سرورق / خبریں / کرناٹک انتخابات ۔ امیدواروں کی تعداد میں اضافہ کے رجحان میں کمی –

کرناٹک انتخابات ۔ امیدواروں کی تعداد میں اضافہ کے رجحان میں کمی –

بنگالورو، کرناٹک اسمبلی انتخابات میں اس مرتبہ، ہر انتخابات کے مقابلہ امیدواروں کی تعداد میں اضافہ کے رجحان میں کمی آئی ہے۔2013کے اسمبلی انتخابات میں 2948 امیدواروں کے برخلاف 224 نشستوں کے لئے 2655 امیدوار اس مرتبہ انتخابی میدان میں ہیں۔کانگریس ،222امیدواروں کے ساتھ اقتدار پر قبضہ کی برقراری کی کوشش کر رہی ہے جبکہ بی جے پی تمام حلقوں میں مقابلہ کررہی ہے جبکہ جنتادل ایس جو یہ دعوی کر رہی ہے کہ وہ بادشاہ گر نہیں بلکہ بادشاہ بن کر ابھرے گی نے201حلقوں پر امیدوار ٹہرائے ہے جس میں بہوجن سماج پارٹی کا حصہ 19ہے۔سی پی ایم نے 19،این سی پی نے14اور سی پی آئی نے دو امیدوار ٹہرائے ہیں۔رجسٹرڈ غیر مسلمہ جماعتوں کے 800امیدوار اور 1155آزاد امیدوار انتخابی میدان میں ہیں۔گزشتہ انتخابات میں 1223 آزاد امیدوار تھے اور832 امیدوار غیر مسلمہ علاقائی جماعتوں کے تھے۔خاتون امیدواروں کی تعداد میں قابل لحاظ اضافہ ہوا ہے۔12مئی کوہونے والے انتخابات کے لئے 219 خاتون امیدوار ہیں جبکہ گزشتہ انتخابات میں یہ تعداد170تھی ۔ سدارامیا حکومت کے تمام وزرا کو دوبارہ ٹکٹ دیا گیا ہے اور نئی اسمبلی میں بعض ہی نئے چہرے ہوسکتے ہیں۔تمام جماعتیں اس کے لئے خطرہ مول لینا نہیں چاہتیں ۔ان جماعتوں نے پچھلی اسمبلی کے ارکان کو ہی نشستیں الاٹ کی ہیں ۔بعض کو حریف جماعتوں سے ٹکٹ ملا ہے کیونکہ ان کی خود کی پارٹی نے ان کو ٹکٹ دینے سے انکار کردیا ہے۔ انتخابی میدان میں اہم مقابلہ کرنے والوں میں سدارامیاچامندیشوری حلقہ(15امیدوار)،بادامی(13امیدوار)،بی جے پی کے ریاستی صدر سدارمیا شکارپور(9)،جے ڈی ایس کے صدر رامنگارا(13)اور چناپٹنا(15)امیدوار شامل ہیں۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: