سرورق / کھیل / کرکٹ: نیوزی لینڈ کے خلاف دوسرے ٹیسٹ میں، خراب روشنی سے انگلینڈ کی جیت میں رخنہ-

کرکٹ: نیوزی لینڈ کے خلاف دوسرے ٹیسٹ میں، خراب روشنی سے انگلینڈ کی جیت میں رخنہ-

کرائسٹ چرچ، انگلینڈ کرکٹ ٹیم کی نیوزی لینڈ کے خلاف دوسرے ٹیسٹ میں جیت حاصل کر کے سریز برابر کرنے کی راہ میں خراب روشنی نے رکاوٹ ڈالی اور میچ کے چوتھے دن پیر کو مسلسل دوسری بار مقررہ وقت سے پہلے دن کا کھیل روکنا پڑا۔اس وقت تک 382 رن کے بڑے ہدف کا تعاقب کر رہی میزبان ٹیم جیت سے 340 رن دور تھی۔انگلینڈ نے نیوزی لینڈ کے سامنے جیت کے لیے 382 رنز کا بڑا ہدف رکھا ہے جس کے جواب میں گھریلو ٹیم نے دوسری اننگز میں چوتھے دن کے کھیل کے ختم ہونے تک 23 اوور میں بغیر کسی وکٹ کے نقصان کے 42 رنز بنا لئے ہیں۔وہ اب بھی جیت سے 340 رن دور ہے لیکن اس کے تمام وکٹ محفوظ ہیں۔بلے باز ٹام لاتھم 25 رن اور جیت راول 17 رنز بنا کر کریز پر موجود ہیں۔
انگلش ٹیم نے غیر ملکی زمین پر اپنے گزشتہ 12 ٹسٹ میچوں میں ایک بھی نہیں جیتا ہے اور اسے اب دو ٹسٹ میچوں کی سیریز میں شکست سے بچنے کیلئے کیوی ٹیم کو آخری دن آل آؤٹ کرنا ہوگا جس سے اسے آکلینڈ میں اننگز سے شکست کھانی پڑی تھی۔اس سے پہلے انگلینڈ نے اپنی دوسری اننگز یہاں هیگلے اوول میں سیاہ بادل گھر آنے کے بعد نو وکٹ پر 352 کے اسکور پر ڈکلئیر کر دی تھی ۔
دوسرے ٹیسٹ میں یہ مسلسل دوسرا دن رہا جب خراب روشنی کی وجہ سے میچ کو طے وقت سے پہلے روک دینا پڑا تھا۔اسٹیڈیم میں فلڈ لائٹ نہیں ہونا بھی بڑا مسئلہ بنا۔وہیں انگلینڈ اب بھی مضبوط پوزیشن میں دکھائی دے رہی ہے جس کے خلاف نیوزی لینڈ نے سال 1999 کے بعد سے کوئی بھی ٹسٹ سیریز نہیں جیتی ہے۔مہمان ٹیم نے اپنی پہلی اننگز میں 307 رنز بنانے کے بعد نیوزی لینڈ کو اس کی پہلی اننگز میں 278 رنز پر ڈھیر کر دیا تھا۔انگلینڈ کو اس سے 29 رنز کی برتری ملی تھی۔مہمان ٹیم نے چوتھے دن پھر صبح اپنی دوسری اننگز تین وکٹ پر 202 رنز سے آگے بڑھاتے ہوئے 106.4 اوور میں نو وکٹ پر 352 رن پر ڈکلئیر کر دی۔
کل کے ناٹ آؤٹ بلے بازوں جو روٹ 30 رنز اور ڈیوڈ ملان 19 رنز نے اننگز کو آگے بڑھایا اور انہیں نصف سنچریوں میں تبدیل کیا ۔روٹ نے 128 گیندوں میں چار چوکے لگا کر 54 رن بنائے جو کپتان کی 39 ویں نصف سنچری ہے۔وہیں ملان نے 105 گیندوں میں سات چوکے لگا کر 53 رن بنائے۔دونوں نے چوتھے وکٹ کے لئے 97 رن جوڑے لیکن پھر تین گیندوں کے فرق پر دونوں کے وکٹ گر گئے۔لنچ تک انگلینڈ پانچ وکٹ پر 278 رنز تک پہنچ گیا۔انگلینڈ کے اگلے چار بلے بازوں نے 70 رنز اور شامل کئے جس میں جانی بيرسٹو نے سب سے زیادہ 36 رن بنائے جس میں پانچ چوکے شامل تھے۔بین اسٹوکس اور اسٹورٹ براڈ نے 12۔12 رن بنائے۔وکٹ کیپر بيرسٹو کے نویں بلے باز کے طور پر آؤٹ ہونے کے ساتھ ہی روٹ نے 352 پر اننگز ڈکلیئر کر دی۔
میچ کے پہلے تین دنوں میں تیز گیندبازوں ٹم ساؤتھی اور ٹرینٹ بولٹ نے انگلینڈ کے سب سے زیادہ وکٹ لئے لیکن چوتھے دن انگلینڈ کی دوسری اننگز میں باری کولن ڈی گرینڈهومے کی تھی جنہوں نے 94 رن پر مہمان ٹیم کے سب سے زیادہ چار وکٹ نکالے۔نیل ویگنر کو دو اور بولٹ کو دو وکٹ ملے جبکہ ساؤتھی کے پاس ایک وکٹ آیا۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

وزیر کھیل راٹھور سے ملے لکشے سین –

نئی دہلی، جونیئر ایشیائی بیڈمنٹن چمپئن شپ میں 53 سال کے طویل وقفے کے بعد …

جواب دیں

%d bloggers like this: