سرورق / خبریں / خواتین جنس پینٹ پہننے کی وجہ سے پیداہونے والی اولاد نامرد اور کوٹزم کا شکار ہوہی ہیں:کیرلا لکچرر

خواتین جنس پینٹ پہننے کی وجہ سے پیداہونے والی اولاد نامرد اور کوٹزم کا شکار ہوہی ہیں:کیرلا لکچرر

ترواننتاپورم۔ خواتین کا لائف اسٹائل بدل گیاہے۔ خواتین کی طرز زندگی میں تبدیلی کی وجہ سے معاشرہ میں ناپسندیدہ چیزیں دیکھنے کو مل رہی ہیں۔ خواتین جینس پینٹ پہننے لگی ہیں۔ جنس پینٹ پہننے کی وجہ سے پیدا ہونے والی نسل سے جنس ہوگئی ہے اور آٹزم جیسے امراض کا شکار ہورہے ہیں۔ اس طرح کی باتیں کیرلا کے ایک استاد نے کہیں۔ اس بیان کی مخالفت ومذمت میں سخت رد عمل دیکھا جارہاہے۔ کالڈی کے ایک سرکاری کالج میں تدریسی خدمات انجام دے رہے لکچرر رجت کمار نے خواتین کے سلسلہ میں مذکورہ بیان دیاہے۔ لکچرر کے اس قسم کے غیر سائنٹفک اور شہوت انگیز بیان کے تعلق سے کیرلا حکومت قانونی چارہ جوئی پر آمادہ نظر آرہی ہے۔ ایک پروگرام میں تقریر کرنے کے موقع پر لکچرر رجت کمار سے کسی نے سوال کیا کہ پیدائش کے موقع پر بچے نامرد ہوکر کیوں پیداہوتے ہیں اور آٹزم کا شکار بچے کیوں ہوتے ہیں؟ مذکورہ دونوں سوالات کا جواب دیتے ہوئے رجت کمار نے کہاکہ والدین کا آپس میں متضاد اور غیرفطری سلوک کی وجہ سے بچے آٹزم کا شکار ہوجاتے ہیں۔ اس طرح عورتیں اگر اپنی نسوانیت کو طاق نسیاں بناتے ہوئے اور مرد حضرات اپنی مردانگی وقوامیت کو بھول جائیں تو پیدا ہونے والی لڑکی میں لڑکوں کی عادتیں آجاتی ہیں۔ ان کے اندر مردانہ کیفیت آجاتی ہے۔ مردوں کی صفات ان میں اثر انداز ہوتی ہیں۔ بسااوقات اس کے علاوہ پیدا ہونے والی اولاد تیسری جنس میں شامل ہوجاتی ہیں۔ رجت کمار کے مذکورہ بیان پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے کیرلا کی وزیرتعلیم کے کے شائلجہ نے کہاکہ تمام سرکاری محکمہ جات اور ادارے اپنے کسی بھی پروگرام میں رجت کمار کو مدعو نہ کریں۔ اگر دعوت دے چکے ہیں تو اس کو رد کردیں۔ کہاجاتاہے کہ رجت اس سے پہلے بھی اس قسم کے بیان دے چکے ہیں۔ بہت سارے پروگراموں میں انہوں نے طلبہ کو مشورہ بھی دیاہے۔ اس ضمن میں چند ویڈیو کلپس یوٹیوب میں گردش کررہی ہیں۔ رجت نے اپنے یوٹیوب چینل میں 2500؍فالوورسکو حاصل کیا ہواہے۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: