سرورق / خبریں / پارلیمان کامانسون اجلاس دھماکہ خیز ہوسکتا ہے بحسن خوبی کارروائی کیلئے مودی کی اپوزیشن سے اپیل –

پارلیمان کامانسون اجلاس دھماکہ خیز ہوسکتا ہے بحسن خوبی کارروائی کیلئے مودی کی اپوزیشن سے اپیل –

نئی دہلی۔(یو این آئی) وزیراعظم نریندر مودی نے تمام اپوزیشن جماعتوں سے پارلیمنٹ کامانسون اجلاس خوش اسلوبی سے چلانے میں تعاون کرنے کی اپیل کرتے ہوئے آج کہاکہ وہ جو بھی معاملہ یا مسئلہ اٹھائیں گے حکومت اس پر ضابطہ کے مطابق بحث کرانے کے لئے تیار ہے ۔پارلیمانی امور کے و زیر اننت کمار نے اجلاس شروع ہونے سے ایک دن پہلے حکومت کی طرف سے منگل کو بلائی گئی کل جماعتی میٹنگ کے بعد نامہ نگاروں سے کہاکہ میٹنگ بہت اچھے ماحول میں ہوئی اور اس میں کانگریس سمیت تمام اپوزیشن جماعتوں نے متحد ہوکر ایوان چلانے کے لئے مکمل تعاون کرنے کی بات کہی۔ میٹنگ میں مختلف قانونی کاموں اور قومی مسائل نیز امور پر بات چیت ہوئی۔ اپوزیشن جماعتوں نے ایوان میں ان کی طر ف سے اٹھائے جانے والے امور کے بارے میں بتایا۔مسٹر کمار نے بتایا کہ میٹنگ میں وزیراعظم نے تمام جماعتوں سے اجلاس کے دوران کام کاج میں تعاون کرنے کی اپیل کی۔ وزیراعظم نے کہا کہ اپوزیشن جماعتیں دونوں ایوانوں میں اپنے امور کو اٹھائیں اور ان پر مثبت بحث کریں لیکن ایوان کو چلانے کی ہر ممکن کوشش ہونی چاہئے ۔ اس سے خیالات کے تبادلہ کا موقع ملے گا اور حکمراں فریق کو بھی مختلف موضوعات پر آگے بڑھنے کا موقع ملے گا۔ مسٹر مودی نے کہاکہ یہ حکمراں فریق ، اپوزیشن اور عام لوگوں سب کے لئے مفید صورتحال ہوگی۔تیلگو دیشم پارٹی کی جانب سے مودی حکومت کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک لائے جانے کے بارے میں پوچھے جانے پر مسٹر کمار نے کہاکہ حکومت اپوزیشن کے ہر سوال کا جواب دینے ، ہر امور پر بحث کرانے اور ہر تجویز کا سامنا کرنا کے لئے تیا ر ہے ۔ ملک میں پیٹ پیٹ کر قتل کرنے کے واقعات پر لگام لگانے کے لئے سپریم کورٹ کے قانون بنانے کی ہدایت پر انہوں نے کہاکہ ایوان میں تو ہر موضوع اٹھے گا اور اسے حل کیا جائے گا۔خواتین ریزرویشن بل پاس کرنے کانگریس صدر راہل گاندھی کے مطالبہ کے بارے میں انہوں نے کہاکہ ہر موضوع پر حکومت بحث کے لئے تیار ہے ۔خیال رہے کہ پیر کو اپوزیشن جماعتوں نے الگ سے میٹنگ کرکے اجلاس کے لئے اپنی حکمت عملی بنائی تھی۔ میٹنگ کے بعد راجیہ سبھا میں اپوزیشن کے لیڈر غلام نبی آزاد نے کہاکہ تمام جماعتیں اس سے متفق ہیں کہ دونوں ایوان میں کام کاج ہونا چاہئے اور عام آدمی سے وابستہ امور پر بحث کی جانی چاہئے ۔ انہوں نے کہاکہ اس کے لئے حکومت کویہ یقینی بنانا ہوگا کہ کارروائی خوش اسلوبی سے چلے ۔انہوں نے کہاکہ گزشتہ اجلاس میں حکومت کی اتحادی جماعتوں نے کام کاج نہیں ہونے دیا اور پارلیمنٹ کی کارروائی ٹھپ کرنے کا الزام اپوزیشن کے سر ڈال دیا جبکہ حقیقت یہ ہے کہ حکومت پارلیمنٹ کا اجلاس نہیں چلانا چاہتی۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: