سرورق / کھیل / بیڈمنٹن: کھیل افسران کی فہرست سے والد کا نام ہٹانے پر بھڑكي سائنا نہوال –

بیڈمنٹن: کھیل افسران کی فہرست سے والد کا نام ہٹانے پر بھڑكي سائنا نہوال –

بیڈمنٹن: کھیل افسران کی فہرست سے والد کا نام ہٹانے پر بھڑكي سائنا نہوال -نئی دہلی، ہندستان کی اسٹار شٹلر سائنا نہوال نے بدھ سے شروع ہونے جا رہے گولڈ کوسٹ دولت مشترکہ کھیلوں میں ہندستانی حکام کی فہرست سے ان کے والد هروير سنگھ کا نام ہٹائے جانے پر گہری ناراضگی ظاہر کی ہے۔آسٹریلیا کے گولڈ کوسٹ میں بدھ سے 21 ویں دولت مشترکہ کھیلوں میں حصہ لینے گئیں بیڈمنٹن کھلاڑی سائنا کے والد کا نام بطور افسر تجویز کیا تھا۔وہیں پی وی سندھو کی ماں کا نام بھی بعد میں حکام کی فہرست سے ہٹا دیا گیا تھا۔لیکن مرکزی وزارت کھیل نے بعد میں انہیں ہندستانی ٹیم کے ساتھ اپنے اخراجات پر سفر کرنے کی اجازت دے دی تھی۔
سائنا نے غصہ ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ گولڈ کوسٹ پہنچنے پر انہیں پتہ چلا کہ ان کے والد کا نام سرکاری فہرست سے ہٹا دیا گیا ہے جس کی وجہ سے اب ان کے والد ان کا کوئی بھی میچ نہیں دیکھ پائیں گے۔اولمپک میڈلسٹ نے ٹوئٹر پر بہت ٹویٹس کرتے ہوئے اپنا غصہ بھی ظاہر کیا ہے۔بیڈمنٹن کھلاڑی نے لکھا کہ میں اس بات سے حیران ہوں کہ جب ہم ہندستان سے دولت مشترکہ کھیلوں کے لیے روانہ ہوئے تھے تب میرے والد کے نام کی ٹیم افسر کے طور پر تصدیق ہوئی تھی اور ہم نے اس کیلئے پورا خرچ بھی خود سے برداشت کیا تھا لیکن جب ہم کھیل گاؤں پہنچے تو میرے والد کا نام ٹیم افسر کی فہرست سے کاٹ دیا گیا تھا۔وہ تو اب میرے ساتھ رہ بھی نہیں سکتے۔
سندھو کی ماں وجیا پسرلا اور سائنا کے والد هروير سنگھ ان 15 افسران میں شامل ہیں جنہیں وزارت نے ٹیم کے ساتھ اپنے اخراجات پر جانے کی اجازت دی تھی۔سائنا نے دیگر ٹویٹ پوسٹ کرتے ہوئے لکھا کہ میرے والد اب میرے میچ دیکھنے کے لیے کھیل گاؤں تک میں داخل نہیں ہو سکتے ہیں اور نہ ہی مجھ سے مل سکتے ہیں۔یہ کس طرح کی مدد ہے۔اس مسئلے پر کچھ تنازعہ کے بعد ہندستانی اولمپک یونین نے نظر ثانی کی فہرست اپنی ویب سائٹ پر جاری کی تھی۔ ہندستان نے گولڈ کوسٹ میں اپنا 326 رکنی دستہ اتارا ہے جس میں آٹھ پیرااتھليٹ سمیت کل 218 کھلاڑی ہیں۔اس کے علاوہ 108 افسر ہیں۔
بیڈمنٹن مقابلوں میں تمغے کی دعویدار مانی جا رہی ہندوستانی کھلاڑی نے ساتھ ہی لکھا کہ مجھے میرے والد کی حمایت چاہیے کیونکہ میں اپنے ہر مقابلے میں انہی کے ساتھ جاتی ہوں۔مجھے سمجھ نہیں آ رہا ہے کہ آخر مجھے پہلے اس بارے میں کسی نے نوٹس کیوں نہیں دیا کہ وہ کھیل گاؤں میں داخل نہیں ہو سکتے ہیں۔دولت مشترکہ کھیلوں کے گزشتہ تین ورژن میں ہندوستانی ٹیم نے کل 215 تمغے جیتے ہیں۔ اس میں 2006 میں اس نے 50 میڈل، سال 2010 میں 101 تمغے اور سال 2014 میں 64 تمغے جیتے ہیں۔ ہندستان اس سال پچھلے ورژن کو پیچھے چھوڑ سب سے زیادہ تمغوں کی امید کر رہا ہے۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

وزیر کھیل راٹھور سے ملے لکشے سین –

نئی دہلی، جونیئر ایشیائی بیڈمنٹن چمپئن شپ میں 53 سال کے طویل وقفے کے بعد …

جواب دیں

%d bloggers like this: