سرورق / بین اقوامی / مینگ کی نیپاليوں کی عارضی حیثیت ختم کرنے پر تنقید

مینگ کی نیپاليوں کی عارضی حیثیت ختم کرنے پر تنقید

نیویارک، امریکی کانگریس رکن گریس مینگ نے کچھ نیپالی شہریوں کی عارضی حیثیت ختم کرنے پر ٹرمپ انتظامیہ کے فیصلے کی تنقید کی ہے۔
محترمہ مینگ ہندوستانیوں اور دیگر جنوبی ایشیائی لوگوں کے حقوق کے لئے جدوجہد کرتی رہتی ہیں اور اکثر ان کمیونٹیز سے منسلک مسائل کو اٹھاتی رہتی ہیں۔
انہوں نے کل اپنے ایک بیان میں کہا’’ایک بار پھر ٹرمپ انتظامیہ نے مایوس کن اور احمقانہ فیصلہ کیا ہے‘‘۔ انہوں نے کہا ’’اس بار انہوں نے تقریبا نو ہزار نیپالی شہریوں کو ملک چھوڑنے کے بارے میں کہاہے جنہوں نے ہمارے ملک میں تحفظ اور سلامتی کیلئے پناہ لے رکھی ہے‘‘۔
کانگریس کے رکن نے کہا کہ اس حالت میں انہیں سیکورٹی کی ضرورت ہے کیونکہ ان کا وطن 2015 میں تباہ کن زلزلہ سے باہر نہیں نکل پایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ ملک کی سلامتی کے لئے خطرہ نہیں ہیں بلکہ واقعی امریکہ کے لئے ایک اثاثہ ہیں۔
امریكي ممبر پارلیمنٹ نے کہا’’ایک بار پھر یہ ٖفیصلہ صدر ٹرمپ کے تارکین وطن ایجنڈے کو مضبوط کرتا ہے اور امریکی اقدار کو نظر انداز کرتا ہے‘‘۔
اوباما انتظامیہ کی طرف سے امریکی قانونی ماہرین کی درخواست پر نیپاليوں کو یہاں رہنے دیا گیا تھا اور اب یہ صورت حال جون میں ختم ہو جائے گی۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: