سرورق / خبریں / مودی حکومت کے اقدامات سے بدعنوان افراد خوف میں مبتلا:بی جے پی

مودی حکومت کے اقدامات سے بدعنوان افراد خوف میں مبتلا:بی جے پی

نئی دہلی، بھارتیہ جنتا پارٹی(بی جے پی ) نے کانگریس پر بدعنوانی کرنے والوں کو تحفظ فراہم کرنے کا الزام لگاتے ہوئے آج کہا کہ مودی حکومت سے ایسے لوگ خوف زدہ ہیں اور ان میں عدم تحفظ کا احساس پید اہوچکا ہے۔

بی جے پی کے ترجمان ڈاکٹر سمبت پاترا نے یہاں ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ ملک کے تمام بدعنوان افراد میں خوف اور عدم تحفظ کا احساس پیدا ہوچکا ہے اوروہ خود کو بچانے کے لئے جھوٹ میں شور مچارہے ہیں۔ کانگریس صدر راہل گاندھی کے خاندان کے رکن رابرٹ وڈرا کو انکم ٹیکس محکمہ نے سال 2010-11کے دوران غلط آمدنی بتانے اور ٹیکس چوری کا نوٹس دے کر 25.8کروڑ روپے سرکاری خزانے میں جمع کرانے کے لئے کہا ہے۔ انہوں ین اپنے انکم ٹیکس ریٹر ن میں آمدنی 37 لاکھ روپے دکھائی تھی جب کہ انکم ٹیکس محکمہ کے سروے کے مطابق ان کی آمدنی تقریباً 43کروڑ روپے تھی۔ ان کی کمپنی اسکائی لائٹ ہاسپیٹلیٹی نے ہیر پھیر کرکے اس کی آمدنی کو چھپایا تھا۔

انہوں نے کہا کہ اسی طرح سے کنگ فشر کے مالک رہے وجیہ مالیہ کی جائیداد کو ضبط کرنے کی کارروائی شروع کی گئی تو وہ کہہ رہے ہیں کہ انہیں بدعنوانی اور بینکوں سے دھوکہ دہی کرنے کا پوسٹر بوائے بنادیا ہے۔ سرکاری جانچ ایجنسیاں سی بی آئی ، انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ ، ایس ایف آئی او ان کے پیچھے پڑ گئی ہے ۔ ان کی جائیداد کو ضبط کرنے جارہی ہے جس کی وجہ سے وہ کافی پریشان ہیں۔

بی جے پی ترجمان نے مسٹر مالیہ کے ذریعہ اس وقت کے وزیر اعظم من موہن سنگھ اور وزیر خزانہ پی چدمبرم کو لکھے گئے خط کی نقل دکھاتے ہوئے کہا کہ انہیں وزیر اعظم کے کہنے پر سخت ضابطوں کو طاق پر رکھ کر قرض دلایا گیا تھا۔ جبکہ موجودہ حکومت ان کی جائیداد ضبط کرنے کی کارروائی کررہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مودی حکومت کی کارروائی سے بدعنوانی کرنے والوں کی دنیا میں زلزلہ آگیا ہے۔ حکومت کا عزم ہے کہ وہ دھوکہ دہی کرکے ہندوستان کے ایماندار ٹیکس دہندگان کی رقم کا ایک ایک پیسہ وصول کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ قانون کے ساتھ کھلواڑ کرنے والوں پر کارروائی ایک بہت بڑی تبدیلی ہے۔
ڈاکٹر پاترا نے کانگریس صدر راہل گاندھی سے سوال کیا کہ اتنے برسوں تک مسٹر واڈرا گورکھ دھندا کررہے تھے اور ان کی کمپنی اتنا زبردست منافع کمارہی تھی تو اس انکم ٹیکس چوری کوانہوں نے اور ان کی پارٹی کی حکومت نے نظرانداز کیوں کیا ۔ انہوں نے کہا کہ مالیہ کے ساتھ گاندھی خاندان کے براہ راست تعلقات تھے۔ محترمہ سونیا گاندھی نے خط لکھ کر کہا تھا کہ گاندھی خاندان کے لوگوں کے لئے صرف بزنس کلاس کی ٹکٹ دی جائے۔ مالیہ نے اپنے خط میں وزیر اعظم کے چیف سکریٹری ٹی کے اے نائر کی انہیں رقم دلانے میں تعاون کا ذکر کیا ہے اور ڈاکٹر من موہن سنگھ کا شکریہ ادا کیا ہے۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: