سرورق / خبریں / کون کہتا ہے کہ ہمارے پاس تعداد نہیں؟سونیا

کون کہتا ہے کہ ہمارے پاس تعداد نہیں؟سونیا

نئی دہلی ۔(آئی این ایس)مرکزی حکومت کے خلاف اپوزیشن جماعتوں کی عدم اعتماد کی تحریک کو لوک سبھا اسپیکرسمترا مہاجن نے منظورکرلیا ہے۔لیکن سوال یہ ہے کہ کیا یہ تجویز لانے کے لئے کانگریس کی قیادت میں اپوزیشن کے پاس تعداد ہے؟عدم اعتماد کی حمایت کے سوال پریوپی اے کی چیئرپرسن سونیا گاندھی نے کہاکہ کس نے کہا کہ ہمارے پاس تعداد نہیں ہے؟ واضح رہے کہ تیلگو دیشم پارٹی (ٹی ڈی پی)کی طرف سے لائی گئی عدم اعتماد کی تجویزکو کانگریس سمیت تمام اپوزیشن پارٹیوں کی حمایت حاصل ہے۔عدم اعتماد کی تحریک منظور ہوتے ہی سب کی نظران پارٹیوں پرہے، جواین ڈی اے میں ہوتے ہوئے بھی حکومت کو”دھوکہ” دے سکتی ہیں۔ واضح رہے کہ پارلیمنٹ میں عدم اعتماد کی تحریک لانے کے لئے کم ازکم50ممبران پارلیمنٹ کی حمایت لازمی ہوتی ہے۔مرکزکی مودی حکومت کی یہ پہلی عدم اعتماد کی تحریک ہے۔ ویسے اگراعدادوشمارکی بات کریں تواپوزیشن کی عدم اعتماد تحریک سے این ڈی اے حکومت پر کوئی بحران نہیں ہے۔ موجودہ وقت میں نریندرمودی حکومت کے پاس این ڈی اے کے سبھی اتحادی جماعتوں کو ملا کر لوک سبھا میں310ممبران پارلیمنٹ ہیں۔ ایسے میں اپوزیشن کی عدم اعتماد تحریک کی تجویز صرف ایک علامتی مخالفت کے طور پر ہی مانی جائے گی۔ابھی لوک سبھا میں بی جے پی کے پاس273ارکان ہیں، کانگریس48، اے آئی اے ڈی ایم کے37، ترنمول کانگریس34، بی جے ڈی20، شیو سینا18، ٹی ڈی پی16، ٹی آرایس11، سی پی آئی (ایم)9، وائی ایس آر کانگریس9، سماجوادی پارٹی7، اس کے علاوہ26دیگر پارٹیوں کے پاس 58ارکان پارلیمنٹ ہیں، 5سیٹیں خالی بھی ہیں۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: