سرورق / خبریں / نائیڈو کے فیصلے کے خلاف عرضی پر منگل کو غور ممکن

نائیڈو کے فیصلے کے خلاف عرضی پر منگل کو غور ممکن

نئی دہلی، (یو این آئی) سپریم کورٹ کے چیف جسٹس دیپک مشرا کے خلاف تحریک مواخذہ معاملے میں راجیہ سبھا کے چےئرمین ایم وینکیا نائیڈوکے فیصلے کوچیلنج کرنے والی کانریس اراکین کی عرضی کو سماعت کے لئے اندراج کرنے کے سلسلے میں فورا کوئی رولنگ دینے سے انکار کردیا۔ کانگریس کے دو راجیہ سبھا اراکین پرتاپ سنگھ باجوا اور یمی یاگنگ کی طرف سے سینئر وکیل کپل سبل نے معاملے کے عدالت عظمی کے دوسرے سینئر وکیل جستی چیلمیشور کے سامنے خصوصی ذکر کیا ۔ سابق وزیر قانون نے جسٹس چیلمیشور سے عرضی کو فوراً سماعت کے لئے قبول کرنے کی درخواست کی لیکن عدالت نے اس پر فوراً کوئی رولنگ دینے سے منع کردیا۔جسٹس چلمیشور نے کہا کہ چونکہ سی ب جے آئی کو ماسٹر آف روسٹر کا درجہ آئینی طور پر حاصل ہے اس لئے یہ عرضی بھی سی جے آئی کے پاس ہی بھیجی جانی چاہئے۔ اس پر مسٹر سبل نے دلیل دی کہ چونکہ مواخذہ کی عرضی سی جے آئی کے خلاف تھی اس لئے اس معاملے میں دائر عرضی پر سماعت کا حکم عدالت عظمی کے دیگر سینئر ترین جج جاری کرسکتے ہیں۔ وہ متعلقہ عرضی کو سماعت کے لئے اندراج کرسکتے ہیں لیکن عدالوت نے کوئی رولنگ دینے کے بجائے ان کی درخواست پر غور کرنے کے لئے عرضی گذاروں کو منگل کو ساڑھے دس بجے آنے کے لئے کہا۔ خیال رہے کہ چیف جسٹس کے رویہ پر اعتراض کرتے ہوئے کانگریس کی قیادت میں سات اپوزیشن جماعتوں کے 64 ممبران پارلیمنٹ نے راجیہ سبھا کے چےئرمین ایم وینکیا نائیڈو کو جسٹس مشرا کے خلاف تحریک مواخذہ کا نوٹس دیا تھا ۔ مسٹر نائیڈو نے نوٹس کو خارج کردیا تھا۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: