سرورق / خبریں / ایک سال میں منگلور سے 700سے زائد خواتین او رلڑکیوں کی اسمگلنگ-

ایک سال میں منگلور سے 700سے زائد خواتین او رلڑکیوں کی اسمگلنگ-

بنگلور( پی ین ین):۔ ریاستی وومن کمیشن کی چیرمن ناگا لکشمی بائی نے کہا کہ ریاست سے بڑی تعداد میں خواتین اور لڑکیوں کی اسمگلنگ ہورہی ہے اور اس کی روک تھام کے لئے حکومت نے ابھی تک کوئی ضروری اقدامات نہیں کئے ہیں۔ انہوں نے ایک پریس کانفرنس کے دوران نامہ نگاروں کو بتایا کہ صرف جنوبی کینرا ضلع سے ہی سات سو سے زائد خواتین اور نا بالغ لڑکیوں کی اسمگلنگ کی گئی ہے انہیں کہاں پہنچایا گیا ہے اس بارے میں انہیں کوئی جانکاری نہیں ہے۔لیکن محکمۂ پولیس سے اطلاع ملی ہے کہ انہیں جسم فروشی اور کلبوں میں رقص کرنے کے لئے ممبئی ۔نئی دہلی۔ کولکاتا اور دیگر شہروں کے علاوہ غیر ممالک کو بھی بھیجا جاتا ہے۔ یہ ایک سنجیدہ معاملہ ہے اس کی جانچ پولیس کو کرنی ہوگی مگر پولیس اہلکار تمام دلالوں کے ساتھ ملے ہوئے ہیں اور ان سے بھاری رشوت لیکر کوئی کاروائی نہیں کی جاتی۔ انہوں نے کہا کہ منڈیا ضلع میں سب سے زیادہ 317 عصت دری اور زنابالجبر کی وارداتیں ہوئی ہیں۔ریاست میں خواتین پر ظلم ۔ جہیز ہراسانی۔جنس ہراسانی۔ قتل ۔قاتلانہ حملوں کے جملہ تین ہزار 107معاملات درج کئے گئے ہیں ۔اس معاملہ میں کمیشن کی جانب سے دوہزار مظلوم خواتین کو انصاف دلوایا گیا ہے اور دیگر جرائم کی وارداتوں میں کئی ملزموں کوگرفتار کیا گیا ہے اور خواتین کو معاوضہ دینے کے ساتھ ہی انہیں حکومت سے معاوضہ و قرضہ جات اور گزارہ کرنے کے لئے ہاؤزنگ اسکیموں کے تحت مکان اور دیگر سہولیات فراہم کرانے کے لئے حکومت سے سفارش کی گئی ہے۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: