سرورق / کھیل / میسی اور رونالڈو کے حشر سے نیمار اور برازیل کو ہوشیار رہنا ہوگا –

میسی اور رونالڈو کے حشر سے نیمار اور برازیل کو ہوشیار رہنا ہوگا –

سمارا، یکم جولائی (یو این آئی) دنیا کے دو ممتاز فارورڈ کھلاڑیوں لیونل اور میسی کی ارجنٹینا اور کرسٹیانو رونالڈو کی پرتگال کا راؤنڈ 16 میں حشر دیکھنے کے بعد ایک اور اسٹار فارورڈ نیمار کی پانچ بار کی چیمپئن برازیل کو پیر کے روز میکسکو کے خلاف ہونے والے فیفا عالمی کپ پری کوارٹر فائنل مقابلے کے لیے ہوشیار رہنا ہوگا۔ ارجنٹینا کو فرانس کے ہاتھوں 3-4 اور پرتگال کو ارگوے کے ہاتھوں 1-2 سے شکست کے بعد عالمی کپ سے باہر ہونا پڑا ہے ۔ موجودہ چیمپئن اور عالمی نمبر ایک کی جرمنی کے پہلے راؤنڈ میں ہی خطاب کے دوڑ سے باہر ہوجانے اور رنراپ ارجنٹینا اور پرتگال کے راؤنڈ 16 میں باہر ہوجانے کے بعد پانچ بار کی چیمپئن برازیل پر اب یہ ذمہ داری آگئی ہے کہ وہ بڑی ٹیموں کا وقار بچائے ورنہ اسے بھی باہر کا راستہ دیکھنا پڑے گا۔برازیل کو معلوم ہے کہ میکسکو نے گروپ مرحلے میں جرمنی کو ہرایا تھا اور خود اعتمادی سے لبریز ایسی ٹیم سے برازیل کو چوکس رہنا ہوگا۔ دوسری طرف میکسکوکو بھی یہ پتہ ہے کہ اس کا سامنا ایسی ٹیم سے ہے جو اپنے دن بے حد خطرناک تصور کی جاتی ہے اور جب نیمار جیسی کھلاڑی اپنے رنگ میں ہو تو برازیل کو ہرانا اور بھی مشکل کام ہوجائے گا۔برازیل نے عالمی کپ میں سست آغاز کے بعد رفتار پکڑی ہے اور وہ گروپ ای میں چوٹی پر رہی ہے جب کہ میکسکو کو گروپ ایف میں دوسرا مقام ملا تھا۔ برازیل کی ٹیم لگاتار تیرہویں بار گروپ مرحلہ پار کرکے ناک آؤٹ مرحلے میں کھیل رہی ہے اور پچھلے 18 عالمی کپ میں 16 بار کوارٹر فائنل میں جگہ بنا چکی ہے جب کہ میکسکو کو صرف دوبار 1970 اور 1986 میں کوارٹر فائنل کھیلنے کا موقع ملا ہے ۔ میکسکو نے گروپ مرحلہ میں ضرور اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے لیکن جب بات ناک آؤٹ کی ہو تو صورتحال کسی بھی ٹیم کے لیے بدل سکتی ہے کیونکہ یہاں ہارنے کا مطلب سیدھا خطاب کی دوڑ سے باہر ہوجاناہے ۔میکسکو نے اپنے پہلے میچ میں جرمنی کو ایک صفر سے شکست دے کر یہ ثابت کردیاتھا کہ اس کا دفاع کتنا مضبوط ہے ۔ حالانکہ اسے اپنا آخری گروپ میچ میں سوئیڈن کے ہاتھوں ہار کا سامنا کرنا پڑا تھا۔میکسکو کے پاس اس میچ میں معطل دفاعی کھلاڑی ہکٹر مورینونہیں ہے اور فلپ کوٹینواورنیمار جیسے قدآور کھلاڑیوں کو روکنے کے لیے اسے اپنا پورا زور لگانا ہوگا۔ میکسکو نے گروپ میں اچھا آغاز کیاتھا لیکن سوئیڈن کے ہاتھوں شکست نے اسے ضرور تشویش میں مبتلا کیا ہوگا۔ برازیل نے سوئزرلینڈ سے ایک ایک سے ڈرا کھیلنے کے بعد کوسٹاریکار اور سربیا کو 2-0 کے یکساں فرق سے ہرایا جس کی وجہ سے اس کے حوصلے بلند ہوں گے اور اس کے پاس نیمار کوٹینو کے علاوہ تھیئے گوسلوا اور گیبرئیل جیسس جیسے کھلاڑی بھی ہیں جو حریف ٹیم کو پریشانی میں ڈال سکتے ہیں۔ برازیل کے لیے ایک اچھی خبر یہ بھی ہے کہ اس کے رائٹ بیک ڈینیلو اپنی چوٹ سے ابھر چکے ہیں اور کھیلنے کے لیے تیار ہیں۔برازیل اور میکسکو 2014 میں ہوئے پچھلے عالمی کپ میں جس کی میزبانی برازیل نے ہی کی تھی ، ایک ہی گروپ میں تھے اور دونوں کے بیچ گروپ مرحلہ کا میچ کسی گول کی بغیر برابر پرختم ہوا تھا۔اس سے پہلے 1962 کے عالمی کپ میں برازیل نے ماریوجگالو اورپیلے کے گولوں سے گروپ مرحلے میں میکسکو کو 2-0 سے ہرایاتھا۔ دونوں ٹیموں کا عالمی کپ میں پہلا مقابلہ 1950 میں عالمی کپ میں ہوا تھا جس میں میزبان برازیل نے میکسکو کو 4-0 سے شکست دی تھی۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

ٹیسٹ ٹیم میں کلدیپ كو موقع مل سکتا ہے : وراٹ

نوٹنگھم، انگلینڈ کے خلاف ون ڈے سیریز کے شاندار آغاز سے پرجوش ہندوستانی کپتان وراٹ …

جواب دیں

%d bloggers like this: