سرورق / خبریں / شہری مسائل کی جنگ اب سوشیل میڈیا پر جاری –

شہری مسائل کی جنگ اب سوشیل میڈیا پر جاری –

بنگلور، (ف ن) آلودہ تالاب، کچرے کے ڈھیر ، بند پڑی ہوئی گندے پانی کی نالیاں اوربڑے بڑے گڑھوں سے پر بدترین سڑکیں۔۔۔سوشیل میڈیا میں ایسے پوسٹ بھرے پڑے ہیں جن میں کئی شہریوں کی تنظیمیں بشمول مکینوں کی فلاحی انجمنیں جیسے اترہلی رائزنگ وغیرہ کے پیغامات شامل ہیں اور ان کی طرف سے آلودہ تالابوں، کچرے کے ڈھیر اور دوسرے بلدی اور بنیادی ڈھانچہ کے مسائل جن کے حل کی ضرورت ہے ان سے متعلق پوسٹس بہت زیادہ گشت کر رہے ہیں، ان مقامات کی تصاویر بھی ڈالی گئی ہیں۔۔۔۔ در اصل بلدی اداروں کے چکر کاٹتے کاٹتے تنگ آجانے کے بعد شہر کی عوام بالخصوص شہری رضاکاروں کو یہ بہت ہی قوی اور مؤثر ہتھیار ہاتھ لگ گیا ہے۔ان لوگوں کی طرف سے نہ صرف خود پوسٹ جاری کئے جار ہے ہیں بلکہ دوسرے افراد کو بھی اس کی ترغیب دی جاتی ہے کہ وہ خود بھی مختلف حالات اور واقعات سے متعلق پوسٹ ، تصاویر اور ویڈیوز وغیرہ سوشیل میڈیا پر جاری کریں۔اترا ہلی رائزنگ کے ٹوئیٹر ہینڈل پر ایک پوسٹ میں جنوب مغربی بنگلور کے علاقہ کے ایک تالاب کی تصویر بھی پوسٹ کی گئی ہے جس کے گندے پانی پر کچرا تیر رہا ہے اور اسی پوسٹ میں قارئین سے کہا گیا ہے کہ ’’ایسے مقامات کی تصاویر آپ بھی پوسٹ کریں ‘‘۔بیلندور کے ایک مکین نے علاقہ میں بند پڑی ہوئی گندے پانی کی ایک نالی کی تصویر ڈالی ہے اور اس مقام کی تفصیل پیش کرتے ہوئے لکھا ہے ۔۔ وویک نگر سے بیلندور تک جانے والا نالا، یہ تین تا چار وارڈوں میں سے ہو کر گزرتا ہے‘‘۔وائٹ فیلڈ کے ایک اور مکین نے تعمیراتی اشیاء سے بھرے ہوئے ایک فٹ پاتھ کی تصویر پوسٹ کی ہے اور اس کے ساتھ لکھا ہے کہ ’’وائٹ فیلڈ میں چھوٹے بچوں کی اسکول کے قریب کا ایک فٹ پاتھ‘‘۔تورا ہلی کے قریب گبالالاکی بھی ایک تصویر ہے جہاں راستے اور گندے پانی کی نالیاں دونوں ہی بہت بری حالت میں ہیں۔ اسی طرح لوگوں نے اپنے اپنے علاقوں میں خراب راستوں اور کچرے کے ڈھیر وغیرہ سے متعلق ٹوئیٹ کرنا شروع کر دیا ہے اور اس طرح بلدی حکام اور سیاست دانوں کی توجہ حاصل کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔شہری رضا کاروں کا کہنا ہے کہ ایک ایسے وقت میں جب کہ سوشیل میڈیا پر پھیلائی جانے والی جھوٹی خبریں ہجومی تشدد کا بازار گرم کر رہی ہیں اور غلط افواہیں ملک کے ماحول کو بگاڑ رہی ہیں ، اس موثر ترین ذریعہ کو شہری مسائل کے حل کے لئے استعمال کرنا یقیناًایک بڑا اقدام اور کار گر ذریعہ بن سکتا ہے۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: