سرورق / خبریں / كولارس اور مونگاؤلي اسمبلی کے ضمنی انتخابات کے لئے ووٹوں کی گنتی شروع-

كولارس اور مونگاؤلي اسمبلی کے ضمنی انتخابات کے لئے ووٹوں کی گنتی شروع-

بھوپال، مدھیہ پردیش کے شیوپوري ضلع کے كولارس اور اشوك نگر ضلع کے مونگاؤلي اسمبلی کے ضمنی انتخابات کے ووٹوں کی گنتی صبح 8 بجے سخت سیکورٹی انتظامات کے درمیان شروع ہو گئی۔ سرکاری ذرائع کے مطابق كولارس میں ووٹوں کی گنتی 23 اورمونگاؤلي میں 19 راؤنڈ میں ہوگی۔ كولارس میں 22 اور مونگاؤلي میں 13 امیدواروں کی قسمت کا فیصلہ طے ہوگا۔كولارس میں ووٹوں کی گنتی سرکاری آئی ٹی آئی کالج اورمونگاؤلي کے ووٹوں کی گنتی اشوك نگر واقع گورنمنٹ نہرو ڈگری کالج میں ہو رہی ہے۔ سب سے پہلے ڈاک ووٹوں کی گنتی شروع ہوئی۔ تمام ووٹوں کی گنتی کی ویڈیوگرافی کروائی جارہی ہے۔
ووٹوں کی گنتی کے مقام پر سیکورٹی کے سہ سطحی انتظامات کئے گئے۔دونوں مقام پر مرکزی مسلح پولیس فورس (سي اےپي ایف) کی ایک ایک کمپنی اور مقامی پولیس فورس کوتعینات کیا گیا ہے۔ اتھرائزڈ لیٹرکے بغیر کسی بھی شخص کو داخلے کی اجازت نہیں ہے۔ ووٹوں کی گنتی کے مقام پر کیمرے، موبائل فونز وغیرہ لے جانا منع ہے۔ ہر اسمبلی حلقہ میں رینڈم بنیاد پر منتخب کئے گئے ایک پولنگ مرکز پر ’ووٹر و یری فی ایبل پیپر آڈٹ ٹریل( وی وی پیٹ) پیپر سلپ کی توثیق بھی ہوگی۔
كولارس میں اہم مقابلہ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے امیدوار دیویندر جین اور کانگریس امیدوار مہندر سنگھ یادو کے درمیان ہے۔ وہیں مونگاؤلي میں بی جے پی نے بائی صاحب یادو اور کانگریس نے برجیندر سنگھ یادو پر داؤ کھیلا ہے۔گزشتہ اسمبلی انتخابات میں كولارس سے کانگریس کے رام سنگھ یادو اور مونگاؤلي سے پارٹی کے ہی مہندر سنگھ كالوكھیڑا نے کامیابی حاصل کی تھی۔ دونوں کے انتقال کی وجہ سے ضمنی انتخابات ہو رہے ہیں۔
دونوں مقامات پر ضمنی انتخابات کے لئے 24 فروری کو پولنگ ہوئی تھی۔ كولارس میں 70.46فیصد اور مونگاؤلي میں 77.05 فیصد ووٹ ڈالے گئے تھے۔ كولارس میں دو لاکھ 44 ہزار 457 ووٹروں میں سے ایک لاکھ 72 ہزار 115 نے ووٹ ڈالے۔ مونگاؤلي میں ایک لاکھ 91 ہزار نو ووٹروں میں سے ایک لاکھ 47 ہزار 164 نے اپنے ووٹ کے حق کا استعمال کیا۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: