کے لحاظ سے بھی ہندستان دنیا کا ایک خطرناک ملک ہے ۔ان ثقافتی رسومات میں تیزاب پھینکنے کے واقعات، کم عمر کی شادیاں، اور جسمانی تشدد کے واقعات شامل ہیں ۔
قبل ازیں2011 کے ایک ایسے سروے میں ہندستان خطر ناک ملکوں کی فہرست میں چوتھےا ور پاکستان تیسرے نمبر پر تھا جبکہ افغانستان سر فہرست تھا۔ تازہ سروے میں افغانستان دوسرے نمبر پر ہے اور گزشتہ سات برسوں سے جنگ زدہ شام کو صحت عامہ تک محدود رسائی کے علاوہ جنسی اور غیر جنسی تشدد کی وجہ سے تیسرا خطرناک ترین ملک قرار دیا گیا ہے۔ شامل فہرست اولین دس ممالک میں امریکہ بھی واحد مغربی ملک کے طور پرشامل ہے ۔
سروے میں شامل ایک امریکی ماہر کا کہنا ہےکہ افغان خانہ جنگی اورتنازعات میں آنےوالی شدت کی وجہ سے وہاں خواتین اور بچیوں کی زندگیوں کو خطرات لاحق ہیں ۔ اس لئے وہ اس حوالے سے دنیا کا دوسرا خطرناک ملک ہے۔ افغانستان میں سلامتی کی ابتر صورتحال نے خواتین کی زندگی اجیرن کر کے رکھ دی ہے۔ 2017سے جاری درون ملک جنگ میں ملک کے زیادہ تر علاقوں میں اب طالبان کا قبضہ ہے۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: