سرورق / بین اقوامی / بدعنوانی کا معاملہ: سابق وزیر اعظم نواز شریف کو 10 سال ، بیٹی مریم نواز کو 7 سال اور داماد صفدر کو ایک سال کی سزا –

بدعنوانی کا معاملہ: سابق وزیر اعظم نواز شریف کو 10 سال ، بیٹی مریم نواز کو 7 سال اور داماد صفدر کو ایک سال کی سزا –

اسلام آباد، پاکستان کی ایک احتساب عدالت نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کو کرپشن کے ایک مقدمے میں دس برس جب کہ ان کی بیٹی مریم نواز کو سات برس قید بامشقت کی سزا سنائی ہے۔ اسی مقدمے میں مریم نواز کے شوہر کیپٹن ریٹائرڈ صفدر کو بھی ایک برس قید کی سزا سنائی گئی ہے۔
نواز شریف پر الزام تھا کہ انہوں نے برطانیہ کے لندن میں ایون فیلڈ کے مقام پر غیرقانونی رقوم سے فلیٹس خریدے تھے۔ جنہیں پاکستانی عوام سے چھپایا گیا تھا۔ احتساب عدالت کے پراسیکیوٹر سردار مظفر عباسی نے میڈیا کو بتایا کہ یہ فلیٹس سن 1993 سے شریف خاندان کی ملکیت تھے۔
احتساب عدالت نے اس مقدمے میں سابق وزیر اعظم نواز شریف پر80 لاکھ پاؤنڈ (ایک ارب 10 کروڑ روپے سے زائد) اور مریم نواز پر 20 لاکھ پاؤنڈ (30 کروڑ روپے سے زائد) جرمانہ بھی عائد کیا گیا ہے۔اس عدالتی فیصلے کے ساتھ ہی مریم نواز شریف اور ان کے شوہر کیپٹن ریٹائرڈ صفدر بھی انتخابات میں حصہ لینے کے لیے نااہل ہو گئے ہیں۔ نواز شریف نے عدالت کے آج کے فیصلے کو سیاسی اغراض پر مبنی قرا ردیا ۔ کہا جارہاہے کہ وہ اس فیصلے کے خلاف اپیل کرسکتے ہیں۔
واضح رہے کہ گزشتہ برس جولائی میں پاکستانی عدالت عظمیٰ نے بدعنوانی کے ایک مقدمے میں فیصلہ سناتے ہوئے نواز شریف کو نااہل قرار دے دیا تھا اور اس کے ساتھ ہی ان سے منصب وزارت عظمیٰ بھی واپس لے لیا گیا تھا۔ بعد میں سپریم کورٹ نے نواز شریف کو پارٹی سربراہی کے لیے بھی نااہل قرار دے دیا تھا۔
پاکستان کی سپریم کورٹ نے پاناما لیکس کیس میں فیصلہ سناتے ہوئے نواز شریف کو جولائی 2017 میں نا اہل قرار دے دیا تھا۔ اسی تناظر میں نواز شریف کو وزیر اعظم کا عہدہ چھوڑنا پڑا تھا۔ اس فیصلے نے پاکستان کے سیاسی حلقوں میں ہلچل مچادی تھی۔
نواز شریف اس وقت اپنی بیمار اہلیہ کلثوم نواز شریف کی عیادت کے لیے لندن میں مقیم ہیں، جب کہ مریم نواز بھی لندن ہی میں ہیں۔
عدالت کے فیصلے سے قبل مریم نواز نے کارکنوں سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کے شیرو یاد رکھنا، فیصلہ جو بھی آئے گھبرانا نہیں، نواز شریف کے لیے یہ سب نیا نہیں ہے وہ پہلے بھی نااہلی، عمر قید، جیل اور جلا وطنی بھگت چکے ہیں۔
سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ٹوئٹ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ خوشی کی بات یہ ہے کہ کوئی لیڈر ہے جو آپ کی خاطر،وطن عزیز کی خاطر، آپ کے ووٹ کی عزت کی خاطر ڈٹ کر کھڑا ہے اور کوئی بھی قربانی دینے کو تیار ہے۔انہوں نے کہا کہ فیصلہ تو 25 جولائی کو ہونا ہے، ان سازشیوں اور مہروں کے چہرے اس دن یاد رکھنا، انشاء الّلہ فتح آپ کی منتظر ہے۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

بی ایس این ایل صارفین کو بہتر خدمت فراہم کرے۔ منی اپا

کولار۔ ٹیلی کمیونکیشن ، کولار ضلع صلاح بورڈ کے صدر ورکن پارلیمان کے ایچ منی …

جواب دیں

%d bloggers like this: