سرورق / خبریں / ملیکارجن کھر گے کو وزیر اعلیٰ بننے کے مواقع تھے: پرمیشور

ملیکارجن کھر گے کو وزیر اعلیٰ بننے کے مواقع تھے: پرمیشور

بنگلورو۔ سینئر کانگریس لیڈر ملیکارجن کھر گے کو وزیر اعلیٰ کے عہدہ پرفائزہونے کے مواقع تھے ۔لیکن چند معاملات کی وجہ سے کھر گے کووزیراعلیٰ کا عہدہ نہیں ملا۔ان خیالات کااظہار نائب وزیراعلیٰ ڈاکٹر جی پرمیشور نے کیا ۔ ملیکارجن کھر گے کی سیاسی زندگی پر پولیٹیکل اڈوائزری اخبار کی جانب سے جاری خصوصی شمارہ کی اجرائی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پرمیشور نے کہا کہ ملیکا رجن کھر گے انتہائی تجربہ کار شخصیت ہیں ۔ اپنے طے کردہ اصول وضوابط پرانہوں نے کبھی بھی سمجھوتہ نہیں کیا ۔ مسلسل 11مرتبہ جیت حاصل کرنا غیر معمولی کارنامہ ہے ۔ یہی وجہ ہے کہ کھرگے شکست نہ کھانے والے سردار کے طورپر جانے جاتے ہیں ۔کھرگے کوجب پارلیمان میں کانگریس پارٹی کا قائد نامزد کرنے پر چند لوگوں نے اعتراض جتایا تھا کہ کھر گے کا تعلق جنوبی ہند سے ہے ۔ ان کو ہندی زبان نہیں آتی ، لیکن پارلیمان میں ان کی کارکردگی کی خود سونیا گاندھی نے سراہناکی تھی ۔ وہ انتہائی صاف و شفاف شبیہ رکھنے والے سیاسی شخصیت ہیں ۔ کوئی بھی مشہور ومعروف لیڈر نے ان پر کبھی تنقید نہیں کی ۔ وہ ریاست کے ایک منفرد لیڈرہیں۔میں انہیں دلت لیڈر نہیں کہتا۔ کیونکہ انہوں نے تمام طبقات کے لئے یکساں خدمات انجام دی ہیں ۔ خصوی طور پر بچھڑے اورپسماندہ طبقات کی ہمیشہ آواز بنے رہے ۔ ان کی پوری زندگی سماج ومعاشرہ کی خدمت میں گزری ،کھرگے میرے بڑے بھائی کے مانند ہیں ، وہ میرے سیاسی رہبر ہیں ، میرے طالب علمی کے دور میں وہ وزیر بنے ہوئے تھے ۔ درج فہرست ذات طلبہ کے وظائف میں تاخیر ہوا کرتی تھی، اس موقع پر کھر گے نے ہم طلبہ کی مدافعت میں جدوجہد کی ۔ بعد ازاں اخباری نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے جی پرمیشور نے کہا کہ شیرور کے سوامی کی مشتبہ حالت میں ہوئی موت پر ان کے بھائی نے شکایت کی ہے۔اس سلسلہ میں تحقیقات چل رہی ہیں ۔ ابتدائی رپورٹ ابھی نہیں آئی ہے۔ تحقیقات ختم ہونے تک کوئی بھی بات منظر عام پر لائی نہیں جاتی۔ انہوں نے مزید کہا کہ بوگس صفائی کرمچاریوں کے سلسلہ میں تفتیش ہورہی ہے ۔ بی بی ایم پی میں 18ہزار مستقل صفائی کرمچاری ہیں ۔ دیگر افراد کنٹراکٹ کی بنیاد پر کام کررہے ہیں ۔ ٹھیکہ پر کام کررہے صفائی کرمچاریوں کی خدمات کو مستقل کرنے کا انہوں نے تیقن دیا ۔ بی بی ایم پی گھوٹالہ کے سلسلہ میں کئے گئے سوال پر انہوں نے کہا کہ بی بی ایم پی میں اگر واقعی گھوٹالہ ہوا ہے ۔ ثبوت ودستاویزات کے ساتھ معاملہ میرے سامنے لایا جائے تو خاطی افراد کے خلاف ضرور کارروائی کی جائے گی ۔ بی بی ایم پی میں تبدیلی لانے کا کام ہورہا ہے۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: