سرورق / خبریں / محبوبہ مفتی کے آنسوؤں کا اب کشمیر میں کوئی خریدار نہیں: فاروق عبداللہ

محبوبہ مفتی کے آنسوؤں کا اب کشمیر میں کوئی خریدار نہیں: فاروق عبداللہ

سری نگر: (یو ا ین آئی) نیشنل کانفرنس کے صدر و رکن پارلیمان ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے الزام لگایا کہ بحیثیت وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے ہر وقت کشمیریوں پر مظالم کو جواز بخشا۔انہوں نے کہا کہ اقتدار کے نشے میں دُھت محترمہ مفتی نے کشمیریوں کے خلاف طاقت کے استعمال، ہلاکتوں اور ظلم و جبر کو جواز بخشنے میں کوئی کثر باقی نہیں چھوڑی۔ فاروق عبداللہ نے ان باتوں کا اظہار اتوار کے روز یہاں حلقہ انتخابات خانیار کے دولت آباد ناؤپورہ میں پارٹی کے کارکنوں اور عہدیداروں کے ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہاکہ مگرمچھ کے آنسوؤں کا اب کوئی خریدار نہیں، اقتدار سے بے دخلی کے بعد محبوبہ مفتی کے آنسو کشمیری قوم ہضم نہیں کرسکتی، اگر موصوفہ کو واقعی کشمیریوں کی ہمدردی ہوتی تو یہ آنسو وزارتِ اعلیٰ کی کرسی پر براجمان رہ کر نکلے ہوتے لیکن اُس وقت اقتدار کے نشے میں دُھت پی ڈی پی صدر نے کشمیریوں کے خلاف طاقت کے استعمال، ہلاکتوں اور ظلم و جبر کو جواز بخشنے میں کوئی کثر باقی نہیں چھوڑی۔اس موقع پر پارٹی جنرل سکریٹری علی محمد ساگر، معاون جنرل سکریٹری ڈاکٹر شیخ مصطفے ٰ کمال، صوبائی صدر ناصر اسلم وانی، سینئر لیڈران میاں الطاف احمد، خواتین ونگ صدر شمیمہ فردوس، ایم ایل سی علی محمد ڈار، سینئر لیڈران کفیل الرحمن، محمد سعید آخون، پیر آفاق احمد اور مشتاق احمد گورو بھی موجو دتھے ۔فاروق عبداللہ نے کہا کہ گذشتہ ساڑھے 3سال کے دوران کشمیریوں کو بخوبی معلوم ہو اہے کہ پی ڈی پی کس قدر اقتدار کی خاطر اپنے ضمیر کو بھیج سکتی ہے اور اقتدار میں بنے رہنے کے لئے یہ جماعت کشمیریوں کے مفادات کا کس قدر سودا کرسکتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اقتدار میں رہ کر پی ڈی پی والوں نے مظلوم اور محکوم کشمیریوں پر ہوئے جبر و استبدار اور ظلم و ستم کے خلاف اُف تک نہیں کی، کشمیری عوام کے خلاف براہ راست جنگ جاری تھی لیکن محبوبہ مفتی نے بحیثیت وزیر اعلیٰ ایک بار بھی اپنے عوام کے حق میں لب کشائی نہیں کی۔ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ پی ڈی پی اور بی جے پی نے مل کر بدترین اور عوام کش حکمرانی کا مظاہرہ کیا اور ساڑھے 3سال کے دوران خزانہ کو دونوں ہاتھوں سے لوٹا گیا۔ اقرباپروری ،کنبہ پروری ، کرپشن اور رشوت خوری میں پی ڈی پی نے ملک بھر میں نام کمایا۔انہوں نے کہا کہ پی ڈی پی کی سربراہی والی حکومت میں ریاست کی تعمیر و ترقی جہاں ماند پڑ گئی تھی وہیں اُن علاقوں کو سرے سے ہی نظرانداز کیا گیا جہاں نیشنل کانفرنس کے ممبرانِ اسمبلی تھے ۔ پی ڈی پی اور بی جے پی نے مل کر ایک منصوبہ بند سازش کے تحت ریاست کے تینوں خطوں کے عوام کو مذہبی، لسانی اور علاقائی بنیادوں پر تقسیم کرنے میں کوئی کسر باقی نہیں چھوڑی۔ریاست کے تینوں خطوں میں دوریاں پاٹنے کے عزم کا اعادہ کرتے ہوئے نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ ہماری جماعت ریاست کی وحدت، انفرادیت اور مذہبی ہم آہنگی کی ضامن رہی ہے۔
اور انشاء اللہ لوگوں کے بھر پور اشتراک سے تینوں خطوں میں پیدا کی گئی دوریوں کو ختم کرکے ہی دم لیں گے ۔امن و امان کی بحالی کو وقت کی ضرورت قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سماج میں مفاد خصوصی رکھنے والے کچھ ایسے عناصر موجودہ ہیں جو نہیں چاہتے کہ امن و امان کی فضاء قائم ہو۔ ان عناصر کا قلع قمع کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے ۔
اس سے قبل ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے شیرین باغ کرن نگر میں جموں وکشمیر رورل ڈیولپمنٹ سوسائٹی کے اہتمام سے ایک تقریب میں شرکت کی، جس کا عنوان’مادر مہربان ڈے ‘تھا۔ انہوں نے وہاں خطاب کرتے ہوئے منشیات اور دیگر سماجی بدعات کا قلع قمع کرنے کے لئے ٹھوس اور کارگر مہم چھیڑنے کی اپیل کی۔انہوں نے نوجوانوں سے اپیل کی کہ وہ اپنے والدین کی اطاعت کریں۔ اس موقع پر سوسائٹی کے چیئرمین ایم ایل اے عید گاہ حاجی مبارک گل بھی موجو دتھے ۔ ڈاکٹر کمال نے اس موقع پر سوسائٹی میں بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والوں میں انعامات تقسیم کئے ۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: