سرورق / خبریں / سرکاری بنگلہ معاملےمیں شرد یادو کو فوری راحت

سرکاری بنگلہ معاملےمیں شرد یادو کو فوری راحت

نئی دہلی ، (یو این آئی) سپریم کورٹ نے جنتا دل (یو) کے سابق سربراہ شرد یادو کو فوری راحت دیتےہوئے راجیہ سبھا سے نااہل قراردیئےجانے کے معاملےکے تصفیے تک سرکاری بنگلے میں رہنے کی آج اجازت دےدی ہے۔
جسٹس آدرش کمار گوئل اور جسٹس اشوک بھوشن کی تعطیلی ڈویژن بینچ نے جنتادل (یو) کے چیف وہپ رام چندر سنگھ کی درخواست کی سماعت کے بعد مسٹر یادو کو سرکاری بنگلے میں 12 جولائی تک رہنے کی اجازت دے دی ہے۔
کورٹ نے، اگرچہ دہلی ہائی کورٹ کے عبوری حکم میں جزوی ترمیم کرتے ہوئے واضح کیا کہ مسٹر یادو اس دوران تنخواہ، الاؤنس ، ہوائی جہاز اور ریل ٹکٹ کی سہولیات سے محروم رہیں گے۔ عدالت عظمی نے ہائی کورٹ کو راجیہ سبھا سے نااہلی کو چیلنج دینے والی مسٹر یادو کی درخواست کی تصفیے 12 جولائی تک کرنے کا بھی حکم دیا۔
جنتا دل (یو) چیف وہپ نے کل عدالت میں ایک عرضی دائر کرکے مسٹر یادو کو سرکاری بنگلہ خالی کرنے کی ہدایت دینے کی درخواست کی تھی۔ چیف وہپ نے مسٹر یادو کو سرکاری بنگلے کے استعمال کی اجازت دیئے جانے کے دہلی ہائی کورٹ کے حکم کوبھی چیلنج کیا تھا۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: