سرورق / خبریں / اپنے بل بوتے پر شیو سینا کا وزیر اعلیٰ نا ممکن،اتحاد کرنا ہو گا: رام داس اٹھاولے

اپنے بل بوتے پر شیو سینا کا وزیر اعلیٰ نا ممکن،اتحاد کرنا ہو گا: رام داس اٹھاولے

اورنگ آباد آئندہ انتخابات میں مہاراشٹر میں شیو سینا کا خود کے بل پر وزیر اعلیٰ بننا نا ممکن ہے۔اسے اقتدار حاصل کرنے کے لیے بی جے پی اور رپبلکن پارٹی آف انڈیا (آر پی آئی) کے ساتھ اتحاد کرنا ناگزیر ہے۔اس لیے شیو سینا کوچاہئے کہ وہ اس بات پر غور کرے۔
اس طرح کا مشورہ آج یہاں مرکزی وزیرِ مملکت برائے سماجی انصاف رام داس اٹھاولے نے دیا۔ آج دوپہر صوبیداری گیسٹ ہاؤس میں ایک پریس کانفرنس میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ شیو سینا کا مہاراشٹر میں اقتدار کا خواب اسی وقت پورا ہو سکتا ہے جب وہ اتحاد کی بات کرے.
اس موقع پر شیو سینا کو راعب کرنے کے لیے انھوں نے ایک فارمولا بھی پیش کیا کہ جس پارٹی کے ذیادہ ارکان اسمبلی ہونگے ابتدائی ڈھائی سال اسکا وزیر اعلیٰ ہوگا اور بعد کے ڈھائی سال دوسری پارٹی کا.
جب ان سے پوچھا گیا کہ شیو سینا آپ سے دور دور بھاگ رہی ہے، اور آپ اس کے پیچھے بھاگ رہے ہیں، کیا بی جے پی ڈری ہوئی ہے؟ تو انہوں نے اصل سوال کو نظر انداز کر تے ہوئے کہا کہ شیو سینا ہماری پرانی ساتھی ہے اور اسے سمجھانا ہمارا کام ہے.
انھوں نے کہا کہ حکومت ایک نیا آرڈیننس جاری کرنے کے بارے میں غور کر رہی ہے، جو جولائی اور 10 اگست کے درمیان لایا جائے گا. جس میں پسماندہ طبقات کے تحفظات کو مزید مضبوط مستحکم بنایا جا رہا ہے.
ایس سی، ایس ٹی طبقات کے لیے پروموشن میں تحفظ کو ضروری قرار دیتے ہوئے اٹھاولے نے مرکزی حکومت اس سلسلے میں قانون بنانے پر غور کر رہی ہے.
جگناتھ پوری مندر میں صدر جمہوریہ رام ناتھ کووند اور انکی اہلیہ کے ساتھ پیش آئے واقعہ کو غیر قانونی اور افسوسناک قرار دیتے ہوئے اس کے خطاطی افراد کے خلاف کاروائی کی جائے گی.
انھوں نے کہا کہ ہندوستان میں کسی بھی مندر مسجد درگاہ اور کسی بھی عبادت گاہ میں جانے کی کسی بھی شہری پر کوئی پابندی نہیں ہے. یہ تو ہمارے لیے فخر اور اعزاز کی بات ہونی چاہیے کہ اگر کوئی مسلمان مندر میں آئے یا کوئی ہندو مسجد یا درگاہ میں جائے. ہمیں اس کا استقبال کرنا چاہیے.
اترپردیش کے وزیر اعلیٰ کی جانب سے ٹوپی نہ پہننے پر پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ٹوپی پہنا کوئی ضروری نہیں. یوگی نے ایک قدم آگے بڑھایا ہے.
نانا پروجیکٹ اور بلٹ ٹرین کو اپنی پارٹی کی تائید و حمایت کی وضاحت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وہ اس بات کے قائل ہیں کہ کسی بھی پروجیکٹ کی تکمیل کے دوران اس سے متاثر ہونے والے افراد اور خاندانوں کو مناسب تحفظ ملے اور انکی باز آبادکاری صحیح ڈھنگ سے کی جائے.
اس موقع پر اٹھاولے نے اپنی پارٹی کے مختلف مطالبات رکھتے ہوئے کہا کہ آئندہ لوک سبھا میں ان کی پارٹی کو 2 اور ودھان سبھا میں اگر اتحاد ہوتا ہے تو 15 یا 14 نہیں تو 20 یا 25 نشست ملنی چاہیے. اس کے علاوہ مہاراشٹر میں 3،4 مہا منڈلوں (کارپوریشن) کی صدارت بھی انکی پارٹی کو ملنا چاہیے.

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: