سرورق / کھیل / فیفا عالمی کپ کی مشعل، قطر کے حوالے عالمی معیار کے مطابق مقابلے منعقد کرنے ہر ممکن کوشش کریں گے۔ شیخ تمیم

فیفا عالمی کپ کی مشعل، قطر کے حوالے عالمی معیار کے مطابق مقابلے منعقد کرنے ہر ممکن کوشش کریں گے۔ شیخ تمیم

ماسکو ، (یو این آئی) فیفا عالمی کپ 2018ء کی رنگارنگ اختتامی تقریب ہالی وڈ اسٹار ول اسمتھ کی شاندار پرفارمنس کے ساتھ اختتام کو پہنچ گئی جس میں عالمی کپ کی مشعل اگلے عالمی کپ کے میزبان ملک قطر کے حوالے کردی گئی۔دنیا کے سب سے بڑے ملک روس کے 12اسٹیڈیمز میں ایک مہینے سے زائد جاری رہا فٹبال کا عالمی میلہ کل شاندار اختتامی تقریب کے ساتھ اختتام کو پہنچ گیا۔ دارالحکومت ماسکو کے لژنکی اسٹیڈیم میں تقریب سے قبل روس کے صدر ولادمیر پوتن نے اگلے عالمی کپ کی میزبانی کرنے والے ملک قطر کے امیر شیخ تمیم بن حماد سے خصوصی ملاقات کی اور انہیں عالمی کپ کی مشعل دی۔اس کے ساتھ ہی عالمی کپ کی مشعل دنیا کے سب سے بڑے ملک سے دنیا کے چھوٹے ترین ممالک میں سے ایک کو منتقل کردی گئی جس کی آبادی محض 23لاکھ نفوس پر مشتمل ہے ۔پوتن نے اپنے خطاب میں کہا ،’’ ہم نے اس شاندار کھیل میں فینز کے لئے جو کچھ کیا اس پر ہمیں بہت فخر ہے ۔ ہمیں بحیثیت قوم اور ملک دنیا بھر سے روس میں عالمی کپ کے لئے آ ئے فٹبال کے شائقین کے ساتھ جڑ کر بہت خوشی ملی۔ ہمیں پوری امید ہے کہ ہمارے قطر کے دوست بھی 2022ء عالمی کپ کا انعقاد اسی طرح اعلیٰ سطح پر کریں گے اور ہم اپنے تجربات سے انہیں آگاہ کرنے اور ان کی ایونٹ کے انعقاد کے لئے بھرپور مدد کرنے کے لئے تیار ہیں۔‘‘اس کے بعد پوتن نے عالمی کپ کی گیند فیفا کے صدر گیانی انفنٹینو کو دی جنہوں نے وہ گیند آگے قطر کے امیر کے سپرد کردی۔قطر کے امیر شیخ تمیم نے روس اور فیفا کے صدور کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا ،’’ ہم عالمی مقابلے کو طے شدہ عالمی معیار کے مطابق منعقد کرنے کی ہرممکن کوشش کریں گے اور اس راہ میں حائل تمام تر مشکلات پر قابو پا لیں گے ۔‘‘لژنکی اسٹیڈیم میں منعقدہ اختتامی تقریب میں امریکی اداکار اور گلوکار ول اسمتھ نے شاندار پرفارمنس کا مظاہرہ کیا اور عالمی کپ کے آفیشل گانے ’لو اٹ اپ‘ پر پرفارمنس دی۔اس کے بعد میدان میں بڑی اسکرین لائی گئی جس میں فائنل میں جگہ بنانے والی دونوں ٹیموں فرانس اور کروشیا کے جھنڈے اور کھلاڑیوں کی تصاویر دکھائی گئیں۔اس کے بعد اسمتھ کا اسٹیج پر ساتھ دینے امریکہ میں پیدا ہو ئے گلوکار نکی جیم، پویرٹو ریکان اور ایرا استریفی آئے اور اپنی پرفارمنس دی۔80ہزار شائقین سے بھرے اسٹیڈیم میں اختتامی تقریب اپنے منطقی انجام کی جانب گامزن تھی اور اس دوران روس کی اوپیرا سنگر ایدا گری فلینا نے روسی گانے کلنکا پر پرفارمنس دی جس میں جا بجا جھومتے بچوں اور دیگر فنکاروں نے بھی ساتھ دیا۔پرفارمنس کے موقع پر عظیم برازیلین فٹبالر اور 2002ء عالمی کپ کی فاتح ٹیم کے رکن رونالڈینو بھی مہمان کی حیثیت سے میدان پر آئے اور افریقی ڈھول کی تھاپ پر انہوں نے بھی تھوڑا رقص کیا اور ڈھول بھی بجایا۔اس پرفارمنس کے ساتھ ہی اختتامی تقریب انجام پائی اور فرانس اور کروشیا کی ٹیموں کو میدان پر لایا گیا جس کے ساتھ ہی عالمی کپ کے فائنل کا اختتام ہوا۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

وزیر کھیل راٹھور سے ملے لکشے سین –

نئی دہلی، جونیئر ایشیائی بیڈمنٹن چمپئن شپ میں 53 سال کے طویل وقفے کے بعد …

جواب دیں

%d bloggers like this: