سرورق / کھیل / کامن ویلتھ گیمز: سرنج گیٹ ‘سے بچے ہندستان کو کرنا ہوگا شاندار آغاز –

کامن ویلتھ گیمز: سرنج گیٹ ‘سے بچے ہندستان کو کرنا ہوگا شاندار آغاز –

گولڈ کوسٹ، ہندستان کو بدھ سے شروع ہونے والے 21 ویں گولڈ کوسٹ دولت مشترکہ کھیلوں سے پہلے ‘سرنج گیٹ’ کیس سے گہرا جھٹکا لگ گیا تھا لیکن ہندوستانی کھلاڑی اس معاملے سے باہر نکلتےہوئے ان کھیلوں میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کرنے کے ارادے سے اتریں گے ۔ہندستان کا 222 رکنی دستہ گولڈ کوسٹ میں میزبان آسٹریلیا کی بادشاہت کو سخت چیلنج دے گا۔ ہندستان نے دولت مشترکہ کھیلوں کے گزشتہ تین ورژن میں کل 215 تمغے جیتے ہیں۔ان میں ہندستان نے 2006 کے میلبورن دولت مشترکہ کھیلوں میں 50، سال 2010 کے دہلی دولت مشترکہ کھیلوں میں سب سے زیادہ 101 اور سال 2014 کے گلاسگو دولت مشترکہ کھیلوں میں 64 میڈل جیتے ہیں۔
ہندستان گلاسگو کی اپنے ماضی کی کارکردگی کو پیچھے چھوڑتے ہوئے گولڈ کوسٹ میں دولت مشترکہ کھیلوں کی تاریخ میں کل 500 تمغوں کے ہندسے کو چھونے کا ہدف حاصل کرنے اتریگا۔ ہندستان کو سب سے زیادہ امیدیں کشتی، شوٹنگ ، ویٹ لفٹنگ، بیڈمنٹن اور باکسنگ سے رہیں گی۔گلاسگو میں ہندستان کے 15 طلائی تمغوں میں کشتی میں پانچ اور نشانےبازی میں چار طلائی تمغہ تھے۔گولڈ کوسٹ میں ہندوستان کو ان کھیلوں کے ابتدا سے پہلے ایک بہت بڑا دھچکا اس وقت لگا جب ہندستانی باکسر کے رہائشی احاطے کے پاس سرنج پائی گئیں جو دولت مشترکہ کھیل فیڈریشن (سي جي ایف) کے قوانین کے سراسر خلاف ورزی ہے۔ ہندستانی مکے باز فی الحال ڈوپنگ کے الزام سے بچ گئے ہیں لیکن یہ کیس ہندستانی کھلاڑیوں پر کھیل کی مدت کے دوران تلوار بن کر لٹکتا رہے گا۔
ہندوستانی کھلاڑیوں کو اس معاملے میں اضافی احتیاط برتنے کی ہدایات دی گئی ہیں اور خود بھی ہندوستانی کھلاڑیوں کو خاصا ہوشیار رہنا ہو گا کہ ان کے ساتھ کسی طرح کی کوئی سازش نہ ہو سکے۔اس طرح کا ایک بھی دوسرا واقعہ ہندستانی شبیہ کو داغدار کر سکتی ہے۔آسٹریلیا ان معاملات میں کتنا سخت ہے یہ سب نے بال ٹیمپرنگ معاملے میں دیکھ لیا ہے جہاں اس نے اپنے تین کھلاڑیوں پر پابندی لگا دی ہیں۔گولڈ کوسٹ میں ہندوستان کے کئی بڑے کھلاڑی میدان میں اتر رہے ہیں جن میں سے کئی کے لئے یہ آخری دولت مشترکہ کھیل بھی ہو سکتے ہیں۔اولمپکس اور عالمی چمپئن شپ کی چاندی کا تمغہ فاتح پی وی سندھو کو ہندوستانی علمبردار کی ذمہ داری سونپی گئی ہے جو بدھ کو افتتاحی تقریب میں ہندستانی توقعات کا بوجھ لے کر ٹیم کی قیادت کریں گی۔سندھو حال میں حیدرآباد میں ٹریننگ کے دوران اپنے ٹخنے میں کچھ چوٹ کھا بیٹھی تھیں لیکن انہوں نے امید ظاہر کی ہے کہ وہ اس چوٹ سے ٹھیک ہو کر ان کھیلوں میں ملک کی میڈل دعویداری کو مضبوط کریں گی۔
سندھو نے گلاسگو دولت مشترکہ کھیلوں میں ذاتی مقابلوں میں کانسی کا تمغہ جیتا تھا اور اس کے دو سال بعد ریو اولمپکس میں چاندی کا تمغہ جیتا تھا۔انہیں بڑے کھیل ایوینٹ میں اب اپنے پہلے طلائی کی تلاش ہے۔گلاسگو میں طلائی تمغہ جیتنے والے پہلوان سشیل کمار، شوٹر جیتو رائے، تجربہ کار گگن نارنگ، پانچ بار عالمی چمپئن ایم سی میري كوم، ہندستانی آئکن کھلاڑی سائنا نہوال، خاتون پہلوان ساکشی ملک، بھالا پھینک کھلاڑی نیرج چوپڑا، بیڈمنٹن کھلاڑی كندامبي سری کانت، ویٹ لفٹنگ سجيتا چانو، مکے باز مکیش کمار اور وکاس کرشنن ان کھیلوں میں طلائی تمغہ کے لئے مضبوط دعویدار رہیں گے۔ہندستان نے چار سال پہلے گلاسگو میں کشتی میں پانچ طلائی سمیت 13 تمغے، شوٹنگ میں چار طلائی سمیت 17 تمغے، ویٹ لفٹنگ میں تین طلائی سمیت 14 تمغے، بیڈمنٹن میں ایک طلائی سمیت چار تمغے، ایتھلیٹکس میں ایک سنہری سمیت تین تمغے اور اسکواش میں ایک تمغہ جیتا تھا۔ ہندستان کو باکسنگ میں پانچ، جوڈو میں چار، ہاکی میں ایک، ٹیبل ٹینس میں ایک اور جمناسٹک میں ایک تمغہ ملا تھا۔ہندستان اس وقت گولڈ کوسٹ میں 15 مختلف کھیلوں ایتھلیٹکس، بیڈمنٹن، باسکٹ بال، باکسنگ، سائیکلنگ، جمناسٹکس، ہاکی، لان بال، شوٹنگ ، اسکواش، تیراکی، ٹیبل ٹینس، ویٹ لفٹنگ، کشتی اور پیرا اسپورٹس میں اتریگا۔اس میں آٹھ پیرااتھليٹ بھی شامل ہیں۔
گولڈ کوسٹ میں ہندستان کا سب سے بڑا دستہ ہاکی میں 36 ارکان کا ہے۔اس کے بعد ایتھلیٹکس میں 28، شوٹنگ میں 27، باسکٹ بال میں 24، ویٹ لفٹنگ میں 16، کشتی میں 12، باکسنگ میں 12، بیڈمنٹن میں 10 اور ٹیبل ٹینس میں 10 کھلاڑی ہیں۔ہندستان بدھ کو افتتاحی تقریب کے اگلے دن کھیل کے ابتدائی دن بیڈمنٹن، خواتین ہاکی، خاتون اور مرد باسکٹ بال، سائیکلنگ، جمناسٹک، تیراکی، ویٹ لفٹنگ، باکسنگ، ٹیبل ٹینس،اسکواش اور لان بال میں اتریگا۔ ہندستان کی توقع رہے گی کہ اس کے کھلاڑی پہلے دن سے ہی شاندار آغاز کریں گے تاکہ ہندستانی امیدیں ہر دن پروان چڑھتی رہیں ۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

وزیر کھیل راٹھور سے ملے لکشے سین –

نئی دہلی، جونیئر ایشیائی بیڈمنٹن چمپئن شپ میں 53 سال کے طویل وقفے کے بعد …

جواب دیں

%d bloggers like this: