سرورق / خبریں / ممتاز عالم دین مولانا عبدالوہاب خلجی قبرستان قوم پنجابیان شیدی پورہ میں سپرد خاک ، سرکردہ شخصیات کی شرکت-

ممتاز عالم دین مولانا عبدالوہاب خلجی قبرستان قوم پنجابیان شیدی پورہ میں سپرد خاک ، سرکردہ شخصیات کی شرکت-

نئی دہلی، برصغیر کے معروف وممتازعالم دین اور مرکزی جمعیت اہلحدیث ہند کے سابق ناظم عمومی اور آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کے متحرک رکن مولانا عبدالوہاب خلجی کو آج صبح ٹھیک ساڑھے نو بجے قبرستان قوم پنجابیان شیدی پورہ میں سپرد خاک کیا گیا. مولانا کی نماز جنازہ دو جگہ پڑھائی گئی. پہلے پٹودی ہاؤس دریا گنج میں عالمی شہرت یافتہ عالم دین مولانا صلاح الدین مقبول احمد مدنی نے پڑھائی جبکہ دوسری نماز جنازہ مولانا عبدالوہاب خلجی کے صاحبزادے محمد خلجی نے قبرستان قوم پنجابیان شیدی پوری میں پڑھائی. اس کے بعد یہیں سپرد خاک کیا گیا.

اس موقع پرسرکردہ شخصیات سمیت سینکڑوں کی تعداد میں عوام نے تدفین میں شرکت کی. مولانا صلاح الدین مقبول احمد، امیر جمعیت اہلحدیث ہند کے امیر مولانا اصغر علی امام مہدی سلفی، مولانا محمد رحمانی، مولانا عبدالمعین مدنی، سعودی عرب سے عزیر شمس، ڈاکٹر تسلیم احمد رحمانی، ڈاکٹر سید قاسم رسول الیاس، کمال فاروقی، ڈاکٹر جنید حارث، حافظ شکیل احمد میرٹھی، حافظ محمد یوسف، محمد عامر بستوی، شیس تمیمی، مولانا عبدالمنان، مولانا عبدالاحد مدنی، مولانا عبدالوہاب مدنی، مولانا شکیل احمد سنابلی، مولانا عبدالمبین ندوی، مولانا انوار احمد خان سلفی، مولانا عبدالقدیر سلفی، صحافیوں میں سہیل انجم، ممتاز عالم رضوی اور نثار احمد خان کے علاوہ مالیر کوٹلہ اور دہلی وقرب و جوار سے بڑی تعداد میں لوگ شریک ہوئے.

واضح رہے کہ طویل علالت کے بعد کل بعد بعد نماز جمعہ 63سال کی عمر میں انتقال ہوگیا تھا. مولانا کے انتقال سے ملی وجماعتی حلقوں میں یہ خبر انتہائی افسوس کے ساتھ سنی جارہی ہے۔ پسماندگان میں دو بیٹے اور چار بیٹیاں ہیں۔ مولانا طویل عرصے سے بیمار چل رہے تھے۔پہلے فالج کا حملہ ہوا تھا، اس کے بعد دل کا دورہ پڑا اور پھر آپ برین ہیمریج کا شکار ہو گئے تھے۔ اطلاعات کے مطابق مولانا کی ولادت جنوری 1954کو پنجاب کے مالیر کوٹلہ میں ہوئی تھی۔ ابتدائی تعلیم کے بعددہلی کے مدرسہ سبیل السلام، جامعہ رحمانیہ بنارس میں تعلیم حاصل کی اور پھر اعلیٰ تعلیم کےلئے جامعہ اسلامیہ مدینہ منورہ تشریف لے گئے۔ مختلف اہم کتابوں کی طباعت کا بھی مولانا نے پوری دلجمعی سے کام کیا۔ مولانانے 17برسوں تک مرکزی جمعیت اہلحدیث کے ناظم اعلیٰ کی ذمہ داری نبھائی ہے۔ 1990سے لے کر 2001تک مرکزی جمعیت اہلحدیث ہندکے ناظم عمومی کے عہدے پر فائز رہے۔ اس سے قبل 1984سے 1990تک قائم مقام ناظم کی ذمہ داری بھی سنبھال چکے ہیں۔اس کے علاوہ آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کے متحرک رکن بھی تھے۔ سری لنکا اور لندن وغیرہ کی بعض تنظیموں سے بھی وابستہ تھے۔ جامعہ سلفیہ بنارس، آل انڈیا ملی کونسل اور مسلم مجلس مشاورت وغیرہ کے فعال رکن تھے۔ پوری دنیا کی اہم کانفرنسوں میں شرکت بھی کرتے تھے۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: