سرورق / بین اقوامی / دس سال بعد کسی نیپالی کو روزگار کے لۓ بیرون ملک جانا نہیں پڑے گا –

دس سال بعد کسی نیپالی کو روزگار کے لۓ بیرون ملک جانا نہیں پڑے گا –

کاٹھمنڈو، نیپال کے وزیر خارجہ پردیپ گیالوی نے کہا ہے کہ ملک اقتصادی ترقی کی راہ پرگامزن ہے اور دس سال کے بعد کسی نیپالی نوجوان کو روزگار کے لۓ بیرون ملک جانے کی ضرورت نہیں ہوگی۔یہ معلومات آج اخبار “ہمالین ٹائمز” میں دی گئی ۔
مسٹر گیالوی نے گزشتہ رات دولاکھاضلع ہیڈکوارٹر چاری کوٹ کےایک پروگرام میں کہاکہ اس وقت ملک کے نوجوان ملازمت کی تلاش میں ملک چھوڑکرجا رہے ہیں۔ لیکن یہ رجحان اگلے دس سالوں میں 2028 تک ختم ہوجائیگا۔کیوں کہ حکومت روزگارکےلئےبہترمواقع فراہم کرنےکی سمت میں کام کررہی ہے۔لوگ بیرون ملک جاناضرورپسند کریں گے لیکن کم از کم وہ ملازمت کے لئے نہیں جائیں گے ۔بلکہ صرف سیروتفریح کےلئے جائیں گے۔
انہوں نے اپوزیشن سے مطالبہ کیا کہ نیپال کی بہتری اور خوشحالی کے لئے حکومت کی ہر مہم کی حمایت کریں۔انہوں نے امید ظاہر کی کہ ہندوستان اور چین بھی نیپال کی ترقی اور خوشحالی کیلئے پورارتعاون دیں گے۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: