سرورق / خبریں / کرناٹک میں 70 فیصد سے زیادہ شرح ووٹنگ

کرناٹک میں 70 فیصد سے زیادہ شرح ووٹنگ

بنگلور، کرناٹک اسمبلی انتخابات میں آج پانچ کروڑ ووٹروں میں سے 70 فیصد سے زائد نے اپنے ووٹ کےحق استعمال کیا۔ اکا دوکا واقعات کو چھوڑ کر پولنگ ووٹنگ مجموعی طور سے پرامن رہی۔ریاست میں سال 2013 کے اسمبلی انتخابات میں 71.45، سال 2014 کے لوک سبھا انتخابات میں 67.8 فیصد اور 2008 کے اسمبلی انتخابات میں 64.68 فیصد ووٹ پڑے تھے۔ آج ہونے والے اسمبلی انتخابات میں ووٹنگ کا فیصد ابھی تک کے انتخابات میں سب سے زیادہ رہنے کی امید ہے۔ ریاست میں گرم موسم کو دیکھتے ہوئے الیکشن کمیشن نے ووٹنگ کا وقت ایک گھنٹے تک بڑھا یاہے۔ ووٹوں کی گنتی 15 مئی کو ہو گی۔کرناٹک اسمبلی کی 224 میں سے 222 نشستوں کےلئے ووٹنگ صبح کو سست رہنے کے بعد سورج چڑھنے کے ساتھ ووٹنگ کی رفتار میں بھی تیزي آئی اور شام ہوتے ہوتے اچھا خاصے ووٹ پڑ گئے۔ چیف الیکٹورل آفیسر کے دفترکی طرف سے دستیاب اعداد و شمارکے مطابق 12 بجے تک پولنگ کا فیصد 25-30 کے ارد گرد تک تھا۔ شام دو بجے تک یہ بڑھ کر 45 فیصد تک پہنچ گیا اور پولنگ ختم ہونے کے ایک گھنٹہ پہلے تک ووٹوں کی شرح 65 فیصد تک پہنچ گئی تھی۔پہلی بار ووٹ دنے والے 18-19 عمر کے ووٹروں میں ووٹ ڈالنے کے لئے خاصا جوش و خروش دیکھا گیا۔ ریاست کے بہت سے حلقوں میں خواتین کی شرح ووٹنگ مردوں کے تباسب سے زیادہ رہی۔ انتخابات میں اس بار 15 لاکھ 42 ہزار نئے ووٹر شامل ہوئے جو سال 2013 کے مقابلے ڈبل سے زیادہ ہے۔کرناٹک کے چیف الیکشن افسر سنجیو کمار نے یو این آئی سے کہا کہ ” مجموعی طور پر ووٹنگ پرامن رہی۔هیبل اسمبلی حلقہ میں لوٹگولاللي پولنگ ا سٹیشن پر گڑبڑی کی وجہ سے یہاں دوبارہ الیکشن کرانے کا حکم دیا گیا ہے۔ کل 164 پولنگ یونٹس، 157 کنٹرول یونٹس اور 470 وی وی پی اے ٹی مشین میں تکنیکی پریشانی آئی لیکن ان کو فوری طور پر تبدیل کر دیا گیا۔ اس سے ووٹنگ متاثر نہیں ہوئی ۔ ووٹنگ میں کچھ گڑبڑی کی شکایات موصول ہوئی ہيں اور انتظامیہ ان کی جانچ کرے گی”۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: