سرورق / کھیل / بہترین مظاہرہ کے باوجود بد قسمت جاپان عالمی کپ سے باہر نیمار ایک بار پھر برازیل کو کوارٹر فائنل میں لے گئے۔ دوسرے ہاف میں سست رفتاری میکسیکو کو لے ڈوبی –

بہترین مظاہرہ کے باوجود بد قسمت جاپان عالمی کپ سے باہر نیمار ایک بار پھر برازیل کو کوارٹر فائنل میں لے گئے۔ دوسرے ہاف میں سست رفتاری میکسیکو کو لے ڈوبی –

روستوف اون ڈون،  (یو این آئی) دنیا کی تیسرے نمبر کی ٹیم بلجیئم نے 2 گول سے پچھڑنے کے بعد حیرت انگیز واپسی کرتے ہوئے ایشیائی ٹیم جاپان کا خواب پیر کو راؤنڈ 16 کے مقابلے میں 3-2کی جیت سے توڑکر فیفا عالمی کپ کے کوارٹر فائنل میں داخلہ حاصل کرلیا۔بلجیئم کا مقابلہ اب کوارٹر فائنل میں 5 بار کے چیمپئن برازیل سے ہوگا ۔بلجیئم کی ٹیم 69 ویں منٹ تک2 گول سے پچھڑی ہوئی تھی اور عالمی کپ میں ایک اور الٹ پھیر کی جانب بڑھ رہی تھی۔ لیکن قسمت کی دھنی بلجیئم کے کھلاڑیوں نے 5 منٹ کے وقفے میں ہیڈر سے 2 گول کر کے پہلے 2۔2 سے برابری حاصل کی اور پھر انجری ٹائم کے چوتھے منٹ میں میچ فاتح گول داغ دیا۔صاف ستھرے کھیل کے بدولت راؤنڈ 16 میں پہنچے جاپان نے 52 ویں منٹ تک2-0کی برتری بنالی تھی اور ایسا محسوس ہورہا تھا کہ عالمی رینکنگ میں 61 ویں نمبر کی ایشیائی ٹیم کچھ الٹ پھیر کرکے رہے گی۔ لیکن برتری کی خوداعتمادی جاپان پر بھاری پڑگئی اور اس نے بلجیئم کو واپسی کرنے کا موقع دے دیا۔میچ جب مقررہ وقت میں برابری کے بعد فاضل وقت کی طرف بڑھ رہا تھا تب بھی جاپان نے اپنے ڈیفنس میں سستی دکھائی جس کا فائدہ اٹھاکربلجیئم نے میچ اپنے حق میں کرلیا۔آخری سیٹی بجتے ہی جاپان کے کھلاڑی اور ان کے حامی سکتہ میں تھے کہ میچ کا رخ کس طرح بدل گیا اور پہلی بار کوارٹر فائنل میں جانے کا ان کا خواب پھر سے چکنا چور ہوگیا۔ اس سے قبل جاپان کی ٹیم 2002 ء اور 2010ء میں پری کوارٹر فائنل میں جگہ بنانے میں کامیاب رہی تھی لیکن دونوں ہی موقعوں پر اسے شکست ہاتھ لگی تھی ۔ اس بار بھی اسے کوارٹر فائنل سے باہرہونا پڑا۔2002 ء میں جاپان کو ترکی نے 1-0 سے ہرایا تھا جبکہ 2010 ء میں یوروگوئے کے خلاف فاضل وقت تک مقابلہ گول کے بغیر برابر رہنے کے بعد جاپان کو پنالٹی شوٹ آؤٹ میں 3-5سے ہار کا سامنا کرنا پڑا۔ اس بار بلجیئم نے اسے 3-2سے شکست دی۔گروپ مرحلے میں تینوں میچ جیتنے کے بعد راؤنڈ16 میں پہنچنے اور جاپان کو ہرانے کے بعد کوارٹر فائنل میں جگہ بنانے والے بلجیئم کا اب اگلا مقابلہ 5بار کے عالمی چیمپئن برازیل سے ہوگا جس نے اس سے قبل میکسکو کو2-0سے ہرایا تھا۔ دنیا کی دوسری نمبر کی ٹیم برازیل اور تیسرے نمبر کی ٹیم بلجیئم کے درمیان کوارٹر فائنل یقینی طور پر ایک ہائی وولٹیج مقابلہ ہوگا۔بلجیئم کی ٹیم 1970 ء کے بعد سے پہلی ایسی ٹیم بن گئی ہے جس نے ناک آؤٹ مرحلے میں 2 گول سے پچھڑنے کے بعد جیت حاصل کی ہے ۔ اس سے قبل 1970 ء میں جرمنی نے انگلینڈ کو میکسکو میں ایکسٹرا ٹائم میں3-2سے شکست دی تھی۔بلجئیم نے 2 گول سے پچھڑنے کے بعد اپنا سب کچھ داؤ پر لگا دیا تھا جس کا فائدہ اسے جیت کی صورت میں ملا۔ جاپان کو گینکی ہارا گوچی نے 48 ویں اور تکاشی اینوئی نے 52 ویں منٹ میں بہترین گول کرکے برتری دلائی۔ اینوئی کا باکس کے باہر سے لگایا گیا شاٹ واقعی لاجواب گول تھا۔لیکن ڈیفنڈر جان ویرٹونگین نے 69 ویں منٹ میں کرشمائی ہیڈر سے بلجیئم کا پہلا گول داغا جبکہ 74 ویں منٹ میں مارون فیلینی نے ہوا میں چھلانگ لگاتے ہوئے ہیڈر لگاکر بلجیئم کو برابری دلادی۔میچ فاضل وقت میں بس داخل ہی ہونے والا تھا کہ انجری ٹائم کے چوتھے منٹ میں اسٹرا ئکررومیلو لوکاکو نے خود شاٹ نہ لے کر پیچھے سے آرہے ناسیر چاڈلی کے لئے گیند چھوڑ دی اور چانڈلی نے میچ فاتح گول داغ کر بلجیئم کے حامیوں کو جھومنے پر مجبور کردیا۔قبل ازیں برازیل نے ایک دیگر پری کوارٹر فائنل میں میکسیکو کو ہرا دیا۔میکسیکو کا ریکارڈ بتاتا ہے کہ وہ کبھی بھی ناک آؤٹ راؤنڈ کا میچ نہیں جیتی جس میں وہ پہلے برتری حاصل نہ کرے اور دوسری جانب برازیل نے کبھی وہ میچ نہیں ہاراجس میں نیمار گول کرے۔اور یہی پیر کو فیفا عالمی کپ کے ناک آؤٹ راؤنڈ میں برازیل اور میکسیکو کے درمیان میچ میں ہوا جب برازیل نے میکسیکو کو2-0 سے شکست دے کر کوارٹر فائنل میں جگہ بنا لی۔اس طرح میکسیکو نے ایک بار پھر ناک آؤٹ راؤنڈ میں شکست کھائی ہے۔ میکسیکو 1994 ء سے ہونے والے ہر عالمی کپ میں ناک آؤٹ راؤنڈ ہی میں ہارتا ہے۔برازیل کی جانب سے پہلا گول نیمار نے کیا لیکن دوسرے گول میں بھی نیمار کا بہت اہم کردار تھا۔برازیل کی ٹیم شروع ہی سے میچ کو کنٹرول نہیں کر رہی تھی اور خاص طور پر پہلے ہاف کے شروع میں جب میکسیکو کا میچ پر غلبہ تھا۔ لیکن 5 بارکے عالمی چیمپیئن نے پہلے ہاف کے آخر میں میچ کا کنٹرول سنبھال لیا۔دونوں ٹیموں نے عمدہ کھیل پیش کیا لیکن پہلے ہاف میں میکسیکو کی ٹیم تیز رفتاری کے بعد دوسرے ہاف میں تھکی ہوئی لگی۔اس میں کوئی شک نہیں کہ میکسیکو نے بڑا دلیرانہ کھیل کھیلا اور گول کرنے کی انتھک کوششیں کیں۔ لیکن وہ برازیل سے بہتر کھیل پیش نہ کر سکی۔میکسیکو کے خلاف 2گول کے بعد برازیل کے عالمی کپ میچوں میں گول کی تعداد 227 ہو گئی ہے۔ اب برازیل عالمی کپ میچوں میں سب سے زیادہ گول کرنے والی ٹیم بن گئی ہے جو اس سے قبل جرمنی تھی۔برازیل متواتر 13 عالمی کپس سے پہلے راؤنڈ سے ناک آؤٹ راؤنڈ تک پہنچا ہے جو کہ سب سے زیادہ ہے۔ دوسری جانب میکسیکو کی ٹیم اس حوالے سے دوسرے نمبر پر ہے وہ 7 بار ناک آؤٹ ا سٹیج پر پہنچی ہے۔آج سے عین 8 سال قبل 2 جولائی 2010 ء کو برازیل عالمی کپ کا میچ ہارا تھا اور اس میچ میں برازیل کو برتری حاصل تھی۔ یہ کوارٹر فائنل میچ تھا جس میں نیدرلینڈز نے برازیل کو 2-1 سے شکست دی تھی۔فرمینو متبادل کھلاڑی کے طور پر دوسرے ہاف میں آئے تھے اور انہوں نے 2 منٹ اور 4 سکینڈ کے اندر گول کیا۔ یہ فیفا عالمی کپ 2018ء میں متبادل کھلاڑی کی جانب سے کیے جانے والا تیز ترین گول ہے۔ئکر رومیلو لوکاکو نے خود شاٹ نہ لیکر پیچھے سے آرہے ناسیر چاڈلی کے لئے گیند چھوڑ دی اور چانڈلی نے میچ فاتح گول داغ کر بلجیئم کے حامیوں کو جھومنے پر مجبور کردیا۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

وزیر کھیل راٹھور سے ملے لکشے سین –

نئی دہلی، جونیئر ایشیائی بیڈمنٹن چمپئن شپ میں 53 سال کے طویل وقفے کے بعد …

جواب دیں

%d bloggers like this: