سرورق / خبریں / سابق وزیراعلی کے طور پر لالو کے گھر گارڈ کم ہونے سے ناراض رابڑی اور ان کے بیٹوں نے سیکورٹی واپس کی-

سابق وزیراعلی کے طور پر لالو کے گھر گارڈ کم ہونے سے ناراض رابڑی اور ان کے بیٹوں نے سیکورٹی واپس کی-

پٹنہ، بہار کی سابق وزیراعلی کے ناطے رہائش گاہ پر تعینات سیکورٹی گارڈوں کی تعداد کل رات کم کئے جانے سے ناراض محترمہ رابڑی دیوی کے ساتھ ان کے بیٹے تیجسوی یادو نے اپوزیشن کے لیڈر اور مسٹر تیج پرتاپ یادو نے رکن اسمبلی کے طورپر ملی پوری سیکورٹی آج واپس کردی۔ محترمہ رابڑی دیوی نے آج وزیراعلی نتیش کمار کو خط لکھ کر کہاکہ سابق وزیراعلی کے ناطے مسٹر لالو پرساد یادو اور ان کی سیکورٹی کے لئے بہار ملٹری پولیس (بی ایم پی) کے دو کمانڈوں کی تعیناتی 2005میں ہی کی گئی تھی لیکن کل دیر رات اس سیکورٹی کو ہٹا دیا گیا۔ انہوں نے کہاکہ ان کے ساتھ اور رہائش گاہ پر صرف دکھاوے کے لئے سیکورٹی گارڈوں کی تعیناتی کی ضرورت نہیں ہے۔ اس لئے وہ باقی رہ گئے سیکورٹی گارڈ اور حکومت کی گاڑی کو واپس کرتی ہیں۔
سابق وزیراعلی نے کہاکہ ان کے پورے کنبے کوقتل کرانے کی سازش ہورہی ہے لیکن اب عوام ان کی سیکورٹی کریں گے۔ انہوں نے کہاکہ اگر اب ان کے کنبہ کے ساتھ کسی طرح کا ناخوشگوار واقعہ ہوتا ہے تو اس کے لئے نتیش حکومت پوری طرح ذمہ دار ہوگی۔
محترمہ رابڑی دیوی نے بعد میں نامہ نگاروں سے بات چیت میں الزام لگایا کہ انہیں اور ان کے پورے کنبہ کی قتل کی سازش مسٹر نتیش کمار اور مسٹر شیل مودی رچ رہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ اگر حکومت سابق وزیراعلی کے ناطے ملے گھر کو خالی کرنے کیلئے لکھتی ہے تو وہ اسے بھی خالی کردیں گی۔ اس سے پہلے صبح جب سابق وزیراعلی رابڑی دیوی کی رہائش گاہ پر باقی رہ گئے سیکورٹی گارڈ ڈیوٹی پر آئے تب انہیں واپس کر دیا گیا۔ اپوزیشن لیڈر تیجسوی یادو ، سابق وزیر تیج پرتاپ یادو اور محترمہ رابڑی دیوی نے باڈی گارڈ لینے سے بھی انکار کردیا ہے۔ اس درمیان راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) کے رکن اسمبلی شکتی یادو نے کہاکہ ان کے والد کو ہی اگر سیکورٹی نہیں ملتی ہے تو پارٹی کے تمام رکن اسمبلی اور قانون ساز کونسل بھی اپنی سیکورٹی واپس کردیں گے۔ انہوں نے کہاکہ حکومت انتقامی جذبہ سے کام کررہی ہے اس لئے اس نے پہلے مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) کو گھر پر بھیجا اور دیر رات میں سیکورٹی گارڈوں کو واپس بلا لیا۔
خیال رہے کہ سابق وزیراعلی رابڑی دیوی کی رہائش گاہ پر بی ایم پی کے 32کمانڈ تعینات تھے۔ سیکورٹی میں کمی کے سلسلہ میں ایڈیشنل پولیس ڈائرکٹر جنرل ہیڈکوارٹر ایس کے سنگھل نے کہا کہ اہم شخصیات کو سیکورٹی دینے کی کمیٹی بنی ہے۔ یہ کمیٹی شخص کے عہدہ اور ان پر موجود خطروں کا مطالعہ کرکے سیکورٹی کا انتظام کرتی ہے۔ وقفہ وقفہ سے اس کا جائزہ لیا جاتا ہے اور فیصلے کئے جاتے ہیں۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: