سرورق / خبریں / نرودا پاٹیا معاملے میں گجرات ہائی کورٹ نے تین قصورواروں کو دس دس سال کی سزا سنائی –

نرودا پاٹیا معاملے میں گجرات ہائی کورٹ نے تین قصورواروں کو دس دس سال کی سزا سنائی –

احمدآباد، گجرات ہائی کورٹ نے گجرات فسادات کے دوران یہاں 28 فروری 2002 کو نرودا پاٹیا میں 97مسلمانوں کے قتل عام سے متعلق نرودا پاٹیا معاملے کے تین قصورواروں کو آج دس دس سال قید کی سزا سنائی۔ عدالت نے 2012 میں خصوصی جانچ ٹیم ایس آئی ٹی کی خصوصی عدالت کی طرف سے بے قصور قرا ردئے گئے راج کمار چومال، پی جے راجپوت اور امیش بھرواڑ کو پچھلے دنوں قصور وار قرا ردیا تھا اور ان کی سزا کی مدت کے سلسلے میں فیصلہ محفوظ رکھا تھا۔ جج محترمہ ہرشا دیوانی اور اے ایس سوپیہیا کی بنچ نے آج تینوں کو د س دس سال قید اور ایک ہزار روپے جرمانے کی سزا سنائی ۔
اسی عدالت نے گذشتہ اپریل میں متعلقہ اپیل کی سماعت کے دوران نچلی عدالت کی طرف سے 29افراد کو بری کرنے کے فیصلے کو برقرار رکھا تھا۔ عدالت نے ایک ملزم اور سابق وزیر مایاکوڈنانی کو بھی بری کردیا تھا۔ دو ہزار دو میں گجرات کے گودھرا میں سابرمتی ایکسپریس ٹرین کے کچھ ڈبے جلائے جانے کے بعد بھڑکے فسادات میں نرودا پاٹیا میں سب سے زیادہ تشدد ہوا تھا۔
کیا ہے نرودا پاٹیا کیس؟ گجرات میں سال 2002 میں ہوئے فساد کے دوران احمد آباد میں واقع نرودا پاٹیا علاقے میں 97 لوگوں کا قتل کر دیا گیا تھا ۔یہ قتل 28 فروری 2002 کو ہوا تھا ۔اس فساد میں 33 لوگ زخمی ہوئے تھے۔
کیوں ہوا تھا قتل ؟ یہ واقعہ 27 فروری 2002 کو گودھرا میں سابرمتی ایکسپریس ٹرین جلائے جانے کے ایک دن بعد ہوا تھا۔ وشو ہندو پریشد نے 28 فروری 2002 کو بند کا اعلان کیا تھا۔اسی دوران نرودا پاٹیا علاقے میں مشتعل بھیڑ نے اقلیتی کمیونٹی کے لوگوں پر حملہ کر دیا تھا۔ مشتعل بھیڑ نے نرودا پاٹیا علاقہ میں کئی گھروں کو جلا دیا تھا۔ 97 لوگوں کا قتل کر دیا گیا تھا۔ 33 لوگ زخمی بھی ہوئے تھے۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کانگریس پارٹی سے مجھے کوئی بیزارگی نہیں: کمار سوامی

رام نگرم: مجھے کانگریس پارٹی کی طرف سے کوئی الجھن نہیں ہے اور نہ ہی …

جواب دیں

%d bloggers like this: