سرورق / خبریں / جھونپڑپٹیوں کیلئے ہاؤزنگ رائٹ ایکٹ نافذ کرنے کامطالبہ

جھونپڑپٹیوں کیلئے ہاؤزنگ رائٹ ایکٹ نافذ کرنے کامطالبہ

گدگ۔(رفیق کاگدگار) مسلم جن آندولن ریاستی کمیٹی کے ایک وفد نے ریاستی وزیر برائے ہاؤزنگ یو ٹی قادر سے وکاس سودھا میں ملاقات کرکے ایک یادداشت پیش کی۔یادداشت میں مطالبہ کیا گیا کہ ریاست کے تمام اعلان کردہ جھونپڑپٹی علاقوں کے مکینوں کے لئے شناختی کارڈ کی بنیاد پر گھروں کو منظوری دی جائے اور ریاست کے 70؍لاکھ بے زمین افراد کوگھر کا تیقن دینے والے ہاؤزنگ رائٹ ایکٹ کو نافذ کیا جائے ۔ یادداشت میں بتایاگیا کہ ریاست میں تقریباً 5800 جھونپڑپٹی علاقے ہیں جن میں سے 2802 کو حکومت کرناٹک نے سرکاری طور پر جھونپڑپٹی علاقے قرار دئے ہیں اور 2011 کی مردم شماری کے تحت شہری آبادی میں 23فیصد جھونپڑپٹی میں بسنے والے 70لاکھ افراد بنیادی سہولتوں سے محروم ہیں۔ یادداشت میں بتایاگیا کہ 1973 میں آنجہانی وزیراعلیٰ دیوراج ارس کی جانب سے جھونپڑپٹیوں کی ترقی کے لئے ایکٹ جاری کیاگیاتھا جس میں اب تک کسی قسم کی تبدیلی نہیں کی گئی ہے۔ یادداشت میں مطالبہ کیا گیا کہ ریاست کے سرکاری اعداد و شمار کے مطابق موجود45لاکھ جھونپڑپٹی مکینوں کو 2011ء اور 2015ء کی مردم شماری کے مطابق بجٹ میں رقم مختص کرکے سماجی انصاف کو یقینی بنایاجائے ۔ یادداشت قبول کرتے ہوئے وزیر ہاؤزنگ یو ٹی قادر نے کہاکہ اس سے قبل سماجی انصاف کے تحت جھونپڑپٹی علاقوں کے مکینوں کو حقوق فراہم کرنے کے لئے سدارامیا کی جانب سے مرتب کرناٹک جھونپڑپٹی ترقیاتی ایکٹ۔2018 کو مخلوط حکومت اسمبلی میں پیش کرکے 10دنوں کے اندر منظوری دے گی۔ انہوں نے کہا کہ 30جولائی تک پردھان منتری اواس اسکیم کے تحت عرضی داخل کی جاسکتی ہے اس کا فائدہ اٹھایاجائے۔ اس موقع پر کمیٹی کے ریاستی کنوینر نرسمہا مورتی، ریاستی آرگنائزنگ کنوینر و گدگ ضلع کمیٹی صدر امتیازآر مانوی، چندرما، جناردھن ، رینوکاسرڈگی، رسول نداف و دیگر موجود رہے ۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: