سرورق / خبریں / سمبلی انتخابات کے لئے یڈی یورپا کو ہیلی کاپٹر کا استعمال کرنے کی منظوری-

سمبلی انتخابات کے لئے یڈی یورپا کو ہیلی کاپٹر کا استعمال کرنے کی منظوری-

بنگلور( پی ین ین ):۔ بی جے پی کے قومی صدر امیت شاہ نے بی جے پی کرناٹک یونٹ کے صدر بی ایس یڈی یورپا کو آنے والے اسمبلی انتخابات کے لئے انتخابی مہم چلانے اورنریندرمودی حکومت ک کارناموں کی جانکاری اورمعلومات فراہم کرانے کے مقصد سے ریاست کا دورہ کرنے کے لئے ہیلی کاپٹر کا استعمال کرنے کی منظوری دی ہے۔امیت شاہ نے یڈی یورپا کو ایک ہفتہ تک آرام کرنے کے بعد دوبارہ پری ورتن یاترا شروع کرنے کا حکم دیا ہے ۔کئی دنوں تک یاتر کرنے سے یڈی یورپا بیمار ہوگئے ہیں اور ڈاکٹروں نے انہیں چند دنوں تک آرام کرنے کا مشورہ دیا ہے ۔یڈی یورپا کو سانس لینے میں دشواری۔ شوگر وار بلیڈ پریشر میں اضافہ ہوا ہے۔انہیں تیز بخار بھی آگیا ہے ۔یڈی یورپا کے بیمار پڑنے سے کانگریس اور جے ڈی ایس سے مذاق اڑایا جارہا ہے۔ دونوں پارٹیوں نے الزام لگایا ہے کہ یڈی یورپا نے انتخابات سے قبل ہی ہار مان لی ہے ۔اس مذاق پر یڈی یورپا نے ناراضگی جتائی ہے اور کہا ہے کہ کوئی انسان کب بیمار پڑتا ہے اور کب اس کی موت ہوتی ہے کچھ کہا نہیں جاسکتا اور وہ صحت یاب ہوکر دوبارہ ریاست کا دورہ کرکے سدارامیا حکومت کے گھوٹالوں اور بدعنوانیوں کے تعلق سے عوام کو معلومات سے آگاہ کرائیں گے۔انہوں نے دعویٰ کیا ہے کہ ریاست میں بی جے پی 150سے زائد سیٹوں پر کامیابی حاصل کرکے حکومت بنائے گی اور وہ وزیر اعلیٰ بنیں گے۔انہوں نے کہا کہ وزیر اعلیٰ سدارامیا ہمیشہ انہیں جیل جاکر آئے ایک مجرم قرار دے رہے ہیں اور ایک طرح سے ان کی بے عزتی کی جارہی ہے اور وہ اس بے عزتی کو قطعی برداشت نہیں کریں گے۔ جب تک عدالت سے کوئی فیصلہ نہیں ہوتا انہیں ملزم قرار نہیں دیا جاسکتا۔ اگر سدارامیا نے دوبارہ اس طرح کے الزامات لگا ئے تو وہ ہتک عزت مقدمہ دائر کریں گے۔انہیں رشوت لینے کے الزم میں 22دنو ں تک کے لئے جیل بھیجا گیا تھا اس کے بعد وہ ضمانت پر رہا ہوگئے اور ہائی کورٹ نے ان کے خلاف درج کئے گئے تمام معاملات کو منسوخ کردیا ہے ۔ ہائی کورٹ کے اس فیصلہ کے خلاف سدارامیا حکومت نے سپریم کورٹ میں چیلنج کیا ہے اور اس کی شنوائی چل رہی ہے ۔سی بی آئی عدالت نے بھی انہیں تمام الزامات سے بری کردیا ہے اس لئے پارٹی نے انہیں وزیر اعلیٰ کے امیدوار کے طورپر اعلان کیا ہے۔ انہوں نے اعتراف کیا کہ مرکزی وزیر اننت کمار ہیگڑے ۔رکن پارلیمان شوبھا کرندالاجے اور دیگر لیڈروں کے متنازعہ بیانات کی وجہ سے پارٹی کی امیج کو سخت نقصان پہنچا ہے ۔تمام لیڈروں کو انتخابات تک زبان بند رکھنے او رکسی بھی ٹی وی چینل کے بحث یا چرچہ کے پروگراموں میں شرکت نہ کرنے پر پابندی لگائی گئی ہے۔اگر اس کی خلاف ورزی کی گئی تو تادیبی کاروائی ہوگی۔ پارٹی کے اندر چند اختلافات ضرور ہیں اور اسے حل کرنے کیلئے ضروری اقدامات کئے جائیں گے۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: