سرورق / خبریں / ریس کورس میں غیر قانونی طور پر تعمیر کردہ عمارتیں خالی کرانے 3ماہ کی مہلت

ریس کورس میں غیر قانونی طور پر تعمیر کردہ عمارتیں خالی کرانے 3ماہ کی مہلت

میسور: ریس کورس کے احاطے میں گھوڑے پالنے کیلئے تعمیر کی گئی عمارت کو تین ماہ کے اندر خالی نہیں کیا گیا تو ریس کورس کیلئے فراہم کی گئی بجلی کے کنکشن اور پانی کی سربراہی روک دی جائے گی۔ اور لائسنس بھی رد کردیا جائے گا۔ یہ وارننگ ریاستی وزیر برائے سیاحت و ریشم سارا مہیش نے دی۔ انہوں نے یہاں شہر کے چامنڈیشوری پہاڑی کے قریب واقع ریس کورس میدان کا گزشتہ روز صبح دورہ کر کے معائنہ کیا۔اس موقع پر اخباری نمائندوں سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ ریس کورس میں گھوڑے دوڑانے کیلئے جگہ حکومت کی طرف سے فراہم کی گئی ہے ریس کورس کے باہر گھوڑے پال کر ریس کے دن ضرورت کے مطابق گھوڑوں کو ریس کورس لاکر دوڑانے کی ہدایت دی گئی ہے۔ اس کے تحت ریس کورس میں گھوڑے پالنے کی گنجائش نہیں ہے۔ اس طرح کے احکامات ہونے کے باوجود ریس کورس میں زیادہ تعداد میں گھوڑے پالے جارہے ہیں۔اور بغیر قانونی گنجائش کے عمارت بھی تعمیر کرلی گئی ہے۔ ریس کورس میں 600 سے زائد عمارتیں تعمیر کرلی گئی ہیں۔ ان عمارتوں کے مالک کتنے ہی بارسوخ ہوں کسی بھی سفارش کی پروا نہیں کی جائے گی اور عمارتیں خالی کرائی جائیں گی۔ ریس کورس میں 110گھوڑوں کیلئے موقع دیا گیا ہے مگر اب 600گھوڑے ریس کورس میں موجود ہیں اور ان گھوڑوں کی نگرانی کیلئے 1800 افراد کو مقرر کیا گیا ہے۔افزود گھوڑوں اور انکی نگرانی کررہے عملہ کو دوسری جگہ منتقل کئے جانے کارپوریشن کے افسروں کو ہدایت دی گئی ہے۔سارامہیش نے بتایا کہ ریس کورس میدان میں تعمیر کی گئی غیر قانونی عمارتوں کو خالی کرانے کی بھی کارپوریشن افسروں کو ہدایت جاری کی گئی ہے۔ اور ان عمارتوں کے مالکوں کو تین ماہ کی مہلت دی گئی ہے اس درمیان اگر گھوڑے پالنے کیلئے تیار کردہ عمارتیں خالی نہیں کی گئیں تو ان کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ اس سے قبل گھوڑوں کے شیڈوں کا معائنہ کرنے والے وزیر موصوف نے شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کارپوریشن افسروں کو خوب آڑے ہاتھوں لیا۔اور ہدایت دی کہ اندرون ایک ہفتے گھوڑے پالنے کے نظام میں بہتری لائی جائے۔ اس موقع پر میئر ایم جے روی کمار کے علاوہ کارپوریشن افسر موجود تھے۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کانگریس پارٹی سے مجھے کوئی بیزارگی نہیں: کمار سوامی

رام نگرم: مجھے کانگریس پارٹی کی طرف سے کوئی الجھن نہیں ہے اور نہ ہی …

جواب دیں

%d bloggers like this: