سرورق / خبریں / راجیہ سبھا میں 13 ویں دن بھی نہیں ہوا کام کاج،کل تک کیلئے ملتوی-

راجیہ سبھا میں 13 ویں دن بھی نہیں ہوا کام کاج،کل تک کیلئے ملتوی-

نئی دہلی، آندھرا پردیش کو خصوصی ریاست کا درجہ دینے، کاویری واٹر مینجمنٹ بورڈ قائم کرنے اور دلتوں کے خلاف بڑھتےمظالم کے ایشوزپر اپوزیشن نے آج بھی راجیہ سبھا میں زبردست ہنگامہ کیا جس کی وجہ سے ایوان کی کارروائی کل تک کے لئے ملتوی کر دی گئی۔ اس طرح بجٹ سیشن کے دوسرے مرحلہ میں مسلسل 13 ویں دن تک ایوان میں کوئی کام کاج نہیں ہوسکا۔
چیئرمین ایم ونکيا نائیڈو نے صبح ایوان کی کارروائی شروع کرتے ہوئے وزرا کو ضروری قانون سازی کے کاغذات ٹیبل پر رکھنے کی ہدایات دیں۔ اس کے بعد انہوں نے وقفہ صفر شروع کرنے کی کوشش کی تو تیلگو دیشم پارٹی، ڈی ایم کے، انادرمك اور کانگریس کے رکن اپنے اپنے مطالبات کی حمایت میں نعرے لگاتے ہوئے چیئرمین کی چیئر کے سامنے آ گئے۔ آندھرا پردیش اور تمل ناڈو کے ارکان نے اپنے ہاتھو ں میں تختیاں اور پوسٹر لے رکھے تھے۔
اس دوران ہنگامے کے دوران اپوزیشن لیڈر غلام نبی آزاد نے سپریم کورٹ کے درج فہرست ذات و قبائل پر ظلم و زیادتی کے معاملہ میں دیئے گئے التزام کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ حکومت نے اس پر اپنا موقف ٹھیک طرح سے نہیں رکھا ہے۔ ملک میں دلتوں کے خلاف زیادتی کے واقعات بڑھ رہے ہیں۔ ایوان میں اس معاملہ فوری طور پر بحث ہونی چاہئے۔ اس پر مسٹر نائیڈو نے کہا کہ یہ اہم مسئلہ ہے لیکن اس کے لئے نوٹس دیا جانا چاہئے۔ اس کے بعد مسٹر نائیڈو نے نعرے لگا رہے اراکین کو واپس اپنی نشستوں پر جانے اور ایوان کی کارروائی چلنے دینے کی اپیل کی۔ انہوں نے کہا، ’’کیا یہ پارلیمنٹ ہے،باہر لوگ کیا سوچیں گے‘‘۔پارلیمانی امور کے وزیر مملکت وجے گوئل نے کہا کہ حکومت تمام معاملات پر بات چیت کے لئے تیار ہے۔ پارلیمنٹ چلانا اپوزیشن کی بھی ذمہ داری ہے۔سب کو اس میں تعاون کرنا چاہئے۔لیکن ہنگامہ کر رہے اراکین پر اس کا کوئی اثر نہیں ہوا۔حالات کو دیکھتے ہوئے چیئرمین نے پانچ منٹ کے اندر ہی ایوان کی کارروائی کل تک کے لئے ملتوی کر دی۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: