سرورق / خبریں / مہابودھی مندر دھماکہ: پانچ قصورواروں کو عمر قید، جرمانہ بھی کیا گیا عائد –

مہابودھی مندر دھماکہ: پانچ قصورواروں کو عمر قید، جرمانہ بھی کیا گیا عائد –

پٹنہ ، بہار کے بودھ گیا میں واقع بدھ مت پیروکاروں کے مقدس مذہبی مقام مہابودھی مندر کمپلیکس میں ہونے والے سلسلہ وار بم دھماکوں کے کیس میں مجرم قرار دیئے گئے پانچ قصورواروں کو قومی جانچ ایجنسی (این آئی اے) کی خصوصی عدالت نے آج عمر قید کی سزا سنائی۔
این آئی اے کے خصوصی جج منوج کمار سنہا نے 25 مئی کو اس معاملے میں پانچ ملزمان حیدر علی، امتیاز انصاری، مجیب اللہ انصاری، عمر صدیقی اور اظہر الدین قریشی کو تعزیرات ہند اور غیر قانونی سرگرمیوں کی روک تھام ایکٹ کی مختلف دفعات کے تحت مجرم قرار دینے کے بعد گزشتہ دو دنوں سے سزا کے نقطہ پر دونوں اطراف کی دلیلیں سننے کے بعد آج یہ سزا سنائی ہے۔
خصوصی جج نے حیدر علی پر کل 60 ہزار روپے کا، امتیاز اور مجیب اللہ پر 50-50 ہزار روپے کا اور عمر اور اظہر الدین پر 40-40 ہزار روپے کا جرمانہ بھی کیا ہے۔ جرمانے کی رقم ادا نہ کرنے پر حیدر علی کو تین سال، امتیاز اور مجیب اللہ کو ڈھائی سال اور عمر اور اظہر الدین کو دو سال کی قید کی اضافی سزا بھگتنی ہوگی۔
بہار میں گیا ضلع میں بودھ گیا میں واقع بودھ عقیدت مندوں کے مبارک مذہبی مقام مہابودھی مندر کے احاطے میں سات جولائی 2013 کو مختلف مقامات پر سلسلہ وار بم دھماکے ہوئے تھے ۔ ان دھماکوں میں کئی لوگ زخمی ہوگئے تھے جب کہ پولیس نے مندر کے احاطے میں رکھے گئے کئی بموں کو برآمد کرکے ناکارہ بنادیا تھا۔ ابتدائی جانچ بہار پولیس کی اسپیشل ٹیم کررہی تھی لیکن بعد میں جانچ کی ذمہ داری این آئی اے کو دی گئی۔
این آئی اے نے جانچ کے بعد اس معاملے میں جھارکھنڈ کے رانچی کے رہنے والے حیدرعلی، امتیاز انصاری، مجیب اللہ اور چھتیس گڑھ کے رائے گڑھ کے عمر صدیقی اور اظہر الدین قریشی اور ایک دیگر نابالغ ملزم کے خلاف تین جون2014 کو چار ج شیٹ داخل کیا تھا۔ نابالغ ملزم کی سماعت جوینائل جسٹس بورڈ پٹنہ نے الگ سے کی تھی اور چند دن قبل اسے قصور وار قرار دے کر تین سال قید کی سز اسنائی تھی جب دیگر پانچ ملزمین کے خلاف پٹنہ سول کورٹ میں واقع این آئی اے کی خصوصی عدالت میں سماعت ہوئی۔
سماعت کے دوران 90 گواہوں نے عدالت میں اپنا بیان درج کرائے۔ جب کہ دفاع نے کوئی بھی گواہ پیش نہیں کیا۔ گیارہ مئی 2018کو آخری سماعت کے بعد عدالت نے اپنا فیصلہ 25مئی تک کے لئے محفوظ رکھ لیا تھا او راسی دن تمام پانچوں ملزمین کو قصوروار قرار دینے کے بعد سزا کے سلسلے میں 31 مئی کی تاریخ مقرر کی تھی۔
واضح رہے کہ چار سال 10 ماہ بعد جمعہ کو این آئی اے کورٹ کا فیصلہ آیا ہے ۔کورٹ نے معاملہ میں تمام 5مجرمین کو مجمر قرار دیا تھا ۔ 7 جولائی 2013 کو بودھگیا میں ہوئے نو دھماکو میں پانچ مجرمین کے خلاف این آئی اے کورٹ کے خصوصی جسٹس منوج کمار نے فیصلہ سناتے ہوئے تمام گنہگاروں کو مجرم قرار دیا تھا ۔ سال 2013 میں ہوئے اس دھماکہ میں ایک تبتی بودھ مذہب کے داہب اور میامار کے پلگریم زخمی ہو گئے تھے۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: