سرورق / بین اقوامی / نائیجیریا میں چرچ پر حملہ، 16 افراد ہلاک –

نائیجیریا میں چرچ پر حملہ، 16 افراد ہلاک –

لاگوس، فرقہ وارانہ تشدد کا سامنا کر رہے نائیجیریا کے ایک صوبے میں بندوقوں سے لیس کچھ چرواہوں نے منگل کو ایک چرچ کے مذہبی اجتماع پر حملہ کر دیا جس میں 16 افرادکی موت ہو گئی۔
بنيو نامی صوبے میں پولیس کے ترجمان موسی يامو نے بتایا کہ یہ حملہ گویر ایسٹ انتظامیہ کے ايار بلوم نامی گاؤں میں منگل کی صبح تقریبا چھ بجے ہوا۔ مسٹر يامو نے چرواہوں کی طرف کئے گئے اس حملے میں دو پادریوں سمیت 16 افراد کے مارے جانے کی تصدیق کی ہے۔
چراگاہ حقوق اور گھٹتی ہوئی زرخیز زمین کے معاملہ پر ہونے والی ان پرتشدد جھڑپوں نے ملک میں سیکورٹی نظام کو برقرار رکھنے کی حکومت کی اہلیت کو لے کر سوال کھڑے کر دئیے ہیں۔ فرقہ وارانہ تشدد میں شامل چرواہا بنیادی طور پرفلاني نسلی گروپ کے مسلمان ہیں جبکہ یہاں بسنے والے زرعی کمیونٹیز کے رکن زیادہ تر عیسائی ہیں۔اس قسم کے حملے دونوں جانب سے کیے جاتے ہیں. نائیجیریا میں چرواہوں اور کسانوں کے درمیان ہونے والی پرتشدد جھڑپوں میں اس سال سینکڑوں لوگ مارے گئے ہیں۔ ملک میں پرتشدد واقعات کو روکنے کا دباؤ صدر محمد بوهاري پر بھی ہے۔ نائیجیریا میں آئندہ انتخابات کے پیش نظر یہ مسئلہ کافی اہم ثابت ہو سکتا ہے۔ غور طلب ہے کہ 2018 کے آغاز میں مڈل بیلٹ نامی صوبوں میں ہوئے تشددواقعات میں تقریبا 73 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: