سرورق / خبریں / دہلی یونیورسٹی کے چوٹی کے سات کالجوں کے ٹیچرآٹونومس کے خلاف –

دہلی یونیورسٹی کے چوٹی کے سات کالجوں کے ٹیچرآٹونومس کے خلاف –

نئی دہلی‘  (یو این آئی) دہلی یونیورسٹی کے مرانڈا ہاوس‘ سینٹ اسٹیفن کالج اور ہندو کالج جیسے چوٹی کے ساتھ تعلیمی اداروں کے ٹیچروں نے آٹونومس اسکیم کی سخت مخالف کی ہے اور کہا ہے کہ اس سے پرائیوٹائزیشن کو تقویت ملے گی اور اعلی تعلیم کافی مہنگی ہوجائے گی جس سے غریب اور پسماندہ طبقات کے طلبہ بری طرح متاثر ہوں گے۔
دہلی یونیورسٹی ٹیچرس یونین (ڈوٹا)کی طرف سے آج یہاں منعقد پریس کانفرنس میں ان کالجوں کے ٹیچروں نے اپنی مخالفت ظاہر کی اور حکومت سے آٹونومس اسکیم کو واپس لینے کا مطالبہ کیا۔ اس دوران اکیڈمکس فار ایکشن اینڈ ڈیولپمنٹ (اے اے ڈی) اور یونائٹیڈ ٹیچرس فرنٹ(یو ٹی ایف) نے وائس چانسلر کو خط لکھ کر خودمختاری کی مخالفت کی ہے اور کہا ہے کہ یہ یونیورسٹی قانون 1922 کی خلاف ورزی ہے۔
خیال رہے کہ گذشتہ ماہ 27تاریخ کو یو جی سی نے 35کالجوں کے پرنسپلوں کی آٹونومس سے متعلق ایک ورک شاپ منعقد کی تھی جس میں انہوں نے اس سلسلے میں ان کی رائے مانگی تھی۔ اس کے بعد دہلی یونیورسٹی میں مخالفت کے آواز بلند ہونے شروع ہوگئے تھے۔
سینٹ اسٹیفن کالج اسٹاف ایسوسی ایسن‘ ہندو کالج اسٹاف ایسوسی ایشن‘ مرانڈاکالج اسٹاف ایسوسی ایشن‘ سری رام کالج اسٹاف ایسوسی ایشن اور ہنس راج کالج اسٹاف ایسوسی ایشن نے باضابطہ قرار دادمنظور کرکے اس آٹونومس اسکیم کی مخالفت کی ہے۔
خالصہ کالج اسٹاف ایسوسی ایشن کی صدر گردیپ کور نے یو این آئی کو بتایا کہ کل ان کے ایسوسی ایشن کی میٹنگ میں اس ضمن کی تجویز منظور ہونی ہے۔ ڈوٹا کے صدر راجیو رائے نے بتایا کہ لیڈی سر ی رام کالج کے ٹیچرس بھی ہمارے ساتھ ہیں ۔ ان کی پرنسپل نے کہا ہے کہ وہ ٹیچروں اور طلبہ سے رابطہ کئے بغیر کوئی فیصلہ نہیں کریں گی۔
دہلی یونیورسٹی مجلس عاملہ کے رکن جے ایل گپتا ‘ فائنانس کمیٹی کے رکن راج پال سنگھ‘ اکیڈمک کونسل کے رکن نچیکیتا سنگھ سمیت کئی ٹیچرلیڈروں نے مشترکہ طورپر وائس چانسلر کو بھیجے گئے خط میں وائس چانسلر سے اپیل کی ہے کہ وہ انسانی وسائل کے فروغ کی وزارت اور یونیورسٹی گرانٹس کمیشن کے دباو میں نہ آئیں اور ان کے حکم کے آگے نہ جھکیں۔ اس سے یونیورسٹی کا وفاقی ڈھانچہ خراب ہوجائے گا۔
سینٹ اسٹیفن کالج اسٹاف ایسوسی ایشن کی صدر نندیتا نرائن نے کہا کہ ان کے 56 میں سے 42ٹیچروں نے دستخط کرکے یونیورسٹی گرانٹس کمیشن کے صدر کو خط لکھ کر خودمختاری کی مخالفت کی ہے۔25اپریل کو انہوں نے ایک تجویز منظور کرکے اپنی مخالفت ظاہر کی تھی۔ انہوں نے بتایا کہ ٹیچروں کی مخالفت کے باوجود یو جی سی کی ٹیم ان کے کالج کا دورہ کرنے کے لئے دس کئی کو آنے والی ہے۔
مرانڈا کالج اسٹاف ایسوسی ایشن کی سکریٹری رینو اروڑہ نے کہ اکہ ایک مرتبہ کالج کو یو جی سی سے خودمختاری ملی تو پرائیوٹائزیشن کا راستہ صاف ہوجائے گااور مہنگے کورس شروع ہوجائیں گے۔ابھی کالج میں کچھ ہی سیلف فائنانس سرٹیفکٹ کورس چل رہے ہیں۔
ہندو کالج اسٹاف ایسوسی ایشن کے صدر ابھے رنجن نے کہا کہ 26اپریل کو ہم نے میٹنگ میں ایک قرار داد منظور کرکے آٹونومس کی تجویز کو مسترد کردیا تھا ۔ اس سلسلے میں کالج انتظامیہ ٹیچروں اور طلبہ سے رابطہ کئے بغیر او رانہیں اندھیرے میں رکھ کر آگے بڑھ رہا ہے۔ انہوں نے کہاکہ تمام فریقین سے اجازت کے بغیر کوئی فیصلہ نہیں کیا جانا چاہئے۔
سری رام کالج آف کامرس اسٹاف ایسوسی ایشن کے سکریٹری ترون مانجھی نے کہ اکہ ہم لوگوں نے تو گذشتہ سال ہی ایک قرار داد منظور کرکے اس کی مخالفت کی تھی۔ ہنس راج کالج اسٹاف ایسوسی ایشن کے راکیش بترا نے بھی کہا کہ ہم لوگوں نے بھی گذشتہ سال ہی قرا رداد منظور کرکے اس کی مخالفت کی تھی جب آٹونومس اسکیم کی تجویز آئی تھی۔
یو این آئی

 

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: