سرورق / خبریں / کرناٹک میں وزارتوں کو لے کر رسہ کشی، دو نائب وزرائے اعلیٰ کی مانگ پر کانگریس بضد

کرناٹک میں وزارتوں کو لے کر رسہ کشی، دو نائب وزرائے اعلیٰ کی مانگ پر کانگریس بضد

بنگلورو۔ کرناٹک میں گٹھ بندھن حکومت کی حصہ دار کانگریس اور جے ڈی ایس کے درمیان وزارتوں کی تقسیم کو لے کر اب تک کوئی سمجھوتہ نہیں ہو سکا ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ کانگریس ریاست میں دو نائب وزرائے اعلیٰ بنائے جانے کی اپنی پرانی مانگ پر اب بھی بضد ہے۔ کانگریس چاہتی ہے کہ دونوں نائب وزرائے اعلیٰ اس کی پارٹی سے ہی ہوں، لیکن کمارسوامی اس کے لئے تیار نہیں ہیں۔
بتا دیں کہ وزیر اعلیٰ کمار سوامی کے ساتھ کانگریس کے جی پرمیشور نے نائب وزیر اعلیٰ کے عہدہ کا حلف لیا تھا۔ وہیں، اسمبلی میں طاقت آزمائی کے دوران بی جے پی ارکان اسمبلی واک آوٹ کر گئے تھے۔ جس کے بعد حکمراں اتحاد نے اپنی اکثریت ثابت کر دی تھی۔ حالانکہ، اب ایک ہفتہ کے بعد بھی وزارتوں کو لے کر کانگریس اور جے ڈی ایس کے درمیان کوئی سمجھوتہ نہیں ہو پایا ہے۔
ذرائع کے مطابق، کانگریس یہاں وزیر اعلیٰ کے عہدہ کی قربانی کا حوالہ دیتے ہوئے کچھ ملائی دار وزارتوں پر نظریں جمائے ہوئے ہے۔ پارٹی یہاں فائنانس، پی ڈبلیو ڈی اور توانائی سمیت کم از کم 22 وزارتی عہدوں کا مطالبہ کر رہی ہے۔
دوسری جانب، کانگریس کے صدر راہل گاندھی نے اپنی ماں سونیا گاندھی کی طبی جانچ کے لئے امریکہ جانے سے قبل پارٹی لیڈران غلام نبی آزاد، احمد پٹیل اور اشوک گہلوت کو جے ڈی ایس کے ساتھ وزارتی عہدوں کی تقسیم کی ذمہ داری سونپی ہے۔ اسے لے کر پیر کی شام میں کانگریس اور جے ڈی ایس کے درمیان ملاقات بھی ہوئی، لیکن کوئی نتیجہ نہیں نکل پایا۔
اس میٹنگ میں جے ڈی ایس کی طرف سے وزیر اعلیٰ کمار سوامی، دانش علی اور ایچ ڈی ریوننا اور کانگریس کی طرف سے غلام نبی آزاد، احمد پٹیل، ڈی کے شیو کمار، ملک ارجن کھڑگے، سدارمیا، کے سی وینو گوپال اور جی پرمیشور شامل ہوئے۔ وہیں، میٹنگ کے بعد جے ڈی ایس لیڈر دانش علی نے میڈیا کو بتایا کہ دونوں جماعتوں میں ایک یا دو دن کے اندر اتفاق رائے ہو جائے گا۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: