سرورق / خبریں / رگھورام راجن نے کہا، یونیورسٹی میں کسی کو بھی ملک مخالف بتا کر چپ نہیں کرایا جانا چاہئے-

رگھورام راجن نے کہا، یونیورسٹی میں کسی کو بھی ملک مخالف بتا کر چپ نہیں کرایا جانا چاہئے-

کوچی۔ ریزرو بینک آف انڈیا کے سابق گورنر رگھورام راجن نے جمعہ کو کہا کہ یونیورسٹی ایسی محفوظ جگہ ہونی چاہئے جہاں بحث اور بات چیت جاری رہے اور کسی کو بھی ملک مخالف بتا کر خاموش نہیں کرایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی میں ہر قسم کے خیال کو فروغ دینا چاہئے۔
راجن نے کہا، ‘ہمیں یونیورسٹی کا ایک ایسے مقام کے طور پر احترام کرنا چاہئے جہاں نظریات پر تبادلہ خیال کیا جاتا ہو اور آپ دوسرے فریق کو یہ کہہ کر خاموش نہیں کراتے ہوں کہ آپ کو اس طرح بات کرنے کا حق نہیں ہے یا آپ ملک مخالف ہیں۔
کیرالہ حکومت کی طرف سے کوچی میں عالمی ڈیجیٹل اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے راجن نے ملک میں بڑھتی ہوئی بے روزگاری کے مسئلہ کے بارے میں بھی بات کی۔ یہاں انہوں نے کہا، “ہمارے پاس ابھی سب سے بڑا مسئلہ یہ ہے کہ ہم کس طرح ہندوستان میں ملازمتیں پیدا کرسکتے ہیں؟” ہمیں لوگوں کو زراعت سے صنعت اور خدمات میں منتقل کرنے کی کوشش کرنی چاہئے، جہاں آمدنی بہت زیادہ ہے۔ ہمیں ایسا کرنے کے طریقوں کا پتہ لگانا چاہئے۔
آر بی آئی کے سابق گورنر نے اس کے ساتھ ہی انکشاف کیا کہ وہ ٹوئٹر پر آخر کیوں نہیں ہیں۔ راجن نے کہا کہ وہ ٹوئٹر پر اس لئے نہیں ہیں کیونکہ وہ 30 سیکنڈ میں چند الفاظ میں ٹویٹس کا جواب نہیں دے سکتے۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: