سرورق / خبریں / فی کلو نافہ کیلئے 500روپئے قیمت مقرر کرنے کا مطالبہ مرکزی اور ریاستی حکومتوں کے خلاف کسانوں کا احتجاج –

فی کلو نافہ کیلئے 500روپئے قیمت مقرر کرنے کا مطالبہ مرکزی اور ریاستی حکومتوں کے خلاف کسانوں کا احتجاج –

منڈیا: فی کلو نافہ کیلئے 500 روپئے قیمت مقرر کرنے سمیت دیگر مختلف مانگوں کو پورے کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے منڈیا ضلع کے ریشم کے کاشتکاروں کے فیڈریشن کی قیادت میں احتجاج کیا گیا۔ رعیت سنگھا، کرناٹکا پرانتا رعیت سنگھا، کستوری کنڑا رکشنا ویدیکے اور دیگر تنظیموں نے اس احتجاج میں حصہ لیا۔ سلور جوبلی پارک سے بنگلور ۔ میسور شاہراہ سے ہوتے ہوئے وشویشوریا مجسمہ کے پاس پہنچے اور دھرنا دیا۔ احتجاجی کسانوں نے مرکزی اور ریاستی حکومتوں کے خلاف شدید ناراضی ظاہر کی اور نعرے لگائے۔احتجاجیوں نے کہا کہ دو ماہ قبل فی کلو نافہ کی قیمت 450 تا550 روپئے تھی جس کے بعد اب فی کلو نافہ کی قیمت 120 سے 250 روپئے ہوگئی ہے۔ ریشم کے کاشتکاروں کو نقصان اٹھانا پڑرہا ہے۔اتنا بڑا نقصان برداشت نہیں کرسکتے۔ احتجاجی کسانوں نے کہا کہ ضلع میں پیش آرہے زرعی مسائل کے نتیجے میں ان ڈھائی سالوں کے عرصے میں 280 سے زیادہ کسان خودکشی کرچکے ہیں۔نافہ کی قیمت میں گراوٹ کے سبب ریشم کے کاشتکاروں کو بھی خودکشی کا راستہ اختیار کرنا پڑ سکتاہے۔ خام ریشم کیلئے امپورٹ ٹیکس کو 31فیصد کیا جانا چاہئے۔ ریشمی کپڑوں کے امپورٹ پر مکمل پابندی عائد کی جانی چاہئے۔ تائیدی قیمت سے کم قیمت پر نیلام ہونے والے نافہ کیلئے فی کلو 500روپئے کے حساب سے امدادی رقم دی جانی چاہئے۔ایم ایس سوامیں ناتھن کمیشن کی سفارشات کے مطابق پروڈکشن پرائز کیلئے 50 فیصد منافع سمیت کم سے کم تائیدی رقم مقرر کر کے تحفظ فراہم کیا جانا چاہئے۔نافہ کی قیمت میں گراوٹ سے نقصان کا سامنا کررہے تمام ریشم کے کاشتکاروں کو معاوضہ فراہم کیا جانا چاہئے۔ اس احتجاج میں رعیت سنگھا کے ضلعی صدر سریش، لتا شنکر، بی بومے گوڈا اور دیگر شامل تھے۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: