سرورق / خبریں / کٹھوعہ اجتماعی عصمت دری معاملہ: متاثرہ کی وکیل کو کیس چھوڑنے کی مل رہی ہیں دھمکیاں –

کٹھوعہ اجتماعی عصمت دری معاملہ: متاثرہ کی وکیل کو کیس چھوڑنے کی مل رہی ہیں دھمکیاں –

سری نگر: کٹھوعہ اجتماعی عصمت دری معاملہ کی متاثرہ کی طرف سے کیس لڑرہی وکیل دیپکا سنگھ راجاوت کو کیس چھوڑنے کے لئے دھمکیاں مل رہی ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ انہیں مسلسل دھمکیاں مل رہی ہیں اور وہ اس کیس کو ریاست سے باہر لے جانا چاہتے ہیں۔ تاکہ کسی طرح کا دبائو نہ رہے اور متاثرہ کو انصاف ملے۔ دیپکا نے کہاکہ وہ آخری دم تک لڑیں گی اور متاثرہ کو انصاف ضرور دلائیں گی۔
دسری جانب جموں وکشمیر خواتین کمیشن کی چیئرپرسن نعیمہ مظہر نے اس معاملہ کو سیاسی موضوع نہ بنانے کی اپیل کی ہے۔ انہوں نے کہاکہ فی الحال متاثرہ کو انصاف دلوانا ہماری اولین ترجیحات ہونی چاہئے۔ نعیمہ کے مطابق کرائم برانچ اپنا کام بخوبی کررہی ہے اور کسی کو بھی ان پر سوال نہیں اٹھانا چاہئے۔
جموں وکشمیر بار ایسوسی ایشن نے کٹھوعہ عصمت دری اور قتل کی جانچ مرکزی تفتیشی بیورو (ایس بی آئی)سے کرانے کے مطالبات کو دہراتے ہوئے کہاکہ وہ ملزمین کی حمایت نہیں کررہا ہےبلکہ منصفانہ جانچ چاہتا ہے۔ بار ایسوسی ایشن کے چیئرمین بی ایس سلاتھیا نے نامہ نگاروں سے کہا کہ ریاستی کرائم برانچ نے عدالت میں جن ملزمین کے خلاف سخت چارج شیٹ پیش کیا ہے، وکیلوں کو ان کا حامی بتانے کی کوشش کی جارہی ہے۔
سلاتھیانے کہاکہ جموں کے وکیلوں پر ریاست کو فرقہ وارانہ طور پر تقسیم کرنے کا الزام لگاکر بدنام کیاجارہا ہے۔ ہم سبھی بس یہی بول رہے ہیں کہ معاملے کی جانچ سی بی آئی سے کرائی جائے، کیا سی بی آئی متعصب ہے؟ سوال تو یہ ہے کہ 8سال کی معصوم بچی کے ساتھ دیو استھان میں 6لوگوں کی درندگی، قتل، ثبوت، چارج شیٹ داخل ، پھر سی بی آئی جانچ کا مطالبہ کرکے عدالتی کارروائی میں تاخیر کرانے کے پیچھے آخر کیا نیت ہے؟
انہوں نے کہاکہ معاملے کی جانچ کررہی کرائم برانچ نے جانچ کے لئے کشمیر گھاٹی سے ایک افسر کو بلایا ہے جبکہ برانچ کے پاس جموں علاقے میں افسر دستیاب ہیں۔ انہوں نے کہاکہ بلائے گئے افسر پر پہلے قتل اور عصمت دری کے الزام بھی لگ چکے ہیں، ہم نے کہاکہ اس افسر کو اس معاملے کی جانچ دینے پر جانچ عمل پر سوال اٹھتا ہے۔ سلاتھیا نے کہاکہ انصاف صرف ہونا نہیں چاہئے بلکہ نظر بھی آنا چاہئے، یہ کتنی بدقسمتی کی بات ہے کہ ہمارے مطالبات کو فرقہ وارایت بتایاجارہا ہے، میڈیا کو ایمانداری سے خبریں بنانی چاہئے۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: