سرورق / کھیل / کوریا نے دفاعی چیمپئن کو گھر کا راستہ دکھایا جیت کے باوجود خود بھی عالمی کپ سے باہر۔’’ہم تو ڈوبے ہیں صنم تم کو بھی لے ڈوبیں گے۔‘‘

کوریا نے دفاعی چیمپئن کو گھر کا راستہ دکھایا جیت کے باوجود خود بھی عالمی کپ سے باہر۔’’ہم تو ڈوبے ہیں صنم تم کو بھی لے ڈوبیں گے۔‘‘

کوریا نے دفاعی چیمپئن کو گھر کا راستہ دکھایا جیت کے باوجود خود بھی عالمی کپ سے باہر۔’’ہم تو ڈوبے ہیں صنم تم کو بھی لے ڈوبیں گے۔‘‘ماسکو،:(یو این آئی)4 بار کی عالمی چیمپئن جرمنی تاریخ کے ظلم کا ایسا شکار ہوئی کہ اسے فیفا عالمی کپ فٹ بال کے پہلے ہی راؤنڈ سے باہر ہو جانا پڑا۔فٹ بال عالمی کپ 1930 ء سے تاریخ گواہ ہے کہ اب تک صرف 2 ہی ملک اٹلی اور برازیل چیمپئن بننے کے بعد اگلے عالمی کپ میں اپنا خطاب برقرار رکھنے میں کامیاب رہے ہیں۔اٹلی نے 1934 ء میں خطاب جیتا اور اسے 1938 ء کے عالمی کپ میں برقرار رکھا۔ برازیل 1958 ء میں چیمپئن بنا اور پھر 1962 ء میں اس نے خطاب پر اپنا قبضہ برقرار رکھا۔عالمی کپ 2018ء میں جرمنی کی جنوبی کوریا کے ہاتھوں 2۔0 سے شکست کے ساتھ ہی عالمی کپ میں لگاتارپہلے ہی راؤنڈ میں ہی باہر ہونے والی تیسری دفاعی چیمپئن ٹیم بن گئی۔دفاعی چیمپئن اور عالمی کپ 2018 کے لیے فیورٹ ٹیموں میں سے ایک تصور کی جارہی جرمنی کی ٹیم جنوبی کوریا کے ہاتھوں 2۔0 کی اپ سیٹ شکست کے ساتھ ہی عالمی کپ کے پہلے ہی راؤنڈ میں باہر ہو گئی۔جرمنی کو عالمی کپ میں کھیلے گئے اپنے پہلے میچ میں میکسکو کے ہاتھوں شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا تاہم سویڈن کے خلاف ٹونی کروز کے آخری لمحات میں کیے گئے گول کی بدولت وہ عالمی کپ سے باہر ہونے سے بچ گیا تھا۔تاہم جنوبی کوریا نے اسے اپ سیٹ شکست دے کر عالمی کپ کے دفاع کا خواب چکنا چور کرتے ہوئے ایونٹ کی دوڑ سے باہر کردیا ۔یہ پہلا موقع نہیں کہ عالمی کپ کی دفاعی چیمپئن ٹیم پہلے راؤنڈ میں باہر ہوئی ہو بلکہ لگاتار تیسری مرتبہ عالمی کپ کی دفاعی چیمپئن ٹیم کو پہلے ہی راؤنڈ سے ناکام لوٹنا پڑا۔عالمی کپ میں سب سے پہلے ابتدائی راؤنڈ سے باہر ہونے والی دفاعی چیمپئن ٹیم اٹلی کی تھی جو 1950 ء کے عالمی کپ کے پہلے راؤنڈ سے آگے نہ جا سکی۔1938 ء کے عالمی کپ میں اٹلی نے چیمپئن بننے کا اعزاز حاصل کیا تھا اس کے بعد جنگ عظیم دوئم کی وجہ سے عالمی کپ منعقد نہ ہو سکا لیکن جب 12سال بعد عالمی کپ منعقد ہوا تو اٹلی کا سفر پہلے ہی راؤنڈ میں تمام ہو گیا۔اس بدقسمتی کا اگلا شکار برازیل کی ٹیم ہوئی تھی جب 1958 ء اور 1962 ء میں لگاتار 2 مرتبہ عالمی کپ جیتنے والی عالمی کپ کی تاریخ کی واحد ٹیم 1966 ء کے ایونٹ کے پہلے ہی راؤنڈ میں باہر ہو گئی تھی اور انگلینڈ نے چیمپئن بننے کا اعزاز حاصل کیا تھا۔اس کے بعد 8 عالمی کپ کوئی بھی دفاعی چیمپئن ٹیم عالمی کپ کے پہلے راؤنڈ میں باہر نہ ہوئی تاہم نئی صدی کے ساتھ ساتھ نئے ملینیئم کا آغاز عالمی چیمپئن ٹیموں کے لیے اچھا ثابت نہ ہوا اور پانچ میں سے چار دفاعی چیمپئن ٹیموں کا سفر پہلے ہی راؤنڈ میں تمام ہوا۔اس بدقسمتی کا پہلا شکار 1998 ء کا عالمی کپ جیت چکی فرانس کی ٹیم تھی جو 2002 ء عالمی کپ میں سینیگال جیسی نووارد ٹیم کے خلاف شکست سے دوچار ہونے کے بعد سنبھل نہ سکی اور ایونٹ کے پہلے ہی راؤنڈ سے ناکام گھر لوٹی۔2002 ء عالمی کپ کی چیمپئن نے اگلے ایونٹ میں کامیابی کے ساتھ پہلے راؤنڈ کو پار کیا لیکن 2006 ء کی چیمپئن اٹلی کی ٹیم 2010 ء میں بدترین ناکامی سے دوچار ہوئی۔24جون 2010 ء کو جوہانس برگ میں اٹلی اور سلواکیہ کے درمیان کھیلے گئے میچ میں دفاعی چیمپئن ٹیم کو لازمی فتح درکار تھی لیکن سلواکیہ نے اپ سیٹ کرتے ہوئے 3-2سے کامیابی حاصل کر کے اطالوی ٹیم کا سفر تمام کیا۔2010 ء میں چیمپئن بنی ٹیم اسپین کے لئے برازیلین سرزمین کا سفر کسی ڈراؤنے خواب سے کم نہ تھا اور چلی نے 18جون کو مراکانہ اسٹیڈیم میں اسے2-0 سے مات دے کر پہلے ہی راؤنڈ میں عالمی کپ کی دوڑ سے باہر کردیا تھا۔جب جرمنی کی ٹیم2018 ء کا عالمی کپ کھیلنے روس پہنچی تو اسے ایونٹ کے فیورٹ ٹیموں میں سے ایک گنا جا رہا تھا۔ لیکن میکسکو کے خلاف مایوس کن آغاز نے اس کی تیاریوں کی قلعی کھول دی۔سویڈن کے خلاف ٹیم خوش قسمتی سے فتح حاصل کرنے میں کامیاب رہی لیکن جنوبی کوریا کو کمزور سمجھنے کی غلطی جرمن ٹیم کو لے ڈوبی وہ 2۔0 کی شکست کے ساتھ ہی عالمی کپ کے پہلے ہی راؤنڈ سے باہر ہونے والی لگاتار تیسری دفاعی چیمپئن ٹیم بن گئی۔ گروپ ایف کے میچ میں جنوبی کوریا نے جرمنی کو 0۔2 سے شکست دے کر دفاعی چیمپئن کو عالمی کپ سے باہر کردیا ۔جو اس فٹبال عالمی کپ کا سب سے بڑا اَپ سیٹ ہے جبکہ 1938 ء یعنی80سال بعد جرمن فٹبال ٹیم ابتدائی راؤ نڈ میں ہی عالمی کپ سے باہر ہو گئی ہے۔اس ہار نے جہاں جرمن فینز کو اشکبار کر دیا وہیں کئی مداحوں نے اس دن کو یوم سیاہ قرار دیااور فضا سوگوار رہی ۔ اپنی ٹیم کی سپورٹ میںآئے لا تعداد فینز اس وقت نہایت د ل بر داشتہ ہو گئے جب جنو بی کوریا کے گول کیپر نے شاندار کھیل کا مظاہرہ کرتے ہوئے جرمن شاٹس کو گول کے جال سے دور رکھا اور ان کی گرد گھیرا تنگ کر دیا جس نے دفاعی چیمپئن گول کرنے میں ناکام رہااور شکست سے دوچار کر کے فیفا عالمی کپ سے آوٹ ہو گیا۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

وزیر کھیل راٹھور سے ملے لکشے سین –

نئی دہلی، جونیئر ایشیائی بیڈمنٹن چمپئن شپ میں 53 سال کے طویل وقفے کے بعد …

جواب دیں

%d bloggers like this: