سرورق / خبریں / ریلوے کی زمین پر بی بی ایم پی کا کوڑا دان۔مکینوں کی زندگی کو عذاب بنا رہا ہے –

ریلوے کی زمین پر بی بی ایم پی کا کوڑا دان۔مکینوں کی زندگی کو عذاب بنا رہا ہے –

بنگلورو۔کرشنا راج پورم میں واقع پوروا مڈ ٹاؤن رسیڈنسی نامی ایک اپارٹمنٹ کے قریب ایک غیر قانونی کوڑا دان، جو مسلسل بدبو پھیلا تا رہا ہے علاقہ کے مکینوں کے لئے مسلسل عذاب بنا ہوا ہے لیکن اس تعلق سے بار بار کی شکایتوں کے باوجود بروہت بنگلورو مہا نگرا پالیکے کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگی ہے۔کبھی کبھی اس کوڑادان کے کچرے میں آگ لگادی جاتی ہے جس کی وجہ سے زہریلا دھواں پورے علاقہ میں پھیل جاتا ہے اور خاص طور پر قریب ہی واقع اس اپارٹمنٹ کے مکانوں میں داخل ہو کر بچوں ، بوڑھوں اور بیماروں کے لئے عذاب جان بن جاتا ہے۔یہ زمین جس پر کوڑا کرکٹ پھینکا جاتا ہے وہ بینی گانا ہلی تالاب کی زمین سے متصل جنوب مغربی ریلویز کی ملکیت والی آراضی ہے، البتہ اس زمین کی دیکھ بھال کی ذمہ داری بی بی ایم پی کے ہاتھوں ہے ، مکینوں کا کہنا ہے کہ خود بی بی ایم پی کے صفائی کرم چاری اس زمین پر کچرا وغیرہ لاکر ڈالتے ہیں ، جس کی وجہ سے اس کے آس پاس رہنے والوں کی زندگی عذاب جاں بنی ہوئی ہے۔اس اپارٹمنٹ کے ایک مکین شیام جگناتھ نے بتایا کہ ’’تیسرا اے روڈ جہاں یہ غیر قانونی کوڑا دان بنا ہوا ہے، اس کو اسی طرح کے ایک احتجاج کے بعد تعمیر کیا گیا تھا لیکن اس کے باوجود پچھلے دو سالوں سے یہاں غیر قانونی طور پر کچرا پھینکے جانے کا سلسلہ بغیر کسی رکاوٹ کے جاری ہے، اس کے نتیجہ میں بینی گانا ہلی تالاب سے جڑنے والا برساتی نالہ بھی بند ہو کر رہ گیا ہے‘‘۔مکینوں کا کہنا ہے کہ حالیہ دنوں میں وہ لوگ اس زمین پر کچرا پھینکنے کے لئے آنے والی بی بی ایم پی سواریوں کو راستہ ہی میں روکتے رہے ہیں ، لیکن حالات کو بدتر بناتے ہوئے قریب کے علاقوں سے مرغیوں کے فضلات وغیرہ بھی یہیں لا کر ڈالے جا رہے ہیں۔ایک اور مکین راشی سامنت نے بتایا کہ ’’تسلسل کے ساتھ یہاں جمع ہونے والے کچرے میں آگ بھی لگائی جاتی ہے جو کئی کئی دنوں تک جلتی رہتی ہے، اس صورت حال نے مکینوں کو مزید پریشانیوں میں ڈال دیا ہے اس لئے کہ اپارٹمنٹ میں جو چھوٹے چھوٹے بچے رہتے ہیں وہ اس جلتے ہوئے کچرے سے نکلنے والے زہریلے دھویں کا شکار ہو کر مختلف بیماریوں میں گرفتار ہوتے رہتے ہیں‘‘۔جب مکینوں نے مقامی کارپوریٹر سے ملاقات کی تو انہوں نے خود اعتراف کیا کہ بی بی ایم پی کے صفائی کرم چاری خود ہی خالی جگہوں کی تلاش میں رہتے ہیں اور وہاں کچرا ڈال کر اسے آگ لگا دیتے ہیں۔اپارٹمنٹ کے ایک اور مکین نے بتایا کہ ’’بار بار کی شکایتوں اور مقامی افراد کی طرف سے مداخلتوں کے باوجود ، اس طرح کی سرگرمیوں میں کوئی کمی واقع نہیں ہوئی ہے ، ایسی حالت میں اس کے خاتمہ کی کیا امید کی جا سکتی ہے۔جب لوگ یہاں کچرا ڈالتے ہیں یا اس کو آگ لگاتے ہیں اور ایسے موقع پر اگر ہم ان کی تصویریں یا ویڈیو لینے کی کوشش کرتے ہیں تو ہمیں دھمکیاں دی جاتی ہیں کہ اس کے بہت برے نتائج ظاہر ہونگے، یہاں تک کہ ہم ان لوگوں کو اس کام سے روکنے کی بھی کوشش کرتے ہیں تو ہمیں برا بھلا کہا جاتا ہے‘‘۔اسی دوران ایک اور مکین سریدھر کاپا نے بتایا کہ ’’ بینی گانا ہلی تالاب کی پوری زمین پر غیر قانونی طور سے کچرا اور فضلات کو پھینکا جا رہا ہے اور اس طرح یہ تالاب برباد ہو گیا ہے بلکہ مکمل طور پر کوڑا دان میں تبدیل ہو کر رہ گیا ہے ، اس علاقہ میں بنیادی سہولیات جیسے راستہ کے لائٹ وغیرہ بھی نہیں پائے جاتے اور اب یہ شدید بدبو ہے ، یہ سب کچھ نہیں بلکہ حکومت کی ناکامی اور بد ترین بد انتظامی کی نشانیاں ہیں‘‘۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: