سرورق / خبریں / دہلی میں کچرے کے سلسلے میں انل بیجل کی ایک بار پھر سرزنش –

دہلی میں کچرے کے سلسلے میں انل بیجل کی ایک بار پھر سرزنش –

نئی دہلی، دہلی میں جگہ جگہ لگنے والے کوڑے کے ڈھیرسےمؤثر طریقے سے نہ نمٹنے کی وجہ سے سپریم کورٹ نے پیر کو لیفٹیننٹ گورنر انل بیجل کی ایک بار پھر سرزنش کی ۔
جسٹس مدن بھیم راؤ لوكر اور جسٹس دیپک گپتا کی بنچ نے دہلی میں کچرے کے معاملے پر سماعت کرتے ہوئے کہا کہ کوڑوں کے ڈھیروں کی وجہ سے جو صورت حال ہے اسے لیفٹیننٹ گورنر آفس شاید سنجیدگی سے نہیں لے رہا ہے۔
بینچ نے کہا، ’’یہ بدقسمتی کی بات ہے کہ لیفٹیننٹ گورنر آفس دہلی میں کچرے کے ڈھیروں نمٹنے کے لئے مناسب اقدامات نہیں کررہے ہیں‘‘۔
کورٹ نے کچرے کے ڈھیروں پر ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے کہا ایک جگہ سے کچرا اٹھا کردوسرے کے گھر کے سامنے نہیں پھینکا جا سکتا ہے۔ گزشتہ سماعت کے دوران بھی عدالت عظمی نے کچرا نمٹارہ کے سنگین حالات کو دیکھتے ہوئے لیفٹیننٹ گورنر کی سرزنش کی تھی۔
بنچ نے دہلی میں کچرا مینجمنٹ پلانٹ دسمبر تک شروع ہونے کے سوال پر لیفٹیننٹ گورنر کو پھٹکار لگاتے ہوئے کہا کہ تب تک کسی کے گھر کا کچرا اٹھا کر کسی اور کے گھر کے سامنے پھینکنا چاہتے ہو۔ عدالت نے ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے کہ کیوں نہ تب تک اس کچرے کو راج نواس کے باہر ہی پھینک دیا جائے۔
سونیا وہار میں کوڑا پھینکنے کے سلسلے میں وہاں کے باشندوں کی ناراضگی کو مناسب قرار دیتے ہوئے بنچ نے کہا وہاں عام آدمی رہتے ہیں تو آپ وہاں کوڑا پھینکنا چاہتے ہیں۔ عدالت نے کچرا کے مرکب کرنے پر بھی ناراضگی کا اظہار کیا اور کہا کہ اسے الگ الگ نہ کیا جائے گا۔
عدالت نے کہا کہ کوڑا الگ الگ کئے جانے کے لئے لوگوں کو بیدار کرنے کی ضرورت ہے۔ اس پر عمل نہ کرنے والوں پر جرمانہ بھی لگایا جاسکتا ہے ۔ اس معاملے کی اگلی سماعت 17 اگست کو ہوگی۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: