سرورق / خبریں / شہر میں آلودگی کو کم کرنے عوامی بیداری پیدا کرنے کی ضرورت

شہر میں آلودگی کو کم کرنے عوامی بیداری پیدا کرنے کی ضرورت

بنگلور۔(فتحان نیوز) گرین پیس انڈیا کی ایک حالیہ رپورٹ کے مطابق ،ریاست کرناٹک کے اکثر شہروں میں آلودگی ، مجازی سطح سے بہت زیادہ ہے،اور ماہرین اس صورت حال کے لئے کرناٹک ریاستی آلودگی پر قابو بورڈ ( کے ایس پی سی بی) کو ذمہ دار ٹہراتے ہیں۔مذکورہ رپورٹ کے مطابق ریاست بھر میں سال 2017 میں ٹمکور شہر میں سب سے زیادہ سالانہ پی ایم دس کی مقدار ریکارڈ کی گئی ہے۔ ٹمکور ، بیدر، بنگلور، داونگیرے، رائچور اور ہبلی شہروں کے لئے پی ایم دس کی سطح بالترتیب 144 ، 113 ،106 ،84 ،88 اور 87 ؍ ریکارڈ کیا گیا ہے جبکہ مجاز سطح100؍یو جی ہے۔معروف ماہر ماحولیات اے این ایلپا ریڈی نے بتایا کہ اس صورت حال کے لئے کے ایس پی سی بی ہی ذمہ دار ہے اس لئے کہ اس نے عوام میں اس تعلق سے پیداری پیدا کرنے کا کام انجام نہیں دیا اور اس سلسلہ میں وہ مکمل طور پر ناکام رہی ہے۔ریڈی نے کہا کہ ’’ترقی پذیر شہروں میں ہم تیز رفتاری کے ساتھ اور بڑے پیمانہ پر تعمیرات دیکھتے ہیں، لیکن کے ایس پی سی بی اپنے ضابطور کو نافذ کرنے میں ناکام ہے، یہی صورت حال بنگلور شہر کی بھی ہے اور اسی کی وجہ سے بنگلور اور دوسرے شہروں میں لوگ پریشانیوں کا شکار ہیں‘‘۔عظیم پریم جی یونیورسٹی میں پروفیسر ہرینی ناگیندرا کے مطابق بنگلور شہر میں آلودگی کے لئے سواریوں سے نکلنے والا دھواں ہی اصل سبب ہے۔البتہ ہرینی کا کہنا ہے کہ دوسرے شہروں میں تعمیراتی سرگرمیاں اور صنعتی اداروں کی طرف سے پیدا کی جانے والی آلودگی بھی اہم کردار ادا کرتی ہے، انہوں نے مزید کہا کہ اس صورت حال کا واحد حل یہ ہے کہ شہروں میں زیادہ سے زیادہ پیڑ پودے لگانے کے ذریعہ ہریالی کو بڑھانے کی کوشش کی جائے، لیکن افسوس کی بات یہ ہے کہ بلدی ادارے شہروں میں موجود درختوں کو بے دردی کے ساتھ کاٹتے جا رہے ہیں۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: