سرورق / خبریں / میسور کے سیاحتی مراکز کی ترقی کیلئے اقدامات جلد: سارامہیش

میسور کے سیاحتی مراکز کی ترقی کیلئے اقدامات جلد: سارامہیش

میسور:(پیر پاشاہ، نامہ نگار) شری کرشنا راجہ واڈیئر کے دور سے ہی قدیم طریقوں کو اپنا یا جاتا رہا ہے۔ میسور کے سیاحتی مراکز کو سنوارنے اور سجانے کیلئے وزیر اعلیٰ کمار سوامی سے بات چیت کی گئی ہے اور تجویز پیش کی گئی ہے۔ میسور کیلئے سیاح ہزاروں کی تعداد میں آتے ہیں مگر صرف ایک یاد ودن قیام کے بعد واپس لوٹ جاتے ہیں، میسور میں واقع سینکڑوں شاندار ہوٹلس اور لاڈجوں کو کوئی فائدہ نہیں ہورہا ہے۔ سیاحوں کو میسور میں تین چار دنوں تک قیام کرنے کیلئے مجبور کرنے اور سیاحوں کو دلچسپ اور قابل دید مقامات کی طرف کھینچنے کے مقصد سے میسور کے ککلرہلی لیک کو خوبصورت بنانے کیلئے کروڑوں روپئے کا منصوبہ بنایا گیا ہے۔ان خیالات کا اظہار ریاستی وزیر برائے سیاحت وریشم ایس آر مہیش نے کیا۔ انہوں نے یہاں آج پتراکر بھون میں ضلع صحافیوں کی انجمن کے زیر اہتمام منعقد ’’میٹ دی پریس‘‘ پروگرام میں بطور مہمان خصوصی شرکت کرتے ہوئے صحافیوں سے خطاب کے دوران کہا کہ میسور میں پچھلے کئی دہوں سے ریس کورس قائم ہے جو 139 ایکڑ زمین پر پھیلا ہوا ہے جس کا کرایہ سالانہ صرف 2لاکھ روپئے ادا کیا جارہا ہے۔اگر اس زمین کو تحویل میں لے کر سیاحتی مراکز میں تبدیل کردیا گیا تو کروڑوں کی آمدنی ہوسکتی ہے۔ ریس کورس میں گھوڑے دوڑانے کے بجائے صرف 40تا 50 گھوڑے پال رہے ہیں۔جس کی وجہ سے قریب میں واقع چڑیا گھر کے چرندوں اور پرندوں کو گھوڑوں کی لید کی بدبو سے پریشانی ہورہی ہے۔ ان گھوڑوں کی دیکھ بھال کرنے والے بھی اس ریس کورس میں کھانا تیار کررہے ہیں اور ریس کورس کو اپنی قیام گاہ بنالیا ہے۔ حکومت کی بھی کوشش یہی ہے کہ اس ریس کورس کو شہر سے باہر کسی ویران جگہ منتقل کردیا جائے۔ ریشم سے متعلق بات کرتے ہوئے وزیر موصوف نے کہا کہ رام نگرم اور کولیگال میں ریشم کا مارکیٹ ہے مگر تاحال میسور میں سلک مارکیٹ کا قیام عمل میں نہیں آسکا ہے بہت جلد میسور میں سلک مارکیٹ کا قیام عمل میں لایا جائے گا میسور سلک دنیا بھر کے ممالک میں مشہور مانا جاتا ہے۔وزیر ریشم سارا مہیش نے مزید کہا کہ ریشم کے ایکسپورٹ پر بھی خصوصی توجہ دی جائے گی اور ریشم تیار کرنے والے غریب کاشتکاروں کو سہولتیں فراہم کی جائے گی۔اس موقع پر میسور ضلع صحافی انجمن کے صدر مہیندرا، جنرل سکریٹری لوکیش بابو، نائب صدر سبرامنیم اور دیگر موجود تھے۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: