سرورق / خبریں / انسانیت سے اوپر اٹھ کر پیار ومحبت اور امن وآشتی تمام مذاہب کی بنیادی تعلیمات ہے شہر چینئی کے قومی یکجہتی کانفرنس سے :مولانا ارشد مدنی کاخطاب

انسانیت سے اوپر اٹھ کر پیار ومحبت اور امن وآشتی تمام مذاہب کی بنیادی تعلیمات ہے شہر چینئی کے قومی یکجہتی کانفرنس سے :مولانا ارشد مدنی کاخطاب

چینئی۔ تمل ناڈو کے دارالحکومت شہر چنئی میں جمعیۃ علماء تمل ناڈو نے بتاریخ ۱۰؍ اپریل بروز منگل بمقام نیوکالج، چنئی میں ایک روزہ’’ قومی یکجہتی‘‘ کانفرنس کا انعقاد کیاگیا جس میں شہرچنئی کے تمام مذاہب کے رہنماؤں نے شرکت کی اور اپنے اپنے خیالات اور قوم کے تئیں اپنے دلی جذبات کااظہار کیا۔ بعدنماز مغرب تلاوت قرآن سے اس عظیم الشان کانفرنس کا آغازہوا، اس کے بعد جمعیۃ علماء تمل ناڈو کے صدر مفتی سبیل صاحب قاسمی نے جمعیۃ علماء ہند کے اغراض و مقاصد بیان کرتے ہوئے فرمایا کہ ملک بھر میں جاری فرقہ پرستی، عدوات ونفرت، مسلمانوں اور ملک کے اقلیتوں پر ہونے والے ظلم وستم کوروکنے اور دینی مدارس ومراکز کی حفاظت کرنے، مسلمانوں کی قائم کردہ یونیورسیٹیوں کے اقلیتی کردار کو بحال کرنے ، ملک کے تعلیمی نظام اور دستور کی حفاظت کرنے اور معصوم اور بے گناہوں کی جیل سے جلد از جلد رہائی کے لیے ملک بھرمیں جمعیۃ علماء ہند کے قومی صدر حضرت مولانا ارشد مدنی صاحب نے پیار ومحبت کی فضا کو عام کرنے لیے قومی یکجہتی کانفرنس کا ایک سلسلہ شروع کیا ہے اسی سلسلہ ایک کڑی آج آپ کے شہر چنئی میں قومی یکجہتی کانفرنس منعقد ہورہی ہے، نیز انہوں نے ملک بھر میں سیلاب زدگان کی راحت رسانی اور آسام کے مسلمانوں کی شہریت کے لیے جمعیۃ علماء ہند کے جد وجہد کاتذکرہ کرتے ہوئے جمعیۃ کے کاموں کا تعارف کرایا ۔ اس قومی یکجہتی کانفرنس کی صدارت قاضی شہرچنئی مولانا صلاح الدین محمد ایوب صاحب نے کی جبکہ مہمان خصوصی کے طور پر جمعیۃ علماء ہند کے صدر مولانا ارشد مدنی صاحب تھے۔ ان کے علاوہ دیگر مذاہب کے رہنمااور مصلح قوم وملت نے شرکت کی جس میں قابل ذکر شری سوامی پرم سوگانندا، فخر اہل تمل تروماولون، فادریزرا سرگونم اور سردار روندر سنگھ جی ، مولانا سدید الدین باقوی، مولانا علاء الدین منبعی، مولانا درویش رشادی، جناب حاجی ایم محمد بشیر صاحب ، جناب حاجی محمد حنیفہ صاحب اور جنا ب محمد شریف صاحب نے شرکت کی ۔مقررین نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے فرمایا کہ ملک میں ہورہے فرقہ پرستی یہ مذہب کے سراسر خلاف ہے، دنیا کا کوئی مذہب اس بات کی ہرگز اجازت نہیں دیتاہے۔ فادریزراسرگونم نے موجود ہ حکومت پر سوال اٹھاتے ہوئے کہاکہ ملک بھر میں ہورہے قتل وغارت گری اور غنڈہ گردی کو حکومت کیوں نہیں روکتی؟ظالموں کو کیفرکردار تک پہونچانے میں حکومت نے کیوں سست رویہ اختیار کر رکھا ہے؟ انہوں نے کہا کہ گوری لنکش اور دیگر لوگوں کو کس جرم میں قتل کیا گیا ہے؟ حکومت اس کا جواب دے، اور قاتلوں کو فوری طور پر سزا دے۔جمعیۃ علماء ہند کے صدر مولانا ارشد مدنی صاحب نے اپنے خطاب میں فرمایاکہ پوری دنیا کے مذاہب کا جائزہ لیا جائے تو معلوم ہوگا دنیا میں جتنے مذاہب ہیں وہ سب کے سب امن پسند ہیں، کسی بھی مذہب میں فرقہ پرستی ، قتل غارت گری کی ہرگز اجازت نہیں ہے، لیکن پھر سوال ہوتاہے کہ دنیا میں بھر میں انسانیت پر ظلم کیوں ہورہے ہیں؟ آخر یہ ظلم کرنے والے کون لوگ ہیں؟ جو بھی ہوں ان کا کسی نہ کسی مذہب سے ضرور تعلق ہوگا ۔مولانانے اس کی وضاحت فرماتے ہوئے کہا کہ دنیا بھر میں جتنے مظالم ہورہے ہیں،وہ سب ارباب سیاست کی دین ہے، جو مذہب کا لبادہ اوڑھ کر اقتدارکے نشے میں نفرت پھیلاتے ہیں، اقتدار کی طاقت اور مذہب کاسہارا لیکر آگ لگاتے ہیں اور اپنے اقتدار کو حاصل کرتے ہیں۔ ہمارے ملک کے سارے باشندے امن پسند ہیں اور مل جل کر رہتے ہیں اس کی سب بڑی مثال گاؤں اور دیہاتوں میں رہنے والے لوگ ہیں جہاں برسوں سے ہندو ،مسلم ، سکھ عیسائی سب مل کر رہ رہے ہیں،کچھ لوگ ہیں جو اقتدار کے نشے میں ہندوستان کی گنگاجمنی تہذیب کو ختم کرنا چاہتے ہیں اور یہاں کے لوگوں کو تقسیم کرنا چاہتے ہیں۔مولانا نے مزید کہا کہ ہم اس ملک کے اصل باشندے ہیں اور آزادی کے وقت ہی ہمیںیہ حقوق فراہم کئے گئے ہیں کہ ہم اس ملک میں اپنے مذہب اورتشخص کے ساتھ رہیں گے۔ جمعیۃ علماء ہند نے آزادی سے قبل ہی کانگریس سے معاہدہ کرالیا تھا کہ ملک کی آزادی کے بعد یہ ملک سیکولر اور جمہوریت کی بنیاد پر قائم ہوگا اور یہاں کے اقلیتی طبقات کو مذہب اوراپنے تشخص کے ساتھ زندگی گذارنے کی آزادی ہوگی۔ جمعیۃ علماء ہند اسی دستور کی بقا کے لیے پورے ملک میں قومی یکجہتی کے ذریعہ امن کا پیغام دے رہی ہے اور دیگر مذاہب کے رہنماؤں کو اپنے ساتھ جوڑ کر ملک میں امن وامان قائم کرنے اور نفرت کی سیاست کوختم کرنے کی کوشش کررہی ہے۔ مولانانے مزید کہا کہ اصل تقوی اورپرہیز گاری یہ ہے کہ انسان مذہب سے اوپراٹھ کر پیار ومحبت کے پیغام کو عام کرے ،اسلام کااور دیگر مذاہب کا یہی پیغام ہے۔ اس کانفرنس میں شہر کے عمائدین ،علماکرام اور تجاراور عوام نے کثیر تعداد میں شرکت کی

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: