سرورق / خبریں / اسمبلی انتخابات: کرناٹک میں کانگریس کی لہر۔اقتدار پر واپسی کا یقین: سدارامیا

اسمبلی انتخابات: کرناٹک میں کانگریس کی لہر۔اقتدار پر واپسی کا یقین: سدارامیا

بیلگاوی، کرناٹک کے وزیراعلی سدارامیا نے کہا ہے کہ موجودہ لہر کانگریس کے حق میں ہے اور پارٹی 12مئی کے انتخابات کے بعد اقتدار پرواپس ہوگی۔انہوں نے بیلگاوی کے سامبراایرپورٹ پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا ’’ہم سروے میں یقین نہیں رکھتے ۔کانگریس اقتدار پر واپس ہوگی اور اس میں کوئی شک کی بات نہیں ہے‘‘کانگریس کے لیڈران اور حمایت کرنے والوں کے مکانات پرحال ہی میں آئی ٹی کے چھاپوں پراعتراض کرتے ہوئے انہوں نے سوال کیا کہ آیا بی جے پی میں کوئی رقم کے لٹیر ے نہیں ہیں۔آئی ٹی کے چھاپے سیاسی مخاصمت کے لئے نہیں کئے جانے چاہئے ۔یہ جمہوریت کے لئے بہتر نہیں ہے۔آئی ٹی کے محکمہ کو چاہئے کہ وہ غیر ضروری طورپر کسی مخصوص پارٹی کے لیڈران کو آمدنی سے زائد دولت کے معاملہ پر بغیر کسی شواہد کے ہراسان نہ کرے۔یہ کہتے ہوئے کہا دو حلقوں سے ان کا انتخابی مقابلہ انتخابی حکمت عملی ہے، سدارمیا نے کہا’’بادامی سے میرامقابلہ شمالی ۔کرناٹک علاقہ کے تمام پارٹی کارکنوں کا حوصلہ بڑھانے کے لئے ہے۔شکست کا کوئی خوف نہیں ہے۔میں بادامی اور چامندیشوری دونوں نشستوں سے بھاری اکثریت سے کامیاب ہوں گا۔بادامی حلقہ کے کارکن کافی خوش ہیں اور وہ اس حلقہ میں مہم کے لئے خود کو شامل کر چکے ہیں۔‘‘ریاست میں انتخابی جلسوں میں کمی پر وزیراعظم مودی پر نکتہ چینی کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ اس سے یہ ثابت ہوگیا ہے کہ بی جے پی نے اس حقیقت کو پہلے ہی سمجھ لیا ہے کہ وہ ریاست کرناٹک میں اقتدار پر نہیں آرہے ہیں۔سدارامیا نے کہاکہ کانگریس مُلاباگیلو حلقہ سے آزاد امیدوار کی حمایت کرے گی جہاں سے پارٹی کے امیدوار کا پرچہ مسترد ہوگیا ہے۔بیلگاوی رورل کے رکن اسمبلی سنجے پاٹل کے بیان پر انہوں نے کہا’’ہم نہ صرف ٹیپو سلطان بلکہ کنکاداس اورکرشنا جینتی بھی منائیں گے ۔کانگریس کے لیڈران اپوزیشن کے لیڈران کی شبیہ متاثر کرنے میں مصروف نہیں ہیں بلکہ بی جے پی نامناسب الزامات لگارہی ہے۔

Leave a comment

About saheem

Check Also

کروناندھی کی حالت بگڑی –

چنئی (ایجنسیز) تملناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ اور ڈی ایم کے کے سربراہ ایم کروناندھی …

جواب دیں

%d bloggers like this: